Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Funerals (Al-Janaa'iz)

كتاب الجنائز

حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا مَهْدِيُّ بْنُ مَيْمُونٍ، حَدَّثَنَا وَاصِلٌ الأَحْدَبُ، عَنِ الْمَعْرُورِ بْنِ سُوَيْدٍ، عَنْ أَبِي ذَرٍّ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ أَتَانِي آتٍ مِنْ رَبِّي فَأَخْبَرَنِي ـ أَوْ قَالَ بَشَّرَنِي ـ أَنَّهُ مَنْ مَاتَ مِنْ أُمَّتِي لاَ يُشْرِكُ بِاللَّهِ شَيْئًا دَخَلَ الْجَنَّةَ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ وَإِنْ زَنَى وَإِنْ سَرَقَ قَالَ ‏"‏ وَإِنْ زَنَى وَإِنْ سَرَقَ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Dhar: Allah's Messenger (PBUH) said, "Someone came to me from my Lord and gave me the news (or good tidings) that if any of my followers dies worshipping none (in any way) along with Allah, he will enter Paradise." I asked, "Even if he committed illegal sexual intercourse (adultery) and theft?" He replied, "Even if he committed illegal sexual intercourse (adultery) and theft." ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے مھدی بن میمون نے ، کھا کھ ھم سے واصل بن حیان احدب ( کبڑے ) نے ، ان سے معرور بن سوید نے بیان کیا اور ان سے حضرت ابوذر غفاری رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ( کھ خواب میں ) میرے پاس میرے رب کا ایک آنے والا ( فرشتھ ) آیا ۔ اس نے مجھے خبر دی ، یا آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے یھ فرمایا کھ اس نے مجھے خوشخبری دی کھ میری امت میں سے جو کوئی اس حال میں مرے کھ اللھ تعالیٰ کے ساتھ اس نے کوئی شریک نھ ٹھھرایا ھو تو وھ جنت میں جائے گا ۔ اس پر میں نے پوچھا اگرچھ اس نے زنا کیا ھو ، اگرچھ اس نے چوری کی ھو ؟ تو رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ھاں اگرچھ زنا کیا ھو اگرچھ چوری کی ھو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1237
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 329


حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنَا أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، حَدَّثَنَا شَقِيقٌ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنْ مَاتَ يُشْرِكُ بِاللَّهِ شَيْئًا دَخَلَ النَّارَ ‏"‏‏.‏ وَقُلْتُ أَنَا مَنْ مَاتَ لاَ يُشْرِكُ بِاللَّهِ شَيْئًا دَخَلَ الْجَنَّةَ‏.‏

Narrated `Abdullah: Allah's Messenger (PBUH) said, "Anyone who dies worshipping others along with Allah will definitely enter the Fire." I said, "Anyone who dies worshipping none along with Allah will definitely enter Paradise." ھم سے عمر بن حفص نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے میرے باپ حفص بن غیاث نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے اعمش نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے شقیق بن سلمھ نے بیان کیا اور ان سے عبداللھ بن مسعود نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ جو شخص اس حالت میں مرے کھ کسی کو اللھ کا شریک ٹھھراتا تھا تو وھ جھنم میں جائے گا اور میں یھ کھتا ھوں کھ جو اس حال میں مرا کھ اللھ کا کوئی شریک نھ ٹھھراتا ھو وھ جنت میں جائے گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1238
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 330


حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنِ الأَشْعَثِ، قَالَ سَمِعْتُ مُعَاوِيَةَ بْنَ سُوَيْدِ بْنِ مُقَرِّنٍ، عَنِ الْبَرَاءِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ أَمَرَنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم بِسَبْعٍ، وَنَهَانَا عَنْ سَبْعٍ أَمَرَنَا بِاتِّبَاعِ الْجَنَائِزِ، وَعِيَادَةِ الْمَرِيضِ، وَإِجَابَةِ الدَّاعِي، وَنَصْرِ الْمَظْلُومِ، وَإِبْرَارِ الْقَسَمِ، وَرَدِّ السَّلاَمِ، وَتَشْمِيتِ الْعَاطِسِ‏.‏ وَنَهَانَا عَنْ آنِيَةِ الْفِضَّةِ، وَخَاتَمِ الذَّهَبِ، وَالْحَرِيرِ، وَالدِّيبَاجِ، وَالْقَسِّيِّ، وَالإِسْتَبْرَقِ‏.‏


