Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Apostates

كتاب استتابة المرتدين والمعاندين وقتالهم

حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ، حَدَّثَنَا جَرِيرٌ، عَنِ الأَعْمَشِ، عَنْ إِبْرَاهِيمَ، عَنْ عَلْقَمَةَ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ لَمَّا نَزَلَتْ هَذِهِ الآيَةُ ‏{‏الَّذِينَ آمَنُوا وَلَمْ يَلْبِسُوا إِيمَانَهُمْ بِظُلْمٍ‏}‏ شَقَّ ذَلِكَ عَلَى أَصْحَابِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم وَقَالُوا أَيُّنَا لَمْ يَلْبِسْ إِيمَانَهُ بِظُلْمٍ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِنَّهُ لَيْسَ بِذَاكَ، أَلاَ تَسْمَعُونَ إِلَى قَوْلِ لُقْمَانَ ‏{‏إِنَّ الشِّرْكَ لَظُلْمٌ عَظِيمٌ‏}‏‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah: When the Verse: 'It is those who believe and confuse not their belief with wrong (i.e., worshipping others besides Allah): (6.82) was revealed, it became very hard on the companions of the Prophet (PBUH) and they said, "Who among us has not confused his belief with wrong (oppression)?" On that, Allah's Apostle said, "This is not meant (by the Verse). Don't you listen to Luqman's statement: 'Verily! Joining others in worship with Allah is a great wrong indeed.' (31.13) ھم سے قتیبھ بن سعید نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم کو جریر بن عبدالحمید نے بیان کیا ، انھوں نے اعمش سے ، انھوں نے ابراھیم نخعی سے ، انھوں نے علقمھ سے ، انھوں نے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما سے ، انھوں نے کھا جب ( سورۃ الانعام کی ) یھ آیت اتری ” جو لوگ ایمان لائے اور انھوں نے ایمان کو گناھ سے آلود نھیں کیا ( یعنی ظلم سے ) “ تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے صحابھ کو بھت گراں گزری وھ کھنے لگے بھلا ھم میں سے کون ایسا ھے جس نے ایمان کے ساتھ کوئی ظلم ( یعنی گناھ ) نھ کیا ھو ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اس آیت میں ظلم سے گناھ مراد نھیں ھے ( بلکھ شرک مراد ھے ) کیا تم نے حضرت لقمان علیھ السلام کا قول نھیں سنا ” شرک بڑا ظلم ھے “ ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6918
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 53


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا بِشْرُ بْنُ الْمُفَضَّلِ، حَدَّثَنَا الْجُرَيْرِيُّ، وَحَدَّثَنِي قَيْسُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، أَخْبَرَنَا سَعِيدٌ الْجُرَيْرِيُّ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ أَبِي بَكْرَةَ، عَنْ أَبِيهِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ أَكْبَرُ الْكَبَائِرِ الإِشْرَاكُ بِاللَّهِ، وَعُقُوقُ الْوَالِدَيْنِ، وَشَهَادَةُ الزُّورِ، وَشَهَادَةُ الزُّورِ ـ ثَلاَثًا ـ أَوْ قَوْلُ الزُّورِ ‏"‏‏.‏ فَمَا زَالَ يُكَرِّرُهَا حَتَّى قُلْنَا لَيْتَهُ سَكَتَ‏.‏

