Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Limits and Punishments set by Allah (Hudood)

كتاب الحدود

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مُقَاتِلٍ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا يُونُسُ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، قَالَ حَدَّثَنِي أَبُو سَلَمَةَ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ الأَنْصَارِيِّ، أَنَّ رَجُلاً، مِنْ أَسْلَمَ أَتَى رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَحَدَّثَهُ أَنَّهُ قَدْ زَنَى، فَشَهِدَ عَلَى نَفْسِهِ أَرْبَعَ شَهَادَاتٍ، فَأَمَرَ بِهِ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَرُجِمَ، وَكَانَ قَدْ أُحْصِنَ‏.‏

Narrated Jabir bin `Abdullah Al-Ansari: A man from the tribe of Bani Aslam came to Allah's Messenger (PBUH) and Informed him that he had committed illegal sexual intercourse and bore witness four times against himself. Allah's Messenger (PBUH) ordered him to be stoned to death as he was a married Person. ھم سے محمد بن مقاتل نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ بن مبارک نے خبر دی ، کھا ھم کو یونس نے خبر دی ، ان سے ابن شھاب نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے بیان کیا ، ان سے حضرت جابر بن عبداللھ انصاری رضی اللھ عنھما نے کھ قبیلھ اسلم کے ایک صاحب ماعز نامی رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں آئے اور کھا کھ میں نے زنا کیا ھے ۔ پھر انھوں نے اپنے زنا کا چار مرتبھ اقرار کیا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کے رجم کا حکم دیا اور انھیں رجم کیا گیا ۔ وھ شادی شدھ تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6814
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 805


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ عُقَيْلٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، وَسَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ أَتَى رَجُلٌ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم وَهْوَ فِي الْمَسْجِدِ فَنَادَاهُ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنِّي زَنَيْتُ‏.‏ فَأَعْرَضَ عَنْهُ، حَتَّى رَدَّدَ عَلَيْهِ أَرْبَعَ مَرَّاتٍ، فَلَمَّا شَهِدَ عَلَى نَفْسِهِ أَرْبَعَ شَهَادَاتٍ، دَعَاهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ ‏"‏ أَبِكَ جُنُونٌ ‏"‏‏.‏ قَالَ لاَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَهَلْ أَحْصَنْتَ ‏"‏‏.‏ قَالَ نَعَمْ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اذْهَبُوا بِهِ فَارْجُمُوهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ ابْنُ شِهَابٍ فَأَخْبَرَنِي مَنْ، سَمِعَ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ، قَالَ فَكُنْتُ فِيمَنْ رَجَمَهُ فَرَجَمْنَاهُ بِالْمُصَلَّى، فَلَمَّا أَذْلَقَتْهُ الْحِجَارَةُ هَرَبَ، فَأَدْرَكْنَاهُ بِالْحَرَّةِ فَرَجَمْنَاهُ‏.‏

Narrated Abu Huraira: A man came to Allah's Messenger (PBUH) while he was in the mosque, and he called him, saying, "O Allah's Apostle! I have committed illegal sexual intercourse.'" The Prophet (PBUH) turned his face to the other side, but that man repeated his statement four times, and after he bore witness against himself four times, the Prophet (PBUH) called him, saying, "Are you mad?" The man said, "No." The Prophet (PBUH) said, "Are you married?" The man said, "Yes." Then the Prophet (PBUH) said, 'Take him away and stone him to death." Jabir bin `Abdullah said: I was among the ones who participated in stoning him and we stoned him at the Musalla. When the stones troubled him, he fled, but we over took him at Al-Harra and stoned him to death. ھم سے یحییٰ بن بکیر نے بیان کیا ، کھا ھم سے لیث نے بیان کیا ، ان سے عقیل نے ، ان سے ابن شھاب نے ، ان سے ابوسلمھ اور سعید بن المسیب نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ ایک صاحب ماعز بن مالک اسلمی رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں آئے ، اس وقت آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم مسجد میں تھے ، انھوں نے آپ کو آواز دی اور کھا کھ یا رسول اللھ ! میں نے زنا کر لیا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کی طرف سے منھ پھیر لیا ۔ انھوں نے یھ بات چار دفعھ دوھرائی جب چار دفعھ انھوں نے اس گناھ کی اپنے اوپر شھادت دی تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں بلایا اور دریافت فرمایا کیا تم دیوانے ھو ؟ انھوں نے کھا کھ نھیں ۔ آپ نے دریافت فرمایا پھر کیا تم شادی شدھ ھو ؟ انھوں نے کھا ھاں ۔ اس پر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ انھیں لے جاؤ اور رجم کر دو ۔ ابن شھاب نے بیان کیا کھ پھر مجھے انھوں نے خبر دی ، جنھوں نے حضرت جابر بن عبداللھ رضی اللھ عنھما سے سنا تھا کھ انھوں نے کھا کھ رجم کرنے والوں میں میں بھی تھا ، ھم نے انھیں آبادی سے باھر عیدگاھ کے پاس رجم کیا تھا جب ان پر پتھر پڑے تو وھ بھاگ پڑے لیکن ھم نے انھیں حرھ کے پاس پکڑا اور رجم کر دیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6815, 6816
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 806


حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عُرْوَةَ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتِ اخْتَصَمَ سَعْدٌ وَابْنُ زَمْعَةَ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ هُوَ لَكَ يَا عَبْدُ بْنَ زَمْعَةَ، الْوَلَدُ لِلْفِرَاشِ، وَاحْتَجِبِي مِنْهُ يَا سَوْدَةُ ‏"‏‏.‏ زَادَ لَنَا قُتَيْبَةُ عَنِ اللَّيْثِ ‏"‏ وَلِلْعَاهِرِ الْحَجَرُ ‏"‏‏.‏


Chapter: The stone is for illegal sexual intercourse

Narrated `Aisha: Sa`d bin Abi Waqqas and `Abd bin Zam`a quarrelled with each other (regarding a child). The Prophet (PBUH) said, "The boy is for you, O `Abd bin Zam`a, for the boy is for (the owner) of the bed. O Sauda ! Screen yourself from the boy." The sub-narrator, Al-Laith added (that the Prophet (PBUH) also said), "And the stone is for the person who commits an illegal sexual intercourse." ھم سے ابوالولید نے بیان کیا ، کھا ھم سے لیث بن سعد نے بیان کیا ، ان سے ابن شھاب نے ، ان سے عروھ نے اور ان سے حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ سعد بن ابی وقاص اور عبد بن زمعھ رضی اللھ عنھما نے آپس میں ( ایک بچے عبدالرحمٰن نامی میں ) اختلاف کیا تو نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا عبد بن زمعھ ! بچھ تو لے لے بچھ اسی کو ملے گا جس کی جورو یا لونڈی کے پیٹ سے وھ پیدا ھوا اور سودھ ! تم اس سے پردھ کیا کرو ۔ حضرت امام بخاری رحمھ اللھ نے کھا کھ قتیبھ نے لیث سے اس زیادھ کے ساتھ بیان کیا کھ زانی کے حصھ میں پتھر کی سزا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6817
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 807


حَدَّثَنَا آدَمُ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ زِيَادٍ، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا هُرَيْرَةَ، قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ الْوَلَدُ لِلْفِرَاشِ، وَلِلْعَاهِرِ الْحَجَرُ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "The boy is for (the owner of) the bed and the stone is for the person who commits illegal sexual intercourse.' ھم سے آدم بن ابی ایاس نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے محمد بن زیاد نے بیان کیا ، کھا کھ میں نے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے سنا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا لڑکا اسی کو ملتا ھے جس کی جورو یا لونڈی کے پیٹ سے ھوا ھو اور حرام کار کے لیے صرف پتھر ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6818
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 808


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عُثْمَانَ، حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ مَخْلَدٍ، عَنْ سُلَيْمَانَ، حَدَّثَنِي عَبْدُ اللَّهِ بْنُ دِينَارٍ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ أُتِيَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم بِيَهُودِيٍّ وَيَهُودِيَّةٍ قَدْ أَحْدَثَا جَمِيعًا فَقَالَ لَهُمْ ‏"‏ مَا تَجِدُونَ فِي كِتَابِكُمْ ‏"‏‏.‏ قَالُوا إِنَّ أَحْبَارَنَا أَحْدَثُوا تَحْمِيمَ الْوَجْهِ وَالتَّجْبِيَةَ‏.‏ قَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ سَلاَمٍ ادْعُهُمْ يَا رَسُولَ اللَّهِ بِالتَّوْرَاةِ‏.‏ فَأُتِيَ بِهَا فَوَضَعَ أَحَدُهُمْ يَدَهُ عَلَى آيَةِ الرَّجْمِ، وَجَعَلَ يَقْرَأُ مَا قَبْلَهَا وَمَا بَعْدَهَا فَقَالَ لَهُ ابْنُ سَلاَمٍ ارْفَعْ يَدَكَ‏.‏ فَإِذَا آيَةُ الرَّجْمِ تَحْتَ يَدِهِ، فَأَمَرَ بِهِمَا رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَرُجِمَا‏.‏ قَالَ ابْنُ عُمَرَ فَرُجِمَا عِنْدَ الْبَلاَطِ، فَرَأَيْتُ الْيَهُودِيَّ أَجْنَأَ عَلَيْهَا‏.‏


