Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Khusoomaat

كتاب الخصومات

حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ عَبْدُ الْمَلِكِ بْنُ مَيْسَرَةَ أَخْبَرَنِي قَالَ سَمِعْتُ النَّزَّالَ، سَمِعْتُ عَبْدَ اللَّهِ، يَقُولُ سَمِعْتُ رَجُلاً، قَرَأَ آيَةً سَمِعْتُ مِنَ النَّبِيِّ، صلى الله عليه وسلم خِلاَفَهَا، فَأَخَذْتُ بِيَدِهِ، فَأَتَيْتُ بِهِ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ ‏"‏ كِلاَكُمَا مُحْسِنٌ ‏"‏‏.‏ قَالَ شُعْبَةُ أَظُنُّهُ قَالَ ‏"‏ لاَ تَخْتَلِفُوا فَإِنَّ مَنْ كَانَ قَبْلَكُمُ اخْتَلَفُوا فَهَلَكُوا ‏"‏‏.‏


Chapter: About the people and quarrels

Narrated `Abdullah: I heard a man reciting a verse (of the Holy Qur'an) but I had heard the Prophet (PBUH) reciting it differently. So, I caught hold of the man by the hand and took him to Allah's Messenger (PBUH) who said, "Both of you are right." Shu`ba, the sub-narrator said, "I think he said to them, "Don't differ, for the nations before you differed and perished (because of their differences). " ھم سے ابوالولید نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے شعبھ نے بیان کیا کھ عبدالملک بن میسرھ نے مجھے خبری دی کھا کھ میں نے نزال بن سمرھ سے سنا ، اور انھوں نے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما سے سنا ، انھوں نے کھا کھ میں نے ایک شخص کو قرآن کی آیت اس طرح پڑھتے سنا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ سلم سے میں نے اس کے خلاف سنا تھا ۔ اس لیے میں ان کا ھاتھ تھامے آپ کی خدمت میں لے گیا ۔ آپ نے ( میرا اعتراض سن کر ) فرمایا کھ تم دونوں درست ھو ۔ شعبھ نے بیان کیا کھ میں سجھتا ھوں کھ آپ نے یھ بھی فرمایا کھ اختلاف نھ کرو ، کیونکھ تم سے پھلے لوگ اختلاف ھی کی وجھ سے تباھ ھو گئے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2410
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 593


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ قَزَعَةَ، حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، وَعَبْدِ الرَّحْمَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ اسْتَبَّ رَجُلاَنِ رَجُلٌ مِنَ الْمُسْلِمِينَ وَرَجُلٌ مِنَ الْيَهُودِ، قَالَ الْمُسْلِمُ وَالَّذِي اصْطَفَى مُحَمَّدًا عَلَى الْعَالَمِينَ، فَقَالَ الْيَهُودِيُّ وَالَّذِي اصْطَفَى مُوسَى عَلَى الْعَالَمِينَ‏.‏ فَرَفَعَ الْمُسْلِمُ يَدَهُ عِنْدَ ذَلِكَ فَلَطَمَ وَجْهَ الْيَهُودِيِّ، فَذَهَبَ الْيَهُودِيُّ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَأَخْبَرَهُ بِمَا كَانَ مِنْ أَمْرِهِ وَأَمْرِ الْمُسْلِمِ، فَدَعَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم الْمُسْلِمَ فَسَأَلَهُ عَنْ ذَلِكَ، فَأَخْبَرَهُ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تُخَيِّرُونِي عَلَى مُوسَى، فَإِنَّ النَّاسَ يَصْعَقُونَ يَوْمَ الْقِيَامَةِ، فَأَصْعَقُ مَعَهُمْ، فَأَكُونُ أَوَّلَ مَنْ يُفِيقُ، فَإِذَا مُوسَى بَاطِشٌ جَانِبَ الْعَرْشِ، فَلاَ أَدْرِي أَكَانَ فِيمَنْ صَعِقَ فَأَفَاقَ قَبْلِي، أَوْ كَانَ مِمَّنِ اسْتَثْنَى اللَّهُ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Two persons, a Muslim and a Jew, quarreled. The Muslim said, "By Him Who gave Muhammad superiority over all the people! The Jew said, "By Him Who gave Moses superiority over all the people!" At that the Muslim raised his hand and slapped the Jew on the face. The Jew went to the Prophet and informed him of what had happened between him and the Muslim. The Prophet (PBUH) sent for the Muslim and asked him about it. The Muslim informed him of the event. The Prophet (PBUH) said, "Do not give me superiority over Moses, for on the Day of Resurrection all the people will fall unconscious and I will be one of them, but I will. be the first to gain consciousness, and will see Moses standing and holding the side of the Throne (of Allah). I will not know whether (Moses) has also fallen unconscious and got up before me, or Allah has exempted him from that stroke." ھم سے یحییٰ بن قزعھ نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے ابراھیم بن سعد نے بیان کیا ، ان سے ابن شھاب نے ، ان سے ابوسلمھ اور عبدالرحمٰن اعرج نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ دو شخصوں نے جن میں ایک مسلمان تھا اور دوسرا یھودی ، ایک دوسرے کو برا بھلا کھا ۔ مسلمان نے کھا ، اس ذا ت کی قسم ! جس نے محمد ( صلی اللھ علیھ وسلم ) کو تمام دنیا والوں پر بزرگی دی ۔ اور یھودی نے کھا ، اس ذا ت کی قسم جس نے موسیٰ ( علیھ الصلٰوۃ و السلام ) کو تمام دنیا والوں پر بزرگی دی ۔ اس پر مسلمان نے ھاتھ اٹھا کر یھودی کے طمانچھ مارا ۔ وھ یھودی نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں حاضر ھوا ۔ اور مسلمان کے ساتھ اپنے واقعھ کو بیان کیا ۔ پھر حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے اس مسلمان کو بلایا اور ان سے واقعھ کے متعلق پوچھا ۔ انھوں نے آپ کو اس کی تفصیل بتا دی ۔ آپ نے اس کے بعد فرمایا ، مجھے موسیٰ علیھ السلام پر ترجیح نھ دو ۔ لوگ قیامت کے دن بیھوش کر دیئے جائیں گے ۔ میں بھی بیھوش ھو جاؤں گا ۔ بے ھوشی سے ھوش میں آنے والا سب سے پھلا شخص میں ھوں گا ، لیکن موسیٰ علیھ السلام کو عرش الٰھی کا کنارھ پکڑے ھوئے پاؤں گا ۔ اب مجھے معلوم نھیں کھ موسیٰ علیھ السلام بھی بیھوش ھونے والوں میں ھوں گے اور مجھ سے پھلے انھیں ھوش آ جائے گا ۔ یا اللھ تعالیٰ نے ان کو ان لوگوں میں رکھا ھے جو بے ھوشی سے مستثنیٰ ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2411
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 594