Chapter: The order of following the funeral procession

Narrated Al-Bara' bin `Azib: Allah's Messenger (PBUH) ordered us to do seven things and forbade us to do other seven. He ordered us: to follow the funeral procession. to visit the sick, to accept invitations, to help the oppressed, to fulfill the oaths, to return the greeting and to reply to the sneezer: (saying, "May Allah be merciful on you," provided the sneezer says, "All the praises are for Allah,"). He forbade us to use silver utensils and dishes and to wear golden rings, silk (clothes), Dibaj (pure silk cloth), Qissi and Istabraq (two kinds of silk cloths). ھم سے ابو الولید نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے شعبھ نے بیان کیا ، ان سے اشعث بن ابی الثعثاء نے ، انھوں نے کھا کھ میں نے معاویھ بن سوید مقرن سے سنا ، وھ براء بن عازب رضی اللھ عنھ سے نقل کرتے تھے کھ ھمیں نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے سات کاموں کا حکم دیا اور سات کاموں سے روکا ۔ ھمیں آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے حکم دیا تھا جنازھ کے ساتھ چلنے ، مریض کی مزاج پرسی ، دعوت قبول کرنے ، مظلوم کی مدد کرنے کا ، قسم پوری کرنے کا ، سلام کا جواب دینے کا ، چھینک پر «يرحمک الله» کھنے کا اور آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے ھمیں منع کیا تھا چاندی کے برتن ( استعمال میں لانے ) سے ، سونے کی انگوٹھی پھننے سے ، ریشم اور دیباج ( کے کپڑوں کے پھننے ) سے ، قسی سے ، استبرق سے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1239
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 331


حَدَّثَنَا مُحَمَّدٌ، حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ أَبِي سَلَمَةَ، عَنِ الأَوْزَاعِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي ابْنُ شِهَابٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي سَعِيدُ بْنُ الْمُسَيَّبِ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ حَقُّ الْمُسْلِمِ عَلَى الْمُسْلِمِ خَمْسٌ رَدُّ السَّلاَمِ، وَعِيَادَةُ الْمَرِيضِ، وَاتِّبَاعُ الْجَنَائِزِ، وَإِجَابَةُ الدَّعْوَةِ، وَتَشْمِيتُ الْعَاطِسِ ‏"‏‏.‏ تَابَعَهُ عَبْدُ الرَّزَّاقِ قَالَ أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ‏.‏ وَرَوَاهُ سَلاَمَةُ عَنْ عُقَيْلٍ‏.‏

Narrated Abu Huraira: I heard Allah's Messenger (PBUH) saying, "The rights of a Muslim on the Muslims are five: to respond to the salaam, visiting the sick, to follow the funeral processions, to accept an invitation, and to reply to those who sneeze. (see Hadith 1239) ھم سے محمدنے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ ھم سے عمرو بن ابی سلمھ نے بیان کیا ، ان سے امام اوزاعی نے ، انھوں نے کھا کھ مجھے ابن شھاب نے خبر دی ، کھا کھ مجھے سعید بن مسیب نے خبر دی کھ ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ھے کھ مسلمان کے مسلمان پر پانچ حق ھیں سلام کا جواب دینا ، مریض کا مزاج معلوم کرنا ، جنازے کے ساتھ چلنا ، دعوت قبول کرنا ، اور چھینک پر ( اس کے «الحمدلله» کے جواب میں ) «يرحمک الله» کھنا ۔ اس روایت کی متابعت عبدالرزاق نے کی ھے ۔ انھوں نے کھا کھ مجھے معمر نے خبر دی تھی ۔ اور اس کی روایت سلامھ نے بھی عقیل سے کی ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1240
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 332


