Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Judgments (Ahkaam)

كتاب الأحكام

حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، حَدَّثَنِي عُرْوَةُ، أَنَّ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ جَاءَتْ هِنْدٌ بِنْتُ عُتْبَةَ بْنِ رَبِيعَةَ فَقَالَتْ يَا رَسُولَ اللَّهِ، وَاللَّهِ مَا كَانَ عَلَى ظَهْرِ الأَرْضِ أَهْلُ خِبَاءٍ أَحَبَّ إِلَىَّ أَنْ يَذِلُّوا مِنْ أَهْلِ خِبَائِكَ، وَمَا أَصْبَحَ الْيَوْمَ عَلَى ظَهْرِ الأَرْضِ أَهْلُ خِبَاءٍ أَحَبَّ إِلَىَّ أَنْ يَعِزُّوا مِنْ أَهْلِ خِبَائِكَ‏.‏ ثُمَّ قَالَتْ إِنَّ أَبَا سُفْيَانَ رَجُلٌ مِسِّيكٌ، فَهَلْ عَلَىَّ مِنْ حَرَجٍ أَنْ أُطْعِمَ الَّذِي لَهُ عِيَالَنَا قَالَ لَهَا ‏"‏ لاَ حَرَجَ عَلَيْكِ أَنْ تُطْعِمِيهِمْ مِنْ مَعْرُوفٍ ‏"‏‏.‏

Narrated `Aisha: Hind bint `Utba bin Rabi`a came and said. "O Allah's Messenger (PBUH)! By Allah, there was no family on the surface of the earth, I like to see in degradation more than I did your family, but today there is no family on the surface of the earth whom I like to see honored more than yours." Hind added, "Abu Sufyan is a miser. Is it sinful of me to feed our children from his property?" The Prophet (PBUH) said, "There is no blame on you if you feed them (thereof) in a just and reasonable manner. ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، انھیں عروھ نے بیان کیا اور ان سے عائشھ رضی اللھ عنھا نے کھ ھند بنت عتبھ بن ربیعھ آئیں اور کھا یا رسول اللھ ! روئے زمین کا کوئی گھرانھ ایسا نھیں تھا جس کے متعلق اس درجھ میں ذلت کی خواھشمند ھوں جتنا آپ کے گھرانھ کی ذلت و رسوائی کی میں خواھشمند تھی لیکن اب میرا یھ حال ھے کھ میں سب سے زیادھ خواھشمند ھوں کھ روئے زمین کے تمام گھرانوں میں آپ کا گھرانھ عزت و سربلندی والا ھو ۔ پھر انھوں نے کھا کھ ابوسفیان رضی اللھ عنھ بخیل آدمی ھیں ، تو کیا میرے لیے کوئی حرج ھے اگر میں ان کے مال میں سے ( ان کی اجازت کے بغیر لے کر ) اپنے اھل و عیال کو کھلاؤں ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کھ تمھارے لیے کوئی حرج نھیں ھے ، اگر تم انھیں دستور کے مطابق کھلاؤ ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7161
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 275


حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ، حَدَّثَنَا غُنْدَرٌ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ سَمِعْتُ قَتَادَةَ، عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ، قَالَ لَمَّا أَرَادَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم أَنْ يَكْتُبَ إِلَى الرُّومِ قَالُوا إِنَّهُمْ لاَ يَقْرَءُونَ كِتَابًا إِلاَّ مَخْتُومًا‏.‏ فَاتَّخَذَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم خَاتَمًا مِنْ فِضَّةٍ، كَأَنِّي أَنْظُرُ إِلَى وَبِيصِهِ، وَنَقْشُهُ مُحَمَّدٌ رَسُولُ اللَّهِ‏.‏

Narrated Anas bin Malik: When the Prophet (PBUH) intended to write to the Byzantines, the people said, "They do not read a letter unless it is sealed (stamped)." Therefore the Prophet (PBUH) took a silver ring----as if I am looking at its glitter now----and its engraving was: 'Muhammad, Apostle of Allah'. مجھ سے محمد بن بشار نے بیان کیا ، کھا ھم سے غندر نے بیان کیا ، ان سے شعبھ نے بیان کیا ، کھا کھ میں نے قتادھ سے سنا ، ان سے انس بن مالک رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ جب نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے اھل روم کو خط لکھنا چاھا تو صحابھ نے کھا کھ رومی صرف مھر لگا ھوا خط ھی قبول کرتے ھیں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے چاندی کی ایک مھر بنوائی ۔ گویا میں اس کی چمک کو اس وقت بھی دیکھ رھا ھوں اور اس پر کلمھ ” محمد رسول اللھ “ نقش تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7162
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 276


