Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Apostates

كتاب استتابة المرتدين والمعاندين وقتالهم

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَهَّابِ، قَالَ سَمِعْتُ يَحْيَى بْنَ سَعِيدٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي مُحَمَّدُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، وَعَطَاءِ بْنِ يَسَارٍ، أَنَّهُمَا أَتَيَا أَبَا سَعِيدٍ الْخُدْرِيَّ فَسَأَلاَهُ عَنِ الْحَرُورِيَّةِ، أَسَمِعْتَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم‏.‏ قَالَ لاَ أَدْرِي مَا الْحَرُورِيَّةُ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ يَخْرُجُ فِي هَذِهِ الأُمَّةِ ـ وَلَمْ يَقُلْ مِنْهَا ـ قَوْمٌ تَحْقِرُونَ صَلاَتَكُمْ مَعَ صَلاَتِهِمْ، يَقْرَءُونَ الْقُرْآنَ لاَ يُجَاوِزُ حُلُوقَهُمْ ـ أَوْ حَنَاجِرَهُمْ ـ يَمْرُقُونَ مِنَ الدِّينِ مُرُوقَ السَّهْمِ مِنَ الرَّمِيَّةِ، فَيَنْظُرُ الرَّامِي إِلَى سَهْمِهِ إِلَى نَصْلِهِ إِلَى رِصَافِهِ، فَيَتَمَارَى فِي الْفُوقَةِ، هَلْ عَلِقَ بِهَا مِنَ الدَّمِ شَىْءٌ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Amr bin Yasar: That they visited Abu Sa`id Al-Khudri and asked him about Al-Harauriyya, a special unorthodox religious sect, "Did you hear the Prophet (PBUH) saying anything about them?" Abu Sa`id said, "I do not know what Al-Harauriyya is, but I heard the Prophet (PBUH) saying, "There will appear in this nation---- he did not say: From this nation ---- a group of people so pious apparently that you will consider your prayers inferior to their prayers, but they will recite the Qur'an, the teachings of which will not go beyond their throats and will go out of their religion as an arrow darts through the game, whereupon the archer may look at his arrow, its Nasl at its Risaf and its Fuqa to see whether it is blood-stained or not (i.e. they will have not even a trace of Islam in them). ھم سے محمد بن مثنیٰ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے عبدالوھاب نے بیان کیا ، کھا میں نے یحییٰ بن سعید انصاری سے سنا ، کھا مجھ کو محمد بن ابراھیم تیمی نے خبر دی ، انھوں نے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن اور عطاء بن یسار سے ، 1وھ دونوں حضرت ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ کے پاس آئے اور ان سے پوچھا کیا تم نے حروریھ کے بارے میں کچھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ھے ؟ انھوں نے کھا حروریھ ( دروریھ ) تو میں جانتا نھیں مگر میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے یھ سنا ھے آپ فرماتے تھے اس امت میں اور یوں نھیں فرمایا اس امت میں سے کچھ لوگ ایسے پیدا ھوں گے کھ تم اپنی نماز کو ان کی نماز کے سامنے حقیر جانو گے اور قرآن کی تلاوت بھی کریں گے مگر قرآن ان کے حلقوں سے نیچے نھیں اترے گا ۔ وھ دین سے اس طرح نکل جائیں گے جیسے تیر جانور میں سے پار نکل جاتا ھے اور پھر تیر پھینکنے والا اپنے تیر کو دیکھتا ھے اس کے بعد جڑ میں ( جو کمان سے لگی رھتی ھے ) اس کو شک ھوتا ھے شاید اس میں خون لگا ھو مگر وھ بھی صاف ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6931
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 65


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سُلَيْمَانُ، حَدَّثَنِي ابْنُ وَهْبٍ، قَالَ حَدَّثَنِي عُمَرُ، أَنَّ أَبَاهُ، حَدَّثَهُ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ ـ وَذَكَرَ الْحَرُورِيَّةَ ـ فَقَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ يَمْرُقُونَ مِنَ الإِسْلاَمِ مُرُوقَ السَّهْمِ مِنَ الرَّمِيَّةِ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Umar: Regarding Al-Harauriyya: The Prophet (PBUH) said, "They will go out of Islam as an arrow darts out of the game's body.' ھم سے یحییٰ بن سلیمان نے بیان کیا ، کھا مجھ سے ابن وھب نے ، کھا کھ مجھ سے عمر بن محمد بن زید بن عبداللھ بن عمر نے ، کھا ان سے ان کے والد نے اور ان سے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے اور انھوں نے حروریھ کا ذکر کیا اور کھا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تھا کھ وھ اسلام سے اس طرح باھر ھو جائیں گے جس طرح تیر کمان سے باھر ھو جاتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6932
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 66


