Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Afflictions and the End of the World

كتاب الفتن

حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ، عَنْ جَابِرٍ، أَنَّ رَجُلاً، مَرَّ فِي الْمَسْجِدِ بِأَسْهُمٍ قَدْ أَبْدَى نُصُولَهَا، فَأُمِرَ أَنْ يَأْخُذَ بِنُصُولِهَا، لاَ يَخْدِشُ مُسْلِمًا‏.‏

Narrated Jabir: A man passed through the mosque and he was carrying arrows, the heads of which were exposed (protruding). The man was ordered (by the Prophet) to hold the iron heads so that it might not scratch (injure) any Muslim. ھم سے ابو النعمان نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے حماد بن زید نے بیان کیا ‘ ان سے عمرو بن دینار نے اور ان سے جابر رضی اللھ عنھ نے کھ ایک صاحب مسجد میں تیر لے کر گزرے جن کے پھل باھر کو نکلے ھوئے تھے تو انھیں حکم دیا گیا کھ ان کی نوک کا خیال رکھیں کھ وھ کسی مسلمان کو زخمی نھ کر دیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7074
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 195


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْعَلاَءِ، حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ، عَنْ بُرَيْدٍ، عَنْ أَبِي بُرْدَةَ، عَنْ أَبِي مُوسَى، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ إِذَا مَرَّ أَحَدُكُمْ فِي مَسْجِدِنَا أَوْ فِي سُوقِنَا وَمَعَهُ نَبْلٌ فَلْيُمْسِكْ عَلَى نِصَالِهَا ـ أَوْ قَالَ فَلْيَقْبِضْ بِكَفِّهِ ـ أَنْ يُصِيبَ أَحَدًا مِنَ الْمُسْلِمِينَ مِنْهَا شَىْءٌ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Musa: The Prophet (PBUH) said, "If anyone of you passed through our mosque or through our market while carrying arrows, he should hold the iron heads," or said, "..... he should hold (their heads) firmly with his hand lest he should injure one of the Muslims with it." ھم سے محمد بن العلاء نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابواسامھ نے بیان کیا ‘ ان سے برید نے ‘ ان سے ابوبردھ نے اور ان سے ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا جب تم میں سے کوئی ھماری مسجد میں یا ھمارے بازار میں گزرے اور اس کے پاس تیر ھوں تو اسے چاھئیے کھ اس کی نوک کا خیال رکھے یا آپ نے فرمایا کھ اپنے ھاتھ سے انھیں تھامے رھے ۔ کھیں کسی مسلمان کو اس سے کوئی تکلیف نھ پھنچے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7075
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 196


حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنِي أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، حَدَّثَنَا شَقِيقٌ، قَالَ قَالَ عَبْدُ اللَّهِ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ سِبَابُ الْمُسْلِمِ فُسُوقٌ، وَقِتَالُهُ كُفْرٌ ‏"‏‏.‏


Chapter: “Do not renegade as disbelievers after me by striking the neck of one another.”

Narrated `Abdullah: The Prophet, said, "Abusing a Muslim is Fusuq (evil doing) and killing him is Kufr (disbelief). ھم سے عمر بن حفص نے بیان کیا ‘ کھا مجھ سے میرے والد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے اعمش نے بیان کیا ‘ ان سے شقیق نے بیان کیا ‘ کھا کھ عبداللھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مسلمان کو گالی دینا فسق ھے اور اس کو قتل کرنا کفرھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7076
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 197


حَدَّثَنَا حَجَّاجُ بْنُ مِنْهَالٍ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، أَخْبَرَنِي وَاقِدٌ، عَنْ أَبِيهِ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ، أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ لاَ تَرْجِعُوا بَعْدِي كُفَّارًا، يَضْرِبُ بَعْضُكُمْ رِقَابَ بَعْضٍ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Umar: I heard the Prophet (PBUH) saying, "Do not revert to disbelief after me by striking (cutting) the necks of one another." ھم سے حجاج بن منھال نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ‘ کھا مجھ کو واقد نے خبر دی ‘ انھیں ان کے والد نے اور انھیں ابن عمر رضی اللھ عنھما نے ‘ انھوں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ‘آپ نے فرمایا کھ میرے بعد کفر کی طرف نھ لوٹ جانا کھ ایک دوسرے کی گردن مارنے لگو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7077
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 198