Narrated Abu Bakra: The Prophet. said, "The biggest of the great sins are: To join others in worship with Allah, to be undutiful to one's parents, and to give a false witness." He repeated it thrice, or said, "....a false statement," and kept on repeating that warning till we wished he would stop saying it. (See Hadith No.7, Vol. 8) ھم سے مسدد بن مسرھد نے بیان کیا ، کھا ھم سے بشربن مفضل نے ، کھا ھم سے سعید بن ایاس جریری نے ۔ ( دوسری سند ) امام بخاری نے کھا اور مجھ سے قیس بن حفص نے بیان کیا ، کھا ھم سے اسماعیل بن ابراھیم نے ، کھا ھم کو سعید جریری نے خبر دی ، کھا ھم سے عبدالرحمٰن بن ابی بکرھ نے بیان کیا ، انھوں نے اپنے والد ( ابوبکرھ صحابی ) سے ، انھوں نے کھا کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا بڑے سے بڑا گناھ اللھ تعالیٰ کے ساتھ شرک کرنا ھے اور ماں باپ کو ستانا ( ان کی نافرمانی کرنا ) اور جھوٹی گواھی دینا ، جھوٹی گواھی دینا ۔ تین بار یھی فرمایا یا یوں فرمایا اور جھوٹ بولنا برابر باربار آپ یھی فرماتے رھے یھاں تک کھ ھم نے آرزو کی کھ کاش آپ خاموش ھو جاتے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6919
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 54


حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ الْحُسَيْنِ بْنِ إِبْرَاهِيمَ، أَخْبَرَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا شَيْبَانُ، عَنْ فِرَاسٍ، عَنِ الشَّعْبِيِّ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَمْرٍو ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ جَاءَ أَعْرَابِيٌّ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ مَا الْكَبَائِرُ قَالَ ‏"‏ الإِشْرَاكُ بِاللَّهِ ‏"‏‏.‏ قَالَ ثُمَّ مَاذَا قَالَ ‏"‏ ثُمَّ عُقُوقُ الْوَالِدَيْنِ ‏"‏‏.‏ قَالَ ثُمَّ مَاذَا قَالَ ‏"‏ الْيَمِينُ الْغَمُوسُ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ وَمَا الْيَمِينُ الْغَمُوسُ قَالَ ‏"‏ الَّذِي يَقْتَطِعُ مَالَ امْرِئٍ مُسْلِمٍ هُوَ فِيهَا كَاذِبٌ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Amr: A bedouin came to the Prophet (PBUH) and said, "O Allah's Messenger (PBUH)! What are the biggest sins?: The Prophet (PBUH) said, "To join others in worship with Allah." The bedouin said, "What is next?" The Prophet (PBUH) said, "To be undutiful to one's parents." The bedouin said "What is next?" The Prophet (PBUH) said "To take an oath 'Al-Ghamus." The bedouin said, "What is an oath 'Al-Ghamus'?" The Prophet (PBUH) said, "The false oath through which one deprives a Muslim of his property (unjustly). ھم سے محمد بن حسین بن ابراھیم نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے عبیداللھ بن موسیٰ کوفی نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم کو شیبان نحوی نے خبر دی ، انھوں نے فراش بن یحییٰ سے ، انھوں نے عامر شعبی سے ، انھوں نے عبداللھ بن عمرو بن عاص رضی اللھ عنھما سے ، انھوں نے کھا ایک گنوار ( نام نامعلوم ) آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس آیا کھنے لگا یا رسول اللھ ! بڑے بڑے گناھ کون سے ھیں ؟ آپ نے فرمایا اللھ کے ساتھ شرک کرنا ۔ اس نے پوچھا پھر کون سا گناھ ؟ آپ نے فرمایا ماں باپ کو ستانا ۔ پوچھا پھر کون سا گناھ ؟ آپ نے فرمایا غموس قسم کھانا ۔ عبداللھ بن عمرو رضی اللھ عنھما نے کھا میں نے عرض کیا یا رسول اللھ ! غموس قسم کیا ھے ؟ آپ نے فرمایا جان بوجھ کر کسی مسلمان کا مال مار لینے کے لیے جھوٹی قسم کھانا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6920
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 55


