Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Asking Permission

كتاب الاستئذان

حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا يَزِيدُ بْنُ خُصَيْفَةَ، عَنْ بُسْرِ بْنِ سَعِيدٍ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ الْخُدْرِيِّ، قَالَ كُنْتُ فِي مَجْلِسٍ مِنْ مَجَالِسِ الأَنْصَارِ إِذْ جَاءَ أَبُو مُوسَى كَأَنَّهُ مَذْعُورٌ فَقَالَ اسْتَأْذَنْتُ عَلَى عُمَرَ ثَلاَثًا، فَلَمْ يُؤْذَنْ لِي فَرَجَعْتُ فَقَالَ مَا مَنَعَكَ قُلْتُ اسْتَأْذَنْتُ ثَلاَثًا، فَلَمْ يُؤْذَنْ لِي فَرَجَعْتُ، وَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِذَا اسْتَأْذَنَ أَحَدُكُمْ ثَلاَثًا فَلَمْ يُؤْذَنْ لَهُ، فَلْيَرْجِعْ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ وَاللَّهِ لَتُقِيمَنَّ عَلَيْهِ بِبَيِّنَةٍ‏.‏ أَمِنْكُمْ أَحَدٌ سَمِعَهُ مِنَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ أُبَىُّ بْنُ كَعْبٍ وَاللَّهِ لاَ يَقُومُ مَعَكَ إِلاَّ أَصْغَرُ الْقَوْمِ، فَكُنْتُ أَصْغَرَ الْقَوْمِ، فَقُمْتُ مَعَهُ فَأَخْبَرْتُ عُمَرَ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ذَلِكَ‏.‏ وَقَالَ ابْنُ الْمُبَارَكِ أَخْبَرَنِي ابْنُ عُيَيْنَةَ حَدَّثَنِي يَزِيدُ عَنْ بُسْرٍ سَمِعْتُ أَبَا سَعِيدٍ بِهَذَا‏.‏

Narrated Abu Sa`id Al-Khudri: While I was present in one of the gatherings of the Ansar, Abu Musa came as if he was scared, and said, "I asked permission to enter upon `Umar three times, but I was not given the permission, so I returned." (When `Umar came to know about it) he said to Abu Musa, "Why did you not enter?'. Abu Musa replied, "I asked permission three times, and I was not given it, so I returned, for Allah's Messenger (PBUH) said, "If anyone of you asks the permission to enter thrice, and the permission is not given, then he should return.' " `Umar said, "By Allah! We will ask Abu Musa to bring witnesses for it." (Abu Musa went to a gathering of the Ansar and said). "Did anyone of you hear this from the Prophet (PBUH) ?" Ubai bin Ka`b said, "By Allah, none will go with you but the youngest of the people (as a witness)." (Abu Sa`id) was the youngest of them, so I went with Abu Musa and informed `Umar that the Prophet (PBUH) had said so. (See Hadith No. 277, Vol. 3) ھم سے علی بن عبداللھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے سفیان نے بیان کیا ، کھا ھم سے یزید بن خصیفھ نے بیان کیا ان سے بسر بن سعید اور ان سے ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں انصار کی ایک مجلس میں تھا کھ ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ تشریف لائے جیسے گھبرائے ھوئے ھوں ۔ انھوں نے کھا کھ میں عمر رضی اللھ عنھ کے یھاں تین مرتبھ اندر آنے کی اجازت چاھی لیکن مجھے کوئی جواب نھیں ملا ، اس لئے واپس چلا آیا ( حضرت عمر رضی اللھ عنھ کو معلوم ھوا ) تو انھوں نے دریافت کیا کھ ( اندر آنے میں ) کیا بات مانع تھی ؟ میں نے کھا کھ میں نے تین مرتبھ اندر آنے کی اجازت مانگی اور جب مجھے کوئی جواب نھیں ملا تو واپس چلا گیا اور رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ھے کھ : جب تم میں سے کوئی کسی سے تین مرتبھ اجازت چاھے اور اجا زت نھ ملے تو واپس چلاجانا چاھئے حضرت عمر رضی اللھ عنھ نے کھا واللھ ! تمھیں اس حدیث کی صحت کے لئے کوئی گوا ھ لاناھو گا ۔ ( ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے مجلس والوں سے پوچھا ) کیا تم میں کوئی ایسا ھے جس نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے یھ حدیث سنی ھو ؟ ابی بن کعب رضی اللھ عنھ نے کھا کھ اللھ کی قسم ! تمھارے ساتھ ( اس کی گواھی دینے کے سوا ) جماعت میں سب سے کم عمر شخص کے کوئی اور نھیں کھڑا ھو گا ۔ ابوسعید نے کھا اور میں ھی جماعت کا وھ سب سے کم عمر آدمی تھا میں ان کے ساتھ اٹھ کھڑا ھو گیا اور عمر رضی اللھ عنھ سے کھا کھ واقعی نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ایسا فرمایا ھے ۔ اور ابن مبارک نے بیان کیا کھ مجھ کو سفیان بن عیینھ نے خبر دی ، کھا مجھ سے یزید بن خصیفھ نے بیان کیا ، انھوں نے بسر بن سعید سے ، کھا میں نے ابوسعید رضی اللھ عنھ سے سنا پھر یھی حدیث نقل کی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6245
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 262


حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ، حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ ذَرٍّ،‏.‏ وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مُقَاتِلٍ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا عُمَرُ بْنُ ذَرٍّ، أَخْبَرَنَا مُجَاهِدٌ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ دَخَلْتُ مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَوَجَدَ لَبَنًا فِي قَدَحٍ فَقَالَ ‏"‏ أَبَا هِرٍّ الْحَقْ أَهْلَ الصُّفَّةِ فَادْعُهُمْ إِلَىَّ ‏"‏‏.‏ قَالَ فَأَتَيْتُهُمْ فَدَعَوْتُهُمْ، فَأَقْبَلُوا فَاسْتَأْذَنُوا فَأُذِنَ لَهُمْ، فَدَخَلُوا‏.‏

Narrated Abu Huraira: I entered (the house) along with Allah's Messenger (PBUH) . There he found milk in a basin. He said, "O Abu Hirr! Go and call the people of Suffa to me." I went to them and invited them. They came and asked permission to enter, and when it was given, they entered. (See Hadith No. 459 for details) ھم سے ابونعیم نے بیان کیا ، کھا ھم سے عمر بن ذر نے بیان کیا ( دوسری سند ) اور ھم سے محمد بن مقاتل نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ نے خبر دی ، کھا ھم کو مجاھد نے خبر دی ، اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ ( آپ کے گھر میں ) داخل ھوا آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ایک بڑے پیا لے میں دودھ پایا تو فرمایا ، ابوھریرھ ! اھل صفھ کے پاس جا اور انھیں میرے پاس بلا لا ۔ میں ان کے پاس آیا اور انھیں بلا لایا ۔ وھ آئے اور ( اندر آنے کی ) اجازت چاھی پھر جب ا جازت دی گئی تو داخل ھوئے ۔ باب اور حدیث میں مطابقت ظاھر ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6246
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 263


حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ الْجَعْدِ، أَخْبَرَنَا شُعْبَةُ، عَنْ سَيَّارٍ، عَنْ ثَابِتٍ الْبُنَانِيِّ، عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ ـ رضى الله عنه أَنَّهُ مَرَّ عَلَى صِبْيَانٍ فَسَلَّمَ عَلَيْهِمْ وَقَالَ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَفْعَلُهُ‏.‏


Chapter: To greet the boys

Narrated Anas bin Malik: that he passed by a group of boys and greeted them and said, "The Prophet (PBUH) used to do so." ھم سے علی بن الجعد نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم کوشعبھ نے خبر دی ، انھیں سیار نے انھوں نے ثابت بنانی سے روایت کی ، انھیں انس بن مالک رضی اللھ عنھ نے کھ آپ بچوں کے پاس سے گزرے تو انھیں سلام کیا اور فرمایا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم بھی ایسا ھی کرتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6247
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 264


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ، حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي حَازِمٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ سَهْلٍ، قَالَ كُنَّا نَفْرَحُ يَوْمَ الْجُمُعَةِ‏.‏ قُلْتُ وَلِمَ قَالَ كَانَتْ لَنَا عَجُوزٌ تُرْسِلُ إِلَى بُضَاعَةَ ـ قَالَ ابْنُ مَسْلَمَةَ نَخْلٍ بِالْمَدِينَةِ ـ فَتَأْخُذُ مِنْ أُصُولِ السِّلْقِ فَتَطْرَحُهُ فِي قِدْرٍ، وَتُكَرْكِرُ حَبَّاتٍ مِنْ شَعِيرٍ، فَإِذَا صَلَّيْنَا الْجُمُعَةَ انْصَرَفْنَا وَنُسَلِّمُ عَلَيْهَا فَتُقَدِّمُهُ إِلَيْنَا، فَنَفْرَحُ مِنْ أَجْلِهِ، وَمَا كُنَّا نَقِيلُ وَلاَ نَتَغَدَّى إِلاَّ بَعْدَ الْجُمُعَةِ‏.‏