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدٍ، حَدَّثَنَا هِشَامٌ، أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ، قَالَ بَيْنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَقْسِمُ جَاءَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ ذِي الْخُوَيْصِرَةِ التَّمِيمِيُّ فَقَالَ اعْدِلْ يَا رَسُولَ اللَّهِ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ وَيْلَكَ مَنْ يَعْدِلُ إِذَا لَمْ أَعْدِلْ ‏"‏‏.‏ قَالَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ دَعْنِي أَضْرِبْ عُنُقَهُ‏.‏ قَالَ ‏"‏ دَعْهُ فَإِنَّ لَهُ أَصْحَابًا يَحْقِرُ أَحَدُكُمْ صَلاَتَهُ مَعَ صَلاَتِهِ، وَصِيَامَهُ مَعَ صِيَامِهِ، يَمْرُقُونَ مِنَ الدِّينِ كَمَا يَمْرُقُ السَّهْمُ مِنَ الرَّمِيَّةِ، يُنْظَرُ فِي قُذَذِهِ فَلاَ يُوجَدُ فِيهِ شَىْءٌ، يُنْظَرُ فِي نَصْلِهِ فَلاَ يُوجَدُ فِيهِ شَىْءٌ، ثُمَّ يُنْظَرُ فِي رِصَافِهِ فَلاَ يُوجَدُ فِيهِ شَىْءٌ، ثُمَّ يُنْظَرُ فِي نَضِيِّهِ فَلاَ يُوجَدُ فِيهِ شَىْءٌ، قَدْ سَبَقَ الْفَرْثَ وَالدَّمَ، آيَتُهُمْ رَجُلٌ إِحْدَى يَدَيْهِ ـ أَوْ قَالَ ثَدْيَيْهِ ـ مِثْلُ ثَدْىِ الْمَرْأَةِ ـ أَوْ قَالَ مِثْلُ الْبَضْعَةِ ـ تَدَرْدَرُ، يَخْرُجُونَ عَلَى حِينِ فُرْقَةٍ مِنَ النَّاسِ ‏"‏‏.‏ قَالَ أَبُو سَعِيدٍ أَشْهَدُ سَمِعْتُ مِنَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم وَأَشْهَدُ أَنَّ عَلِيًّا قَتَلَهُمْ وَأَنَا مَعَهُ، جِيءَ بِالرَّجُلِ عَلَى النَّعْتِ الَّذِي نَعَتَهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم‏.‏ قَالَ فَنَزَلَتْ فِيهِ ‏{‏وَمِنْهُمْ مَنْ يَلْمِزُكَ فِي الصَّدَقَاتِ‏}‏‏.‏


Chapter: Whoever gave up fighting against Al-Khawarij in order to create intimacy