حَدَّثَنَا خَلاَّدُ بْنُ يَحْيَى، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنْ مَنْصُورٍ، وَالأَعْمَشِ، عَنْ أَبِي وَائِلٍ، عَنِ ابْنِ مَسْعُودٍ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَجُلٌ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَنُؤَاخَذُ بِمَا عَمِلْنَا فِي الْجَاهِلِيَّةِ قَالَ ‏"‏ مَنْ أَحْسَنَ فِي الإِسْلاَمِ لَمْ يُؤَاخَذْ بِمَا عَمِلَ فِي الْجَاهِلِيَّةِ، وَمَنْ أَسَاءَ فِي الإِسْلاَمِ أُخِذَ بِالأَوَّلِ وَالآخِرِ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn Mas`ud: A man said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Shall we be punished for what we did in the Prelslamic Period of ignorance?" The Prophet (PBUH) said, "Whoever does good in Islam will not be punished for what he did in the Pre-lslamic Period of ignorance and whoever does evil in Islam will be punished for his former and later (bad deeds). ھم سے خلاد بن یحییٰ نے بیان کیا ، کھا ھم سے سفیان ثوری نے ، انھوں نے منصور اور اعمش سے ، انھوں نے ابووائل سے ، انھوں نے حضرت عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما سے ، انھوں نے کھا ایک شخص ( نام نامعلوم ) نے عرض کیا یا رسول اللھ ! ھم نے جو گناھ ( اسلام لانے سے پھلے ) جاھلیت کے زمانھ میں کے ھیں کیا ان کا مواخذھ ھم سے ھو گا ؟ آپ نے فرمایا جو شخص اسلام کی حالت میں نیک اعمال کرتا رھا اس سے جاھلیت کے گناھوں کا مواخذھ نھ ھو گا ( اللھ تعالیٰ معاف کر دے گا ) اور جو شخص مسلمان ھو کر بھی برے کام کرتا رھا اس سے دونوں زمانوں کے گناھوں کا مواخذھ ھو گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6921
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 56


حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، مُحَمَّدُ بْنُ الْفَضْلِ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ أَيُّوبَ، عَنْ عِكْرِمَةَ، قَالَ أُتِيَ عَلِيٌّ ـ رضى الله عنه ـ بِزَنَادِقَةٍ فَأَحْرَقَهُمْ فَبَلَغَ ذَلِكَ ابْنَ عَبَّاسٍ فَقَالَ لَوْ كُنْتُ أَنَا لَمْ أُحْرِقْهُمْ لِنَهْىِ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم وَلَقَتَلْتُهُمْ لِقَوْلِ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنْ بَدَّلَ دِينَهُ فَاقْتُلُوهُ ‏"‏‏.‏

Narrated `Ikrima: Some Zanadiqa (atheists) were brought to `Ali and he burnt them. The news of this event, reached Ibn `Abbas who said, "If I had been in his place, I would not have burnt them, as Allah's Messenger (PBUH) forbade it, saying, 'Do not punish anybody with Allah's punishment (fire).' I would have killed them according to the statement of Allah's Messenger (PBUH), 'Whoever changed his Islamic religion, then kill him.'" ھم سے ابوالنعمان محمد بن فضل سدوسی نے بیان کیا ، کھا ھم سے حماد بن زید نے ، انھوں نے ایوب سختیانی سے ، انھوں نے عکرمھ سے ، انھوں نے کھا علی رضی اللھ عنھ کے پاس کچھ بےدین لوگ لائے گئے ۔ آپ نے ان کو جلوا دیا ۔ یھ خبر ابن عباس رضی اللھ عنھما کو پھنچی تو انھوں نے کھا اگر میں حاکم ھوتا تو ان کو کبھی نھ جلواتا ( دوسری طرح سے سزا دیتا ) کیونکھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے آگ میں جلانے سے منع فرمایا ھے ۔ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا آگ اللھ کا عذاب ھے تم اللھ کے عذاب سے کسی کو مت عذاب دو میں ان کو قتل کروا ڈالتا کیونکھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ھے جو شخص اپنا دین بدل ڈالے اسلام سے پھر جائے اس کو قتل کر ڈالو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6922
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 57