Chapter: Greeting of men to women, and women to men

Narrated Abu Hazim: Sahl said, "We used to feel happy on Fridays." I asked Sahl, "Why?" He said, "There was an old woman of our acquaintance who used to send somebody to Buda'a (Ibn Maslama said, "Buda'a was a garden of date-palms at Medina). She used to pull out the silq (a kind of vegetable) from its roots and put it in a cooking pot, adding some powdered barley over it (and cook it). After finishing the Jumua (Friday) prayer we used to (pass by her and) greet her, whereupon she would present us with that meal, so we used to feel happy because of that. We used to have neither a midday nap, nor meals, except after the Friday prayer." (See Hadith No. 60, Vol.2) ھم سے عبداللھ بن مسلمھ قعنبی نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابن ابی حازم نے ان سے ان کے والد نے اور ان سے سھل رضی اللھ عنھ نے کھ ھم جمعھ کے دن خوش ھوا کرتے تھے ۔ میں نے عرض کی کس لئے ؟ فرمایا کھ ھماری ایک بڑھیا تھیں جو مقا م بضاعھ جایا کرتی تھیں ۔ ابن سلمھ نے کھا کھ بضاعھ مدینھ منورھ کا کھجور کا ایک باغ تھا ۔ پھر وھ وھاں سے چقندر لایا کرتی تھیں اور اسے ھانڈی میں ڈالتی تھیں اور جو کے کچھ دانے پیس کر ( اس میں ملاتی تھیں ) جب ھم جمعھ کی نماز پڑھ کر واپس ھوتے تو انھیں سلام کرنے آتے اور وھ یھ چقندر کی جڑ میں آٹا ملی ھوئی دعوت ھمارے سامنے رکھتی تھیں ھم اس وجھ سے جمعھ کے دن خوش ھوا کرتے تھے اور قیلولھ یا دوپھر کا کھانا ھم جمعھ کے بعد کرتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6248
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 265


حَدَّثَنَا ابْنُ مُقَاتِلٍ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ يَا عَائِشَةُ هَذَا جِبْرِيلُ يَقْرَأُ عَلَيْكِ السَّلاَمَ ‏"‏‏.‏ قَالَتْ قُلْتُ وَعَلَيْهِ السَّلاَمُ وَرَحْمَةُ اللَّهِ، تَرَى مَا لاَ نَرَى‏.‏ تُرِيدُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم‏.‏ تَابَعَهُ شُعَيْبٌ‏.‏ وَقَالَ يُونُسُ وَالنُّعْمَانُ عَنِ الزُّهْرِيِّ وَبَرَكَاتُهُ‏.‏

Narrated `Aisha: Allah's Messenger (PBUH) said, "O `Aisha! This is Gabriel sending his greetings to you." I said, "Peace, and Allah's Mercy be on him (Gabriel). You see what we do not see." (She was addressing Allah's Apostle). ھم سے ابن مقاتل نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ نے خبر دی ، کھا ھم کو معمر نے خبر دی انھیں زھری نے انھیں ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے اور ان سے حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ، اے عائشھ ! یھ جبرائیل ھیں تمھیں سلام کھتے ھیں بیان کیا کھ میں نے عرض کیا وعلیھ السلا م و رحمت اللھ ، آپ دیکھتے ھیں جو ھم نھیں دیکھ سکتے ام المؤمنین کا اشارھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کی طرف تھا ۔ معمر کے ساتھ اس حدیث کو شعیب اور یونس اور نعمان نے بھی زھری سے روایت کیا ھے یونس اور نعمان کی روایتوں میں و برکاتھ کا لفظ زیادھ ھے

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6249
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 266


حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، هِشَامُ بْنُ عَبْدِ الْمَلِكِ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الْمُنْكَدِرِ، قَالَ سَمِعْتُ جَابِرًا ـ رضى الله عنه ـ يَقُولُ أَتَيْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فِي دَيْنٍ كَانَ عَلَى أَبِي فَدَقَقْتُ الْبَابَ فَقَالَ ‏"‏ مَنْ ذَا ‏"‏‏.‏ فَقُلْتُ أَنَا‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ أَنَا أَنَا ‏"‏‏.‏ كَأَنَّهُ كَرِهَهَا‏.‏


Chapter: Asking, "Who is that?"

Narrated Jabir: I came to the Prophet (PBUH) in order to consult him regarding my father's debt. When I knocked on the door, he asked, "Who is that?" I replied, "I" He said, "I, I?" He repeated it as if he disliked it. ھم سے ابو الولید ھشام بن عبدالملک نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ، ان سے محمد بن منکدر نے کھا کھ میں نے حضرت جابر رضی اللھ عنھ سے سنا ، وھ بیان کرتے تھے کھ میں نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں اس قرض کے بارے میں حاضر ھوا جو میرے والد پر تھا ۔ میں دروازھ کھٹکھٹایا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے دریافت فرمایا ، کون ھیں ؟ میں نے کھا ” میں “ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ” میں “ ” میں “ جیسے آپ نے اس جواب کو ناپسند فرمایا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 79 Hadith no 6250
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 74 Hadith no 267



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.