Narrated Abu Sa`id: While the Prophet (PBUH) was distributing (something, `Abdullah bin Dhil Khawaisira at-Tamimi came and said, "Be just, O Allah's Messenger (PBUH)!" The Prophet (PBUH) said, "Woe to you ! Who would be just if I were not?" `Umar bin Al-Khattab said, "Allow me to cut off his neck ! " The Prophet (PBUH) said, " Leave him, for he has companions, and if you compare your prayers with their prayers and your fasting with theirs, you will look down upon your prayers and fasting, in comparison to theirs. Yet they will go out of the religion as an arrow darts through the game's body in which case, if the Qudhadh of the arrow is examined, nothing will be found on it, and when its Nasl is examined, nothing will be found on it; and then its Nadiyi is examined, nothing will be found on it. The arrow has been too fast to be smeared by dung and blood. The sign by which these people will be recognized will be a man whose one hand (or breast) will be like the breast of a woman (or like a moving piece of flesh). These people will appear when there will be differences among the people (Muslims)." Abu Sa`id added: I testify that I heard this from the Prophet (PBUH) and also testify that `Ali killed those people while I was with him. The man with the description given by the Prophet (PBUH) was brought to `Ali. The following Verses were revealed in connection with that very person (i.e., `Abdullah bin Dhil-Khawaisira at-Tarnimi): 'And among them are men who accuse you (O Muhammad) in the matter of (the distribution of) the alms.' (9.58) ھم سے عبداللھ بن محمد مسندی نے بیان کیا ، کھا ھم سے ھشام بن یوسف نے بیان کیا ، کھا ھم کو معمر نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، انھیں ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن بن عوف نے اور ان سے ابوسعید رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم تقسیم فرما رھے تھے کھ عبداللھ بن ذی الخویصرھ تمیمی آیا اور کھا یا رسول اللھ ! انصاف کیجئے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایاافسوس اگر میں انصاف نھیں کروں گا تو اورکون کرے گا ۔ اس پر حضرت عمر بن الخطاب رضی اللھ عنھ نے کھا کھ مجھے اجازت دیجئیے کھ میں اس کی گردن مار دوں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ نھیں اس کے کچھ ایسے ساتھی ھوں گے کھ ان کی نماز اور روزے کے سامنے تم اپنی نماز اور روزے کو حقیر سمجھوگے لیکن وھ دین سے اس طرح باھر ھو جائیں گے جس طرح تیر جانور میں سے باھر نکل جاتا ھے ۔ تیر کے پر کو دیکھا جائے لیکن اس پر کوئی نشان نھیں پھر اس پیکان کو دیکھا جائے اور وھاں بھی کوئی نشان نھیں پھر اس کے باڑ کو دیکھا جائے اور یھاں بھی کوئی نشان نھیں پھر اس کی لکڑی کو دیکھا جائے اور وھاں بھی کوئی نشان نھیں کیونکھ وھ ( جانور کے جسم سے تیر چلایاگیا تھا ) لید گوبر اور خون سب سے آگے ( بے داغ ) نکل گیا ( اسی طرح وھ لوگ اسلام سے صاف نکل جائیں گے ) ان کی نشانی ایک مرد ھو گا جس کا ایک ھاتھ عورت کی چھاتی کی طرح یا یوں فرمایا کھ گوشت کے تھل تھل کرتے لوتھڑے کی طرح ھو گا ۔ یھ لوگ مسلمانوں میں پھوٹ کے زمانھ میں پیدا ھوں گے ۔ حضرت ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ نے کھا کھ میں گواھی دیتا ھوں کھ میں نے یھ حدیث نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنی ھے اور میں گواھی دیتا ھوں کھ حضرت علی رضی اللھ عنھ نے نھروان میں ان سے جنگ کی تھی اور میں اس جنگ میں ان کے ساتھ تھا اور ان کے پاس ان لوگوں کے ایک شخص کو قیدی بنا کر لایا گیا تو اس میں وھی تمام چیزیں تھیں جو نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے بیان فرمائی تھیں ۔ راوی نے بیان کیا کھ پھر قرآن مجید کی یھ آیت نازل ھوئی کھ ” ان میں سے بعض وھ ھیں جو آپ کے صدقات کی تقسیم میں عیب پکڑتے ھیں “ ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6933
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 67


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ، حَدَّثَنَا الشَّيْبَانِيُّ، حَدَّثَنَا يُسَيْرُ بْنُ عَمْرٍو، قَالَ قُلْتُ لِسَهْلِ بْنِ حُنَيْفٍ هَلْ سَمِعْتَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ فِي الْخَوَارِجِ شَيْئًا قَالَ سَمِعْتُهُ يَقُولُ ـ وَأَهْوَى بِيَدِهِ قِبَلَ الْعِرَاقِ ـ ‏"‏ يَخْرُجُ مِنْهُ قَوْمٌ يَقْرَءُونَ الْقُرْآنَ لاَ يُجَاوِزُ تَرَاقِيَهُمْ، يَمْرُقُونَ مِنَ الإِسْلاَمِ مُرُوقَ السَّهْمِ مِنَ الرَّمِيَّةِ ‏"‏‏.‏