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ، حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ يَحْيَى، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ الْخُدْرِيِّ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ بَيْنَمَا رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم جَالِسٌ جَاءَ يَهُودِيٌّ، فَقَالَ يَا أَبَا الْقَاسِمِ ضَرَبَ وَجْهِي رَجُلٌ مِنْ أَصْحَابِكَ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ مَنْ ‏"‏‏.‏ قَالَ رَجُلٌ مِنَ الأَنْصَارِ‏.‏ قَالَ ‏"‏ ادْعُوهُ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ أَضَرَبْتَهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ سَمِعْتُهُ بِالسُّوقِ يَحْلِفُ وَالَّذِي اصْطَفَى مُوسَى عَلَى الْبَشَرِ‏.‏ قُلْتُ أَىْ خَبِيثُ، عَلَى مُحَمَّدٍ صلى الله عليه وسلم فَأَخَذَتْنِي غَضْبَةٌ ضَرَبْتُ وَجْهَهُ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تُخَيِّرُوا بَيْنَ الأَنْبِيَاءِ، فَإِنَّ النَّاسَ يَصْعَقُونَ يَوْمَ الْقِيَامَةِ، فَأَكُونُ أَوَّلَ مَنْ تَنْشَقُّ عَنْهُ الأَرْضُ، فَإِذَا أَنَا بِمُوسَى آخِذٌ بِقَائِمَةٍ مِنْ قَوَائِمِ الْعَرْشِ، فَلاَ أَدْرِي أَكَانَ فِيمَنْ صَعِقَ، أَمْ حُوسِبَ بِصَعْقَةِ الأُولَى ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Sa`id Al-Khudri: While Allah's Messenger (PBUH) was sitting, a Jew came and said, "O Abul Qasim! One of your companions has slapped me on my face." The Prophet (PBUH) asked who that was. He replied that he was one of the Ansar. The Prophet (PBUH) sent for him, and on his arrival, he asked him whether he had beaten the Jew. He (replied in the affirmative and) said, "I heard him taking an oath in the market saying, 'By Him Who gave Moses superiority over all the human beings.' I said, 'O wicked man! (Has Allah given Moses superiority) even over Muhammad I became furious and slapped him over his face." The Prophet (PBUH) said, "Do not give a prophet superiority over another, for on the Day of Resurrection all the people will fall unconscious and I will be the first to emerge from the earth, and will see Moses standing and holding one of the legs of the Throne. I will not know whether Moses has fallen unconscious or the first unconsciousness was sufficient for him." ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے وھیب نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے عمرو بن یحییٰ نے بیان کیا ، ان سے ان کے باپ یحییٰ بن عمارھ نے اور ان سے ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم تشریف فرما تھے کھ ایک یھودی آیا اور کھا کھ اے ابوالقاسم ! آپ کے اصحاب میں سے ایک نے مجھے طمانچھ مارا ھے ۔ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے دریافت فرمایا ، کس نے ؟ اس نے کھا کھ ایک انصاری نے ۔ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ انھیں بلاؤ ۔ وھ آئے تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے پوچھا کیا تم نے اسے مارا ھے ؟ انھوں نے کھا کھ میں نے اسے بازار میں یھ قسم کھاتے سنا ۔ اس ذات کی قسم ! جس نے موسیٰ علیھ السلام کو تمام انسانوں پر بزرگی دی ۔ میں نے کھا ، او خبیث ! کیا محمد صلی اللھ علیھ وسلم پر بھی ! مجھے غصھ آیا اور میں نے اس کے منھ پر تھپڑ دے مارا ۔ اس پر نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا دیکھو انبیاء میں باھم ایک دوسرے پر اس طرح بزرگی نھ دیا کرو ۔ لوگ قیامت میں بیھوش ھو جائیں گے ۔ اپنی قبر سے سب سے پھلے نکلنے والا میں ھی ھوں گا ۔ لیکن میں دیکھوں گا کھ موسیٰ علیھ السلام عرش الٰھی کا پایھ پکڑے ھوئے ھیں ۔ اب مجھے معلوم نھیں کھ موسیٰ علیھ السلام بھی بیھوش ھوں گے اور مجھ سے پھلے ھوش میں آ جائیں گے یا انھیں پھلی بے ھوشی جو طور پر ھو چکی ھے وھی کافی ھو گی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2412
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 595