حَدَّثَنَا بِشْرُ بْنُ مُحَمَّدٍ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، قَالَ أَخْبَرَنِي مَعْمَرٌ، وَيُونُسُ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي أَبُو سَلَمَةَ، أَنَّ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ زَوْجَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم أَخْبَرَتْهُ قَالَتْ أَقْبَلَ أَبُو بَكْرٍ ـ رضى الله عنه ـ عَلَى فَرَسِهِ مِنْ مَسْكَنِهِ بِالسُّنْحِ حَتَّى نَزَلَ، فَدَخَلَ الْمَسْجِدَ، فَلَمْ يُكَلِّمِ النَّاسَ، حَتَّى نَزَلَ فَدَخَلَ عَلَى عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ فَتَيَمَّمَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم وَهُوَ مُسَجًّى بِبُرْدِ حِبَرَةٍ، فَكَشَفَ عَنْ وَجْهِهِ، ثُمَّ أَكَبَّ عَلَيْهِ فَقَبَّلَهُ ثُمَّ بَكَى فَقَالَ بِأَبِي أَنْتَ يَا نَبِيَّ اللَّهِ، لاَ يَجْمَعُ اللَّهُ عَلَيْكَ مَوْتَتَيْنِ، أَمَّا الْمَوْتَةُ الَّتِي كُتِبَتْ عَلَيْكَ فَقَدْ مُتَّهَا‏.‏ قَالَ أَبُو سَلَمَةَ فَأَخْبَرَنِي ابْنُ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ أَبَا بَكْرٍ ـ رضى الله عنه ـ خَرَجَ وَعُمَرُ ـ رضى الله عنه ـ يُكَلِّمُ النَّاسَ‏.‏ فَقَالَ اجْلِسْ‏.‏ فَأَبَى‏.‏ فَقَالَ اجْلِسْ‏.‏ فَأَبَى، فَتَشَهَّدَ أَبُو بَكْرٍ ـ رضى الله عنه ـ فَمَالَ إِلَيْهِ النَّاسُ، وَتَرَكُوا عُمَرَ فَقَالَ أَمَّا بَعْدُ، فَمَنْ كَانَ مِنْكُمْ يَعْبُدُ مُحَمَّدًا صلى الله عليه وسلم فَإِنَّ مُحَمَّدًا صلى الله عليه وسلم قَدْ مَاتَ، وَمَنْ كَانَ يَعْبُدُ اللَّهَ فَإِنَّ اللَّهَ حَىٌّ لاَ يَمُوتُ، قَالَ اللَّهُ تَعَالَى ‏{‏وَمَا مُحَمَّدٌ إِلاَّ رَسُولٌ‏}‏ إِلَى ‏{‏الشَّاكِرِينَ‏}‏ وَاللَّهِ لَكَأَنَّ النَّاسَ لَمْ يَكُونُوا يَعْلَمُونَ أَنَّ اللَّهَ أَنْزَلَ الآيَةَ حَتَّى تَلاَهَا أَبُو بَكْرٍ ـ رضى الله عنه ـ فَتَلَقَّاهَا مِنْهُ النَّاسُ، فَمَا يُسْمَعُ بَشَرٌ إِلاَّ يَتْلُوهَا‏.‏