Chapter: The Rajm at the Balat

Narrated Ibn `Umar: A Jew and a Jewess were brought to Allah's Messenger (PBUH) on a charge of committing an illegal sexual intercourse. The Prophet (PBUH) asked them. "What is the legal punishment (for this sin) in your Book (Torah)?" They replied, "Our priests have innovated the punishment of blackening the faces with charcoal and Tajbiya." `Abdullah bin Salam said, "O Allah's Messenger (PBUH), tell them to bring the Torah." The Torah was brought, and then one of the Jews put his hand over the Divine Verse of the Rajam (stoning to death) and started reading what preceded and what followed it. On that, Ibn Salam said to the Jew, "Lift up your hand." Behold! The Divine Verse of the Rajam was under his hand. So Allah's Apostle ordered that the two (sinners) be stoned to death, and so they were stoned. Ibn `Umar added: So both of them were stoned at the Balat and I saw the Jew sheltering the Jewess. ھم سے محمد بن عثمان نے بیان کیا ، کھا ھم سے خالد بن مخلد نے بیان کیا ، ان سے سلیمان بن بلال نے ، ان سے عبداللھ بن دینار نے بیان کیا اور ان سے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس ایک یھودی مرد اور ایک یھودی عورت کو لایا گیا ، جنھوں نے زنا کیا تھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے پوچھا کھ تمھاری کتاب تورات میں اس کی سزا کیا ھے ؟ انھوں نے کھا کھ ھمارے علماء نے ( اس کی سزا ) چھرھ کو سیاھ کرنا اور گدھے پر الٹا سوار کرنا تجویز کی ھوئی ھے ۔ اس پر حضرت عبداللھ بن سلام رضی اللھ عنھ نے کھا یا رسول اللھ ! ان سے توریت منگوائیے ۔ جب توریت لائی گئی تو ان میں سے ایک نے رجم والی آیت پر اپنا ھاتھ رکھ لیا اور اس سے آگے اور پیچھے کی آیتیں پڑھنے لگا ۔ حضرت عبداللھ بن سلام رضی اللھ عنھ نے اس سے کھا کھ اپنا ھاتھ ھٹاؤ ( اور جب اس نے اپنا ھاتھ ھٹایا تو ) آیت رجم اس کے ھاتھ کے نیچے تھی ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان دونوں کے متعلق حکم دیا اور انھیں رجم کر دیا گیا ۔ حضرت ابن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ انھیں بلاط ( مسجدنبوی کے قریب ایک جگھ ) میں رجم کیا گیا ۔ میں نے دیکھا کھ یھودی عورت کو مرد بچانے کے لیے اس پر جھک جھک پڑتا تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6819
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 809


حَدَّثَنِي مَحْمُودٌ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ، أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ جَابِرٍ، أَنَّ رَجُلاً، مِنْ أَسْلَمَ جَاءَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فَاعْتَرَفَ بِالزِّنَا فَأَعْرَضَ عَنْهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم حَتَّى شَهِدَ عَلَى نَفْسِهِ أَرْبَعَ مَرَّاتٍ‏.‏ قَالَ لَهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ أَبِكَ جُنُونٌ ‏"‏‏.‏ قَالَ لاَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ آحْصَنْتَ ‏"‏‏.‏ قَالَ نَعَمْ‏.‏ فَأَمَرَ بِهِ فَرُجِمَ بِالْمُصَلَّى، فَلَمَّا أَذْلَقَتْهُ الْحِجَارَةُ فَرَّ، فَأُدْرِكَ فَرُجِمَ حَتَّى مَاتَ، فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم خَيْرًا وَصَلَّى عَلَيْهِ‏.‏ لَمْ يَقُلْ يُونُسُ وَابْنُ جُرَيْجٍ عَنِ الزُّهْرِيِّ فَصَلَّى عَلَيْهِ‏.‏


Chapter: The Rajm at the Musalla

Narrated Jabir: A man from the tribe of Aslam came to the Prophet (PBUH) and confessed that he had committed an illegal sexual intercourse. The Prophet (PBUH) turned his face away from him till the man bore witness against himself four times. The Prophet (PBUH) said to him, "Are you mad?" He said "No." He said, "Are you married?" He said, "Yes." Then the Prophet (PBUH) ordered that he be stoned to death, and he was stoned to death at the Musalla. When the stones troubled him, he fled, but he was caught and was stoned till he died. The Prophet (PBUH) spoke well of him and offered his funeral prayer. مجھ سے محمود نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالرزاق نے بیان کیا ، کھا ھم کو معمر نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، انھیں ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے اور انھیں حضرت جابر بن عبداللھ رضی اللھ عنھما نے کھ قبیلھ اسلم کے ایک صاحب ( ماعز بن مالک ) نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس آئے اور زنا کا اقرار کیا ۔ لیکن آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کی طرف سے اپنا منھ پھیر لیا ۔ پھر جب انھوں نے چار مرتبھ اپنے لیے گواھی دی تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے پوچھا کیا تم دیوانے ھو گئے ھو ؟ انھوں نے کھا کھ نھیں ۔ پھر آپ نے پوچھا کیا تمھارا نکاح ھو چکا ھے ؟ انھوں نے کھا کھ ھاں ۔ چنانچھ آپ کے حکم سے انھیں عیدگاھ میں رجم کیا گیا ۔ جب ان پر پتھر پڑے تو وھ بھاگ پڑے لیکن انھیں پکڑلیاگیا اور رجم کیا گیا یھاں تک کھ وھ مرگئے ۔ پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کے حق میں کلمھ خیر فرمایا اور ان کا جنازھ ادا کیا اور ان کی تعریف کی جس کے وھ مستحق تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6820
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 82 Hadith no 810



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.