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى، حَدَّثَنَا قُرَّةُ بْنُ خَالِدٍ، حَدَّثَنَا ابْنُ سِيرِينَ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ أَبِي بَكْرَةَ، عَنْ أَبِي بَكْرَةَ، وَعَنْ رَجُلٍ، آخَرَ هُوَ أَفْضَلُ فِي نَفْسِي مِنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ أَبِي بَكْرَةَ عَنْ أَبِي بَكْرَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم خَطَبَ النَّاسَ فَقَالَ ‏"‏ أَلاَ تَدْرُونَ أَىُّ يَوْمٍ هَذَا ‏"‏‏.‏ قَالُوا اللَّهُ وَرَسُولُهُ أَعْلَمُ‏.‏ قَالَ حَتَّى ظَنَنَّا أَنَّهُ سَيُسَمِّيهِ بِغَيْرِ اسْمِهِ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ أَلَيْسَ بِيَوْمِ النَّحْرِ ‏"‏‏.‏ قُلْنَا بَلَى يَا رَسُولَ اللَّهِ‏.‏ قَالَ ‏"‏ أَىُّ بَلَدٍ، هَذَا أَلَيْسَتْ بِالْبَلْدَةِ ‏"‏‏.‏ قُلْنَا بَلَى يَا رَسُولَ اللَّهِ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَإِنَّ دِمَاءَكُمْ، وَأَمْوَالَكُمْ، وَأَعْرَاضَكُمْ، وَأَبْشَارَكُمْ عَلَيْكُمْ حَرَامٌ، كَحُرْمَةِ يَوْمِكُمْ هَذَا، فِي شَهْرِكُمْ هَذَا، فِي بَلَدِكُمْ هَذَا، أَلاَ هَلْ بَلَّغْتُ ‏"‏‏.‏ قُلْنَا نَعَمْ‏.‏ قَالَ ‏"‏ اللَّهُمَّ اشْهَدْ، فَلْيُبَلِّغِ الشَّاهِدُ الْغَائِبَ، فَإِنَّهُ رُبَّ مُبَلِّغٍ يُبَلِّغُهُ مَنْ هُوَ أَوْعَى لَهُ فَكَانَ كَذَلِكَ ـ قَالَ ـ لاَ تَرْجِعُوا بَعْدِي كُفَّارًا يَضْرِبُ بَعْضُكُمْ رِقَابَ بَعْضٍ ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا كَانَ يَوْمَ حُرِّقَ ابْنُ الْحَضْرَمِيِّ، حِينَ حَرَّقَهُ جَارِيَةُ بْنُ قُدَامَةَ‏.‏ قَالَ أَشْرِفُوا عَلَى أَبِي بَكْرَةَ‏.‏ فَقَالُوا هَذَا أَبُو بَكْرَةَ يَرَاكَ‏.‏ قَالَ عَبْدُ الرَّحْمَنِ فَحَدَّثَتْنِي أُمِّي عَنْ أَبِي بَكْرَةَ أَنَّهُ قَالَ لَوْ دَخَلُوا عَلَىَّ مَا بَهَشْتُ بِقَصَبَةٍ‏.‏