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى، عَنْ قُرَّةَ بْنِ خَالِدٍ، حَدَّثَنِي حُمَيْدُ بْنُ هِلاَلٍ، حَدَّثَنَا أَبُو بُرْدَةَ، عَنْ أَبِي مُوسَى، قَالَ أَقْبَلْتُ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم وَمَعِي رَجُلاَنِ مِنَ الأَشْعَرِيِّينَ، أَحَدُهُمَا عَنْ يَمِينِي، وَالآخَرُ عَنْ يَسَارِي وَرَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَسْتَاكُ فَكِلاَهُمَا سَأَلَ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ يَا أَبَا مُوسَى ‏"‏‏.‏ أَوْ ‏"‏ يَا عَبْدَ اللَّهِ بْنَ قَيْسٍ ‏"‏‏.‏ قَالَ قُلْتُ وَالَّذِي بَعَثَكَ بِالْحَقِّ مَا أَطْلَعَانِي عَلَى مَا فِي أَنْفُسِهِمَا، وَمَا شَعَرْتُ أَنَّهُمَا يَطْلُبَانِ الْعَمَلَ‏.‏ فَكَأَنِّي أَنْظُرُ إِلَى سِوَاكِهِ تَحْتِ شَفَتِهِ قَلَصَتْ فَقَالَ ‏"‏ لَنْ ـ أَوْ ـ لاَ نَسْتَعْمِلُ عَلَى عَمَلِنَا مَنْ أَرَادَهُ، وَلَكِنِ اذْهَبْ أَنْتَ يَا أَبَا مُوسَى ـ أَوْ يَا عَبْدَ اللَّهِ بْنَ قَيْسٍ ـ إِلَى الْيَمَنِ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ أَتْبَعَهُ مُعَاذُ بْنُ جَبَلٍ، فَلَمَّا قَدِمَ عَلَيْهِ أَلْقَى لَهُ وِسَادَةً قَالَ انْزِلْ، وَإِذَا رَجُلٌ عِنْدَهُ مُوثَقٌ‏.‏ قَالَ مَا هَذَا قَالَ كَانَ يَهُودِيًّا فَأَسْلَمَ ثُمَّ تَهَوَّدَ‏.‏ قَالَ اجْلِسْ‏.‏ قَالَ لاَ أَجْلِسُ حَتَّى يُقْتَلَ‏.‏ قَضَاءُ اللَّهِ وَرَسُولِهِ‏.‏ ثَلاَثَ مَرَّاتٍ، فَأَمَرَ بِهِ فَقُتِلَ، ثُمَّ تَذَاكَرْنَا قِيَامَ اللَّيْلِ، فَقَالَ أَحَدُهُمَا أَمَّا أَنَا فَأَقُومُ وَأَنَامُ، وَأَرْجُو فِي نَوْمَتِي مَا أَرْجُو فِي قَوْمَتِي‏.‏