Narrated Yusair bin `Amr: I asked Sahl bin Hunaif, "Did you hear the Prophet (PBUH) saying anything about Al-Khawarij?" He said, "I heard him saying while pointing his hand towards Iraq. "There will appear in it (i.e, Iraq) some people who will recite the Qur'an but it will not go beyond their throats, and they will go out from (leave) Islam as an arrow darts through the game's body.' " ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالواحد بن زیادھ نے ، کھا ھم سے سلمان شیبانی نے ، کھا ھم سے یسیر بن عمرو نے بیان کیا کھ میں نے سھل بن حنیف ( بدری صحابی ) رضی اللھ عنھ سے پوچھا کیا تم نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کو خوارج کے سلسلے میں کچھ فرماتے ھوئے سنا ھے ، انھوں نے بیان کیا کھ میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ کھتے ھوئے سنا ھے اور آپ نے عراق کی طرف ھاتھ سے اشارھ فرمایا تھا کھ ادھر سے ایک جماعت نکلے گی یھ لوگ قرآن مجید پڑھیں گے لیکن قرآن مجید ان کے حلقوں سے نیچے نھیں اترےگا ۔ وھ اسلام سے اس طرح باھر ھو جائیں گے جیسے تیر شکار کے جانور سے باھر نکل جاتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6934
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 68


حَدَّثَنَا عَلِيٌّ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تَقُومُ السَّاعَةُ حَتَّى تَقْتَتِلَ فِئَتَانِ دَعْوَاهُمَا وَاحِدَةٌ ‏"‏‏.‏


Chapter: “The Hour will not be established till two groups fight against each other, their claim being one and the same.”

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "The Hour will not be established till two (huge) groups fight against each other, their claim being one and the same." ھم سے علی بن عبداللھ مدینی نے بیان کیا ، کھا ھم سے سفیان نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابوالزناد نے بیان کیا ، ان سے اعرج نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا قیامت اس وقت تک قائم نھیں ھو گی جب تک دو ایسے گروھ آپس میں جنگ نھ کریں جن کا دعویٰ ایک ھی ھو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6935
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 69


قَالَ أَبُو عَبْدِ اللَّهِ وَقَالَ اللَّيْثُ حَدَّثَنِي يُونُسُ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، أَخْبَرَنِي عُرْوَةُ بْنُ الزُّبَيْرِ، أَنَّ الْمِسْوَرَ بْنَ مَخْرَمَةَ، وَعَبْدَ الرَّحْمَنِ بْنَ عَبْدٍ الْقَارِيَّ، أَخْبَرَاهُ أَنَّهُمَا، سَمِعَا عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ، يَقُولُ سَمِعْتُ هِشَامَ بْنَ حَكِيمٍ، يَقْرَأُ سُورَةَ الْفُرْقَانِ فِي حَيَاةِ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَاسْتَمَعْتُ لِقِرَاءَتِهِ، فَإِذَا هُوَ يَقْرَؤُهَا عَلَى حُرُوفٍ كَثِيرَةٍ لَمْ يُقْرِئْنِيهَا رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم كَذَلِكَ، فَكِدْتُ أُسَاوِرُهُ فِي الصَّلاَةِ فَانْتَظَرْتُهُ حَتَّى سَلَّمَ، ثُمَّ لَبَّبْتُهُ بِرِدَائِهِ أَوْ بِرِدَائِي فَقُلْتُ مَنْ أَقْرَأَكَ هَذِهِ السُّورَةَ قَالَ أَقْرَأَنِيهَا رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قُلْتُ لَهُ كَذَبْتَ فَوَاللَّهِ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم أَقْرَأَنِي هَذِهِ السُّورَةَ الَّتِي سَمِعْتُكَ تَقْرَؤُهَا‏.‏ فَانْطَلَقْتُ أَقُودُهُ إِلَى رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنِّي سَمِعْتُ هَذَا يَقْرَأُ بِسُورَةِ الْفُرْقَانِ عَلَى حُرُوفٍ لَمْ تُقْرِئْنِيهَا، وَأَنْتَ أَقْرَأْتَنِي سُورَةَ الْفُرْقَانِ‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ أَرْسِلْهُ يَا عُمَرُ، اقْرَأْ يَا هِشَامُ ‏"‏‏.‏ فَقَرَأَ عَلَيْهِ الْقِرَاءَةَ الَّتِي سَمِعْتُهُ يَقْرَؤُهَا‏.‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ هَكَذَا أُنْزِلَتْ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اقْرَأْ يَا عُمَرُ ‏"‏‏.‏ فَقَرَأْتُ فَقَالَ ‏"‏ هَكَذَا أُنْزِلَتْ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ قَالَ ‏"‏ إِنَّ هَذَا الْقُرْآنَ أُنْزِلَ عَلَى سَبْعَةِ أَحْرُفٍ فَاقْرَءُوا مَا تَيَسَّرَ مِنْهُ ‏"‏‏.‏