Narrated `Aisha: Abu Bakr came riding his horse from his dwelling place in As-Sunh. He got down from it, entered the Mosque and did not speak with anybody till he came to me and went direct to the Prophet, who was covered with a marked blanket. Abu Bakr uncovered his face. He knelt down and kissed him and then started weeping and said, "My father and my mother be sacrificed for you, O Allah's Prophet! Allah will not combine two deaths on you. You have died the death which was written for you." Narrated Abu Salama from Ibn `Abbas : Abu Bakr came out and `Umar , was addressing the people, and Abu Bakr told him to sit down but `Umar refused. Abu Bakr again told him to sit down but `Umar again refused. Then Abu Bakr recited the Tashah-hud (i.e. none has the right to be worshipped but Allah and Muhammad is Allah's Messenger (PBUH)) and the people attended to Abu Bakr and left `Umar. Abu Bakr said, "Amma ba'du, whoever amongst you worshipped Muhammad, then Muhammad is dead, but whoever worshipped Allah, Allah is alive and will never die. Allah said: 'Muhammad is no more than an Apostle and indeed (many) Apostles have passed away before him ..(up to the) grateful.' " (3.144) (The narrator added, "By Allah, it was as if the people never knew that Allah had revealed this verse before till Abu Bakr recited it and then whoever heard it, started reciting it.") ھم سے بشر بن محمد نے بیان کیا ، انھیں عبداللھ بن مبارک نے خبر دی ، کھا کھ مجھے معمر بن راشد اور یونس نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، کھا کھ مجھے ابوسلمھ نے خبر دی کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی زوجھ مطھرھ حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے انھیں خبر دی کھ ( جب آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کی وفات ھو گئی ) ابوبکر رضی اللھ عنھ اپنے گھر سے جو سنح میں تھا گھوڑے پر سوار ھو کر آئے اور اترتے ھی مسجد میں تشریف لے گئے ۔ پھر آپ کسی سے گفتگو کئے بغیر عائشھ رضی اللھ عنھا کے حجرھ میں آئے ( جھاں نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی نعش مبارک رکھی ھوئی تھی ) اور نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی طرف گئے ۔ حضور اکرم صلی اللھ علیھ وسلم کو برد حبرھ ( یمن کی بنی ھوئی دھاری دار چادر ) سے ڈھانک دیا گیا تھا ۔ پھر آپ نے حضور کا چھرھ مبارک کھولا اور جھک کر اس کا بوسھ لیا اور رونے لگے ۔ آپ نے کھا میرے ماں باپ آپ پر قربان ھوں اے اللھ کے نبی ! اللھ تعالیٰ دو موتیں آپ پر کبھی جمع نھیں کرے گا ۔ سوا ایک موت کے جو آپ کے مقدر میں تھی سو آپ وفات پا چکے ۔ ابوسلمھ نے کھا کھ مجھے ابن عباس رضی اللھ عنھما نے خبر دی کھ حضرت ابوبکر رضی اللھ عنھ جب باھر تشریف لائے تو حضرت عمر رضی اللھ عنھ اس وقت لوگوں سے کچھ باتیں کر رھے تھے ۔ حضرت صدیق اکبر رضی اللھ عنھ نے فرمایا کھ بیٹھ جاؤ ۔ لیکن حضرت عمر رضی اللھ عنھ نھیں مانے ۔ پھر دوبارھ آپ نے بیٹھنے کے لیے کھا ۔ لیکن حضرت عمر رضی اللھ عنھ نھیں مانے ۔ آخر حضرت ابوبکر رضی اللھ عنھ نے کلمھ شھادت پڑھا تو تمام مجمع آپ کی طرف متوجھ ھو گیا اور حضرت عمر رضی اللھ عنھ کو چھوڑ دیا ۔ آپ نے فرمایا امابعد ! اگر کوئی شخص تم میں سے محمد صلی اللھ علیھ وسلم کی عبادت کرتا تھا تو اسے معلوم ھونا چاھیے کھ محمد صلی اللھ علیھ وسلم کی وفات ھو چکی اور اگر کوئی اللھ تعالیٰ کی عبادت کرتا ھے تو اللھ تعالیٰ باقی رھنے والا ھے ۔ کبھی وھ مرنے والا نھیں ۔ اللھ پاک نے فرمایا ھے ” اور محمد صرف اللھ کے رسول ھیں اور بھت سے رسول اس سے پھلے بھی گزر چکے ھیں “ «الشاكرين» تک ( آپ نے آیت تلاوت کی ) قسم اللھ کی ایسا معلوم ھوا کھ حضرت ابوبکر رضی اللھ عنھ کے آیت کی تلاوت سے پھلے جیسے لوگوں کو معلوم ھی نھ تھا کھ یھ آیت بھی اللھ پاک نے قرآن مجید میں اتاری ھے ۔ اب تمام صحابھ نے یھ آیت آپ سے سیکھ لی پھر تو ھر شخص کی زبان پر یھی آیت تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1241, 1242
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 333