Narrated Abu Burda: Abu Musa said, "I came to the Prophet (PBUH) along with two men (from the tribe) of Ash`ariyin, one on my right and the other on my left, while Allah's Messenger (PBUH) was brushing his teeth (with a Siwak), and both men asked him for some employment. The Prophet (PBUH) said, 'O Abu Musa (O `Abdullah bin Qais!).' I said, 'By Him Who sent you with the Truth, these two men did not tell me what was in their hearts and I did not feel (realize) that they were seeking employment.' As if I were looking now at his Siwak being drawn to a corner under his lips, and he said, 'We never (or, we do not) appoint for our affairs anyone who seeks to be employed. But O Abu Musa! (or `Abdullah bin Qais!) Go to Yemen.'" The Prophet then sent Mu`adh bin Jabal after him and when Mu`adh reached him, he spread out a cushion for him and requested him to get down (and sit on the cushion). Behold: There was a fettered man beside Abu Muisa. Mu`adh asked, "Who is this (man)?" Abu Muisa said, "He was a Jew and became a Muslim and then reverted back to Judaism." Then Abu Muisa requested Mu`adh to sit down but Mu`adh said, "I will not sit down till he has been killed. This is the judgment of Allah and His Apostle (for such cases) and repeated it thrice. Then Abu Musa ordered that the man be killed, and he was killed. Abu Musa added, "Then we discussed the night prayers and one of us said, 'I pray and sleep, and I hope that Allah will reward me for my sleep as well as for my prayers.'" ھم سے مسدد بن مسرھد نے بیان کیا ، کھا ھم سے یحییٰ بن سعید قطان نے ، انھوں نے قرۃ بن خالدسے ، کھا مجھ سے حمید بن ھلال نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابوبردھ رضی اللھ عنھ نے ، انھوں نے ابوموسیٰ اشعری سے ، انھوں نے کھا میں آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس آیا میرے ساتھ اشعر قبیلے کے دو شخص تھے ( نام نامعلوم ) ایک میرے داھنے طرف تھا ، دوسرا بائیں طرف ۔ اس وقت آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم مسواک کر رھے تھے ۔ دونوں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے عھدھ کی درخواست کی ۔ آپ نے فرمایا ابوموسیٰ یا عبداللھ بن قیس ! ( راوی کو شک ھے ) میں نے اسی وقت عرض کیا یا رسول اللھ ! اس پروردگار کی قسم جس نے آپ کو سچا پیغمبر بنا کر بھیجا ۔ انھوں نے اپنے دل کی بات مجھ سے نھیں کھی تھی اور مجھ کو معلوم نھیں تھا کھ یھ دونوں شخص عھدھ چاھتے ھیں ۔ ابوموسیٰ کھتے ھیں جیسے میں اس وقت آپ کی مسواک کو دیکھ رھا ھوں وھ آپ کے ھونٹ کے نیچے اٹھی ھوئی تھی ۔ آپ نے فرمایا جو کوئی ھم سے عھدھ کی درخواست کرتا ھے ھم اس کو عھدھ نھیں دیتے ۔ لیکن ابوموسیٰ یا عبداللھ بن قیس ! تو یمن کی حکومت پر جا ( خیر ابوموسیٰ روانھ ھوئے ) اس کے بعد آپ نے معاذ بن جبل رضی اللھ عنھ کو بھی ان کے پیچھے روانھ کیا ۔ جب معاذ رضی اللھ عنھ یمن میں ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ کے پاس پھنچے تو ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے ان کے بیٹھنے کے لیے گدا بچھوایا اور کھنے لگے سواری سے اترو گدے پر بیٹھو ۔ اس وقت ان کے پاس ایک شخص تھا ( نام نامعلوم ) جس کی مشکیں کسی ھوئی تھیں ۔ معاذ رضی اللھ عنھ نے ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ سے پوچھا یھ کون شخص ھے ؟ انھوں نے کھا یھ یھودی تھا پھر مسلمان ھوا اب پھر یھودی ھو گیا ھے اور ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے معاذ رضی اللھ عنھ سے کھا اجی تم سواری پر سے اتر کر بیٹھو ۔ انھوں نے کھا میں نھیں بیٹھتا جب تک اللھ اور اس کے رسول کے حکم کے موافق یھ قتل نھ کیا جائے گا تین بار یھی کھا ۔ آخر ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے حکم دیا وھ قتل کیا گیا ۔ پھر معاذ رضی اللھ عنھ بیٹھے ۔ اب دونوں نے رات کی عبادت ( تھجد گزاری ) کا ذکر چھیڑا ۔ معاذ رضی اللھ عنھ نے کھا میں تو رات کو عبادت بھی کرتا ھوں اور سوتا بھی ھوں اور مجھے امید ھے کھ سونے میں بھی مجھ کو وھی ثواب ملے گا جو نماز پڑھنے اور عبادت کرنے میں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 88 Hadith no 6923
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 84 Hadith no 58



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.