Chapter: Al-Muta’awwalin

'Umar bin Al-Khattab said: I heard Hisham bin Al-Hakim reciting Surat Al-Furqan during the lifetime of Allah's Messenger (PBUH). I listened to his recitation and noticed that he recited it in several different ways which Allah's Messenger (PBUH) had not taught me. So I was about to jump over him during his Salat (prayer) but I waited till he finished his Salat (prayer) whereupon I put, either his upper garment or my upper garment around his neck and seized him by it and asked him, "Who has taught you this Surah?" He replied: "Allah's Messenger (PBUH) has taught it to me." I said (to him), "You have told a lie! By Allah, Allah's Messenger (PBUH) has taught me this Surah which I have heard you reciting." So I dragged him to the Allah's Messenger (PBUH). I said: "O Allah's Messenger I have heard this man reciting Surat Al-Furqan in a way in which you have not taught me, and you did teach me Surah Al-Furqan." On that Allah's Messenger (PBUH) said, "O 'Umar, release him! Recite, O Hisham". So Hisham recited before him in the way as I heard him reciting. Allah's Messenger (PBUH) said, "It has been revealed like this." Then Allah's Messenger (PBUH) said, "Recite, O 'Umar" So recited it. The Prophet (PBUH) said, "It has been revealed like this." And then he added, "This Qur'an has been revealed to be recited in seven different ways, so recite it whichever way is easier for you." اور حضرت ابوعبداللھ امام بخاری رحمھ اللھ نے بیان کیا ، ان سے لیث بن سعد نے بیان کیا انھوں نے کھا کھ مجھ سے یونس نے بیان کیا ، ان سے ابن شھاب نے بیان کیا ، انھوں نے کھا مجھ کو عروھ بن زبیر نے خبر دی ، انھیں مسور بن مخرمھ اور عبدالرحمٰن بن عبدالقاری نے خبر دی ، ان دونوں نے حضرت عمر بن الخطاب رضی اللھ عنھ سے سنا ، انھوں نے بیان کیا کھ میں نے ھشام بن حکیم کو نبی اکرم صلی اللھ علیھ وسلم کی زندگی میں سورۃ الفرقان پڑھتے سنا جب غور سے سنا تو وھ بھت سی ایسی قراتوں کے ساتھ پڑرھے تھے جن سے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے مجھے نھیں پڑھایا تھا ۔ قریب تھا کھ نماز ھی میں میں ان پر حملھ کر دیتا لیکن میں نے انتظار کیا اور جب انھوں نے سلام پھیرا تو ان کی چادر سے یا ( انھوں نے یھ کھا کھ ) اپنی چادر سے میں نے ان کی گردن میں پھندا ڈال دیا اور ان سے پوچھا کھ اس طرح تمھیں کس نے پڑھایا ھے ؟ انھوں نے کھا کھ مجھے اس طرح رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے پڑھایا ھے ۔ میں نے ان سے کھا کھ جھوٹ بولتے ھو ، واللھ یھ سورت مجھے بھی آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے پڑھائی ھے جو میں نے تمھیں ابھی پڑھتے سنا ھے ۔ چنانچھ میں انھیں کھینچتا ھوا آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس لایا اور عرض کیا یا رسول اللھ ! میں نے اسے سورۃ الفرقان اور طرح پر پڑھتے سنا ھے جس طرح آپ نے مجھے نھیں پڑھائی تھی ۔ آپ نے مجھے بھی سورۃالفرقان پڑھائی ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ عمر ! انھیں چھوڑ دو ۔ ھشام سورت پڑھو ۔ انھوں نے اسی طرح پڑھ کر سنایا جس طرح میں نے انھیں پڑھتے سنا تھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اس پر فرمایا کھ اسی طرح نازل ھوئی تھی پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا عمر ! اب تم پڑھو ۔ میں نے پڑھا تو آپ نے فرمایا کھ اسی طرح نازل ھوئی تھی پھر فرمایا یھ قرآن سات قراتوں میں نازل ھوا ھے پس تمھیں جس طرح آسانی ھو پڑھو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6936
Web reference: Sahih Bukhari Volume 1 Book 84 Hadith no 69



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.