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، أَخْبَرَنِي السَّائِبُ بْنُ يَزِيدَ ابْنُ أُخْتِ، نَمِرٍ أَنَّ حُوَيْطِبَ بْنَ عَبْدِ الْعُزَّى، أَخْبَرَهُ أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ السَّعْدِيِّ أَخْبَرَهُ أَنَّهُ، قَدِمَ عَلَى عُمَرَ فِي خِلاَفَتِهِ فَقَالَ لَهُ عُمَرُ أَلَمْ أُحَدَّثْ أَنَّكَ تَلِي مِنْ أَعْمَالِ النَّاسِ أَعْمَالاً، فَإِذَا أُعْطِيتَ الْعُمَالَةَ كَرِهْتَهَا‏.‏ فَقُلْتُ بَلَى‏.‏ فَقَالَ عُمَرُ مَا تُرِيدُ إِلَى ذَلِكَ قُلْتُ إِنَّ لِي أَفْرَاسًا وَأَعْبُدًا، وَأَنَا بِخَيْرٍ، وَأَرِيدُ أَنْ تَكُونَ عُمَالَتِي صَدَقَةً عَلَى الْمُسْلِمِينَ‏.‏ قَالَ عُمَرُ لاَ تَفْعَلْ فَإِنِّي كُنْتُ أَرَدْتُ الَّذِي أَرَدْتَ فَكَانَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يُعْطِينِي الْعَطَاءَ فَأَقُولُ أَعْطِهِ أَفْقَرَ إِلَيْهِ مِنِّي‏.‏ حَتَّى أَعْطَانِي مَرَّةً مَالاً فَقُلْتُ أَعْطِهِ أَفْقَرَ إِلَيْهِ مِنِّي‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ خُذْهُ فَتَمَوَّلْهُ وَتَصَدَّقْ بِهِ، فَمَا جَاءَكَ مِنْ هَذَا الْمَالِ وَأَنْتَ غَيْرُ مُشْرِفٍ وَلاَ سَائِلٍ فَخُذْهُ، وَإِلاَّ فَلاَ تُتْبِعْهُ نَفْسَكَ ‏"‏

Narrated 'Abdullah bin As-Sa'di: That when he went to 'Umar during his Caliphate. 'Umar said to him, "Haven't I been told that you do certain jobs for the people but when you are given payment you refuse to take it?" 'Abdullah added: I said, "Yes." 'Umar said, "Why do you do so?" I said, "I have horses and slaves and I am living in prosperity and I wish that my payment should be kept as a charitable gift for the Muslims." 'Umar said, "Do not do so, for I intended to do the same as you do. Allah's Messenger (PBUH)s used to give me gifts and I used to say to him, 'Give it to a more needy one than me.' Once he gave me some money and I said, 'Give it to a more needy person than me,' whereupon the Prophet (PBUH) said, 'Take it and keep it in your possession and then give it in charity. Take what ever comes to you of this money if you are not keen to have it and not asking for it; otherwise (i.e., if it does not come to you) do not seek to have it yourself.' " ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، انھیں نمر کے بھانجے سائب بن یزید نے خبر دی ، انھیں حویطب بن عبدالعزیٰ نے خبر دی ، انھیں عبداللھ بن السعیدی نے خبر دی کھ وھ عمر رضی اللھ عنھ کے پاس ان کے زمانھ خلافت میں آئے تو ان سے عمر رضی اللھ عنھ نے پوچھا ، کیا مجھ سے یھ جو کھا گیا ھے وھ صحیح ھے کھ تمھیں لوگوں کے کام سپرد کئے جاتے ھیں اور جب اس کی تنخواھ دی جاتی ھے تو تم اسے لینا پسند نھیں کرتے ؟ میں نے کھا کھ یھ صحیح ھے ۔ عمر رضی اللھ عنھ نے کھا کھ تمھارا اس سے مقصد کیا ھے ؟ میں نے عرض کیا کھ میرے پاس گھوڑے اور غلام ھیں اور میں خوشحال ھوں اور میں چاھتا ھوں کھ میری تنخواھ مسلمانوں پر صدقھ ھو جائے ۔ عمر رضی اللھ عنھ نے فرمایا کھ ایسا نھ کرو کیونکھ میں نے بھی اس کا ارادھ کیا تھا جس کا تم نے ارادھ کیا ھے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم مجھے عطا کرتے تھے تو میں عرض کر دیتا تھا کھ اسے مجھ سے زیادھ اس کے ضرورت مند کو عطا فرما دیجئیے ۔ آخر آپ نے ایک مرتبھ مجھے مال عطا کیا اور میں نے وھی بات دھرائی کھ اسے ایسے شخص کو دے دیجئیے جو اس کا مجھ سے زیادھ ضرورت مند ھو تو آپ نے فرمایا کھ اسے لو اور اس کے مالک بننے کے بعد اس کا صدقھ کرو ۔ یھ مال جب تمھیں اس طرح ملے کھ تم اس کے نھ خواھشمند ھو اور نھ اسے مانگا تو اسے لے لیا کرو اور اگر اس طرح نھ ملے تو اس کے پیچھے نھ پڑا کرو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7163
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 277


وَعَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ حَدَّثَنِي سَالِمُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، أَنْ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ، قَالَ سَمِعْتُ عُمَرَ، يَقُولُ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يُعْطِينِي الْعَطَاءَ فَأَقُولُ أَعْطِهِ أَفْقَرَ إِلَيْهِ مِنِّي‏.‏ حَتَّى أَعْطَانِي مَرَّةً مَالاً فَقُلْتُ أَعْطِهِ مَنْ هُوَ أَفْقَرُ إِلَيْهِ مِنِّي‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ خُذْهُ فَتَمَوَّلْهُ وَتَصَدَّقْ بِهِ، فَمَا جَاءَكَ مِنْ هَذَا الْمَالِ وَأَنْتَ غَيْرُ مُشْرِفٍ وَلاَ سَائِلٍ فَخُذْهُ، وَمَا لاَ فَلاَ تُتْبِعْهُ نَفْسَكَ ‏"‏‏.‏

Narrated 'Abdullah bin 'Umar: I have heard 'Umar saying, "The Prophet (PBUH) used to give me some money (grant) and I would say (to him), 'Give it to a more needy one than me.' Once he gave me some money and I said, 'Give it to a more needy one than me.' The Prophet (PBUH) said (to me), 'Take it and keep it in your possession and then give it in charity. Take whatever comes to you of this money while you are not keen to have it and not asking for it; take it, but you should not seek to have what you are not given. ' " اور زھری سے روایت ھے انھوں نے بیان کیا کھ مجھ سے سالم بن عبداللھ نے بیان کیا ، ان سے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے کھ میں نے عمر رضی اللھ عنھ سے سنا ، انھوں نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم مجھے عطا کرتے تھے تو میں کھتا کھ آپ اسے دے دیں جو اس کا مجھ سے زیادھ ضرورت مند ھو ، پھر آپ نے مجھے ایک مرتبھ مال دیا اور میں نے کھا کھ آپ اسے ایسے شخص کو دے دیں جو اس کا مجھ سے زیادھ ضرورت مند ھو تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اسے لے لو اور اس کے مالک بننے کے بعد اس کا صدقھ کر دو ۔ یھ مال جب تمھیں اس طرح ملے کھ تم اس کے خواھشمند نھ ھو اور نھ اسے تم نے مانگا ھو تو اسے لے لیا کرو اور جو اس طرح نھ ملے اس کے پیچھے نھ پڑا کرو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7164
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 277


حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، قَالَ الزُّهْرِيُّ عَنْ سَهْلِ بْنِ سَعْدٍ، قَالَ شَهِدْتُ الْمُتَلاَعِنَيْنِ وَأَنَا ابْنُ خَمْسَ، عَشْرَةَ فُرِّقَ بَيْنَهُمَا‏.‏

Narrated Sahl bin Sa`d: I witnessed a husband and a wife who were involved in a case of Lian. Then (the judgment of) divorce was passed. I was fifteen years of age, at that time. ھم سے علی بن عبداللھ نے بیان کیا ، ان سے سفیان نے بیان کیا ، ان سے زھری نے بیان کیا ، ان سے سھل بن سعد رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں نے دو لعان کرنے والوں کو دیکھا ۔ میں اس وقت پندرھ سال کا تھا اور ان دونوں کے درمیان جدائی کرا دی گئی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7165
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 278


حَدَّثَنَا يَحْيَى، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ، أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ، أَخْبَرَنِي ابْنُ شِهَابٍ، عَنْ سَهْلٍ، أَخِي بَنِي سَاعِدَةَ أَنَّ رَجُلاً، مِنَ الأَنْصَارِ جَاءَ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ أَرَأَيْتَ رَجُلاً وَجَدَ مَعَ امْرَأَتِهِ رَجُلاً، أَيَقْتُلُهُ فَتَلاَعَنَا فِي الْمَسْجِدِ وَأَنَا شَاهِدٌ‏.‏

Narrated Sahl: (the brother of Bani Sa`ida) A man from the Ansar came to the Prophet (PBUH) and said, "If a man finds another man sleeping with his wife, should he kill him?" That man and his wife then did Lian in the mosque while I was present. ھم سے یحییٰ نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالرزاق نے بیان کیا ، انھیں ابن جریج نے خبر دی ، انھیں ابن شھاب نے خبر دی ، انھیں بنی ساعدھ کے ایک فرد سھل رضی اللھ عنھ نے خبر دی کھ قبیلھ انصار کا ایک شخص نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس آیا اور عرض کیا آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کا اس بارے میں کیا خیال ھے اگر کوئی مرد اپنی بیوی کے ساتھ دوسرے مرد کو دیکھے ، کیا اسے قتل کر سکتا ھے ؟ پھر دونوں ( میاں بیوی ) میں میری موجودگی میں لعان کرایاگیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 93 Hadith no 7166
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 89 Hadith no 279



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.