حَدَّثَنَا مُوسَى، حَدَّثَنَا هَمَّامٌ، عَنْ قَتَادَةَ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ يَهُودِيًّا، رَضَّ رَأْسَ جَارِيَةٍ بَيْنَ حَجَرَيْنِ، قِيلَ مَنْ فَعَلَ هَذَا بِكِ أَفُلاَنٌ، أَفُلاَنٌ حَتَّى سُمِّيَ الْيَهُودِيُّ فَأَوْمَتْ بِرَأْسِهَا، فَأُخِذَ الْيَهُودِيُّ فَاعْتَرَفَ، فَأَمَرَ بِهِ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فَرُضَّ رَأْسُهُ بَيْنَ حَجَرَيْنِ‏.‏

Narrated Anas: A Jew crushed the head of a girl between two stones. The girl was asked who had crushed her head, and some names were mentioned before her, and when the name of the Jew was mentioned, she nodded agreeing. The Jew was captured and when he confessed, the Prophet (PBUH) ordered that his head be crushed between two stones. ھم سے موسیٰ نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے ھمام نے بیان کیا ، ان سے قتادھ نے اور ان سے انس رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ ایک یھودی نے ایک لڑکی کا سر دو پتھروں کے درمیان رکھ کر کچل دیا تھا ۔ ( اس میں کچھ جان باقی تھی ) اس سے پوچھا گیا کھ تیرے ساتھ یھ کس نے کیا ھے ؟ کیا فلاں نے ، فلاں نے ؟ جب اس یھودی کا نام آیا تو اس نے اپنے سر سے اشارھ کیا ( کھ ھاں ) یھودی پکڑا گیا اور اس نے بھی جرم کا اقرار کر لیا ، نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے حکم دیا اور اس کا سر بھی دو پتھروں کے درمیان رکھ کر کچل دیا گیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2413
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 596


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ مُسْلِمٍ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ دِينَارٍ، قَالَ سَمِعْتُ ابْنَ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كَانَ رَجُلٌ يُخْدَعُ فِي الْبَيْعِ فَقَالَ لَهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِذَا بَايَعْتَ فَقُلْ لاَ خِلاَبَةَ ‏"‏‏.‏ فَكَانَ يَقُولُهُ‏.‏

Narrated Ibn `Umar: A man was often cheated in buying. The Prophet (PBUH) said to him, "When you buy something, say (to the seller), No cheating." The man used to say so thenceforward . ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے عبدالعزیز بن مسلم نے بیان کیا ، ان سے عبداللھ بن دینار نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ میں نے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما سے سنا ، آپ نے کھا کھ ایک صحابی کوئی چیز خریدتے وقت دھوکا کھا جایا کرتے تھے ۔ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کھ جب تو خریدا کرے تو یھ کھھ دے کھ کوئی دھوکا نھ ھو ۔ پس وھ اسی طرح کھا کرتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2414
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 597


حَدَّثَنَا عَاصِمُ بْنُ عَلِيٍّ، حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي ذِئْبٍ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الْمُنْكَدِرِ، عَنْ جَابِرٍ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ رَجُلاً، أَعْتَقَ عَبْدًا لَهُ، لَيْسَ لَهُ مَالٌ غَيْرُهُ، فَرَدَّهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم، فَابْتَاعَهُ مِنْهُ نُعَيْمُ بْنُ النَّحَّامِ‏.‏

Narrated Jabir: A man manumitted a slave and he had no other property than that, so the Prophet (PBUH) canceled the manumission (and sold the slave for him). Nu'aim bin Al-Nahham bought the slave from him. ھم سے عاصم بن علی نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے ابن ابی ذئب نے بیان کیا ، ان سے محمد بن منکدر نے اور ان سے جابر رضی اللھ عنھ نے کھ ایک شخص نے اپنا ایک غلام آزاد کیا ، لیکن اس کے پاس اس کے سوا اور کوئی مال نھ تھا ۔ اس لیے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے اسے اس کا غلام واپس کرا دیا ۔ اور اسے نعیم بن نحام نے خرید لیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 44 Hadith no 2415
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 41 Hadith no 598



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.