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ عُقَيْلٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي خَارِجَةُ بْنُ زَيْدِ بْنِ ثَابِتٍ، أَنَّ أُمَّ الْعَلاَءِ ـ امْرَأَةً مِنَ الأَنْصَارِ ـ بَايَعَتِ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم أَخْبَرَتْهُ أَنَّهُ اقْتُسِمَ الْمُهَاجِرُونَ قُرْعَةً فَطَارَ لَنَا عُثْمَانُ بْنُ مَظْعُونٍ، فَأَنْزَلْنَاهُ فِي أَبْيَاتِنَا، فَوَجِعَ وَجَعَهُ الَّذِي تُوُفِّيَ فِيهِ، فَلَمَّا تُوُفِّيَ وَغُسِّلَ وَكُفِّنَ فِي أَثْوَابِهِ، دَخَلَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقُلْتُ رَحْمَةُ اللَّهِ عَلَيْكَ أَبَا السَّائِبِ، فَشَهَادَتِي عَلَيْكَ لَقَدْ أَكْرَمَكَ اللَّهُ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ وَمَا يُدْرِيكِ أَنَّ اللَّهَ قَدْ أَكْرَمَهُ ‏"‏‏.‏ فَقُلْتُ بِأَبِي أَنْتَ يَا رَسُولَ اللَّهِ فَمَنْ يُكْرِمُهُ اللَّهُ فَقَالَ ‏"‏ أَمَّا هُوَ فَقَدْ جَاءَهُ الْيَقِينُ، وَاللَّهِ إِنِّي لأَرْجُو لَهُ الْخَيْرَ، وَاللَّهِ مَا أَدْرِي ـ وَأَنَا رَسُولُ اللَّهِ ـ مَا يُفْعَلُ بِي ‏"‏‏.‏ قَالَتْ فَوَاللَّهِ لاَ أُزَكِّي أَحَدًا بَعْدَهُ أَبَدًا‏.‏

Narrated Kharija bin Zaid bin Thabit: Um Al-`Ala', an Ansari woman who gave the pledge of allegiance to the Prophet (PBUH) said to me, "The emigrants were distributed amongst us by drawing lots and we got in our share `Uthman bin Maz'un. We made him stay with us in our house. Then he suffered from a disease which proved fatal when he died and was given a bath and was shrouded in his clothes, Allah's Messenger (PBUH) came I said, 'May Allah be merciful to you, O Abu As-Sa'ib! I testify that Allah has honored you'. The Prophet (PBUH) said, 'How do you know that Allah has honored him?' I replied, 'O Allah's Messenger (PBUH)! Let my father be sacrificed for you! On whom else shall Allah bestow His honor?' The Prophet (PBUH) said, 'No doubt, death came to him. By Allah, I too wish him good, but by Allah, I do not know what Allah will do with me though I am Allah's Messenger (PBUH). ' By Allah, I never attested the piety of anyone after that." ھم سے یحی بن بکیر نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے لیث بن سعد نے کھا ، ان سے عقیل نے ، ان سے ابن شھاب نے ، انھوں نے فرمایا کھ مجھے خارجھ بن زید بن ثابت نے خبر دی کھ ام العلاء رضی اللھ عنھا انصار کی ایک عورت نے جنھوں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے بیعت کی تھی ، نے انھیں خبر دی کھ مھاجرین قرعھ ڈال کر انصار میں بانٹ دیئے گئے تو حضرت عثمان بن مظعون رضی اللھ عنھ ھمارے حصھ میں آئے ۔ چنانچھ ھم نے انھیں اپنے گھر میں رکھا ۔ آخر وھ بیمار ھوئے اور اسی میں وفات پا گئے ۔ وفات کے بعد غسل دیا گیا اور کفن میں لپیٹ دیا گیا تو رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم تشریف لائے ۔ میں نے کھا ابوسائب آپ پر اللھ کی رحمتیں ھوں میری آپ کے متعلق شھادت یھ ھے کھ اللھ تعالیٰ نے آپ کی عزت فرمائی ھے ۔ اس پر نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تمھیں کیسے معلوم ھوا کھ اللھ تعالیٰ نے ان کی عزت فرمائی ھے ؟ میں نے کھا یا رسول اللھ ! میرے ماں باپ آپ پر قربان ھوں پھر کس کی اللھ تعالیٰ عزت افزائی کرے گا ؟ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اس میں شبھ نھیں کھ ان کی موت آ چکی ، قسم اللھ کی کھ میں بھی ان کے لیے خیر ھی کی امید رکھتا ھوں لیکن واللھ ! مجھے خود اپنے متعلق بھی معلوم نھیں کھ میرے ساتھ کیا معاملھ ھو گا ۔ حالانکھ میں اللھ کا رسول ھوں ۔ ام العلاء رضی اللھ عنھا نے کھا کھ خدا کی قسم ! اب میں کبھی کسی کے متعلق ( اس طرح کی ) گواھی نھیں دوں گی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 23 Hadith no 1243
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 23 Hadith no 334



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.