Narrated Abu Bakra: Allah's Messenger (PBUH) addressed the people saying, "Don't you know what is the day today?" They replied, "Allah and His Apostle know better." We thought that he might give that day another name. The Prophet said, "Isn't it the day of An-Nahr?" We replied, "Yes. O Allah's Messenger (PBUH)." He then said, "What town is this? Isn't it the forbidden (Sacred) Town (Mecca)?" We replied, "Yes, O Allah's Messenger (PBUH)." He then said, "Your blood, your properties, your honors and your skins (i.e., bodies) are as sacred to one another like the sanctity of this day of yours in this month of yours in this town of yours. (Listen) Haven't I conveyed Allah's message to you?" We replied, "Yes" He said, "O Allah! Be witness (for it). So it is incumbent upon those who are present to convey it (this message of mine) to those who are absent because the informed one might comprehend what I have said better than the present audience who will convey it to him.)" The narrator added: In fact, it was like that. The Prophet (PBUH) added, "Beware! Do not renegade as disbelievers after me by striking (cutting) the necks of one another." ھم سے مسدد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے یحییٰ قطان نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے قرھ بن خالد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابن سیرین نے بیان کیا ‘ ان سے عبدالرحمٰن بن ابی بکرھ نے بیان کیا اور ایک دوسرے شخص ( حمید بن عبدالرحمٰن ) سے بھی سنا جو میری نظر میں عبدالرحمٰن بن ابی بکرھ سے اچھے ھیں اور ان سے ابو بکرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول صلی اللھ علیھ وسلم نے لوگوں کو یوم النحر کو خطبھ دیا اور فرمایا تمھیں معلوم ھے یھ کون سا دن ھے ؟ لوگوں نے کھا کھ اللھ اور اس کے رسول کو زیادھ علم ھے ۔ بیان کیا کھ ( اس کے بعد آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کی خاموشی سے ) ھم یھ سمجھے کھ آپ صلی اللھ علیھ وسلم اس کا کوئی اور نام رکھیں گے ۔ لیکن آپ نے فرمایا کیا یھ قربانی کا دن ( یوم النحر ) نھیں ھے ؟ ھم نے عرض کیا کیوں نھیں یا رسول اللھ ! آپ نے پھر پوچھا یھ کون سا شھر ھے ؟ کیا یھ البلدھ ( مکھ مکرمھ ) نھیں ھے ؟ ھم نے عرض کیا کیوں نھیں یا رسول اللھ ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا پھر تمھارا خون ‘ تمھارے مال ‘ تمھاری عزت اور تمھاری کھال تم پر اسی طرح حرمت والے ھیں جس طرح اس دن کی حرمت اس مھینے اور اس شھر میں ھے ۔ کیا میں نے پھنچا دیا ؟ ھم نے کھا جی ھاں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اے اللھ ! گواھ رھنا ۔ پس میرا یھ پیغام موجود لوگ غیر موجود لوگوں کو پھنچا دیں کیونکھ بھت سے پھنچانے والے اس پیغام کو اس تک پھنچائیں گے جو اس کو زیادھ محفوظ رکھنے والا ھو گا ۔ چنانچھ ایسا ھی ھوا اور آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا میرے بعد کافر نھ ھو جانا کھ بعض بعض کی گردن مارنے لگو ۔ پھر جب وھ دن آیا جب عبداللھ عمرو بن حضرمی کو جاریھ بن قدامھ نے ایک مکان میں گھیر کر جلا دیا تو جاریھ نے اپنے لشکر والوں سے کھا ذار ابوبکرھ کو تو جھانکو وھ کس خیال میں ھے ۔ انھوں نے کھا یھ ابوبکرھ موجود ھیں تم کو دیکھ رھے ھیں ۔ عبدالرحمٰن بن ابی بکرھ کھتے ھیں مجھ سے میری والدھ ھالھ بنت غلیظ نے کھا کھ ابوبکرھ نے کھا اگر یھ لوگ ( تین جاریھ کے لشکر والے ) میرے گھر میں بھی گھس آئیں اور مجھ کو مارنے لگیں تو میں ان پر ایک بانس کی چھڑی بھی نھیں چلاؤں گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7078
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 199


حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ إِشْكَابٍ، حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ فُضَيْلٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عِكْرِمَةَ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تَرْتَدُّوا بَعْدِي كُفَّارًا، يَضْرِبُ بَعْضُكُمْ رِقَابَ بَعْضٍ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: The Prophet (PBUH) said, "Beware! Do not renegade as (disbelievers) after me by striking (cutting) the necks of one another." ھم سے احمد بن اشکاب نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے محمد بن فضیل نے بیان کیا ‘ ان سے ان کے والد نے بیان کیا ‘ ان سے عکرمھ نے بیان کیا اور ان سے عبداللھ بن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ میرے بعد کافر نھ ھو جانا کھ تم میں بعض بعض کی گردن مارنے لگے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 92 Hadith no 7079
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 88 Hadith no 200



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.