Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Medicine

كتاب الطب

وَعَنْ أَبِي سَلَمَةَ، سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ، بَعْدُ يَقُولُ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ يُورِدَنَّ مُمْرِضٌ عَلَى مُصِحٍّ ‏"‏‏.‏ وَأَنْكَرَ أَبُو هُرَيْرَةَ حَدِيثَ الأَوَّلِ قُلْنَا أَلَمْ تُحَدِّثْ أَنَّهُ لاَ عَدْوَى فَرَطَنَ بِالْحَبَشِيَّةِ‏.‏ قَالَ أَبُو سَلَمَةَ فَمَا رَأَيْتُهُ نَسِيَ حَدِيثًا غَيْرَهُ‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said: The cattle (sheep, cows, camels, etc.) suffering from a disease should not be mixed up with healthy cattle, (or said: "Do not put a patient with a healthy person ). " (as a precaution). اور ابوسلمھ سے روایت ھے انھوں نے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے سنا کھ انھوں نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کوئی شخص اپنے بیمار اونٹوں کو کسی کے صحت مند اونٹوں میں نھ لے جائے ۔ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے پھلی حدیث کا انکار کیا ۔ ھم نے ( حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے ) عرض کیا کھ آپ ھی نے ھم سے یھ حدیث نھیں بیان کی ھے کھ چھوت یھ نھیں ھوتا پھر وھ ( غصھ میں ) حبشی زبان بولنے لگے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے بیان کیا کھ اس حدیث کے سوا میں نے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ کو اور کوئی حدیث بھولتے نھیں دیکھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5771
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 665


حَدَّثَنَا سَعِيدُ بْنُ عُفَيْرٍ، قَالَ حَدَّثَنِي ابْنُ وَهْبٍ، عَنْ يُونُسَ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي سَالِمُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، وَحَمْزَةُ، أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ عَدْوَى، وَلاَ طِيَرَةَ، إِنَّمَا الشُّؤْمُ فِي ثَلاَثٍ فِي الْفَرَسِ، وَالْمَرْأَةِ، وَالدَّارِ ‏"‏‏.‏


Chapter: No 'Adwa (no contagious disease is conveyed without Allah’s permission)

Narrated `Abdullah bin `Umar: Allah's Messenger (PBUH) said, "there is neither 'Adha nor Tiyara, and an evil omen is only in three: a horse, a woman and a house." (See the foot-note of Hadith No. 649) ھم سے سعید بن عفیر نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ مجھ سے عبداللھ بن وھب نے بیان کیا ، ان سے یونس بن یزید نے ، ان سے ابن شھاب نے کھا کھ مجھے سالم بن عبداللھ اور حمزھ نے خبر دی اور ان سے حضرت عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا چھوت لگ جانے کی کوئی حقیقت نھیں ھے بد شگونی کی کوئی اصل نھیں ۔ ( اگر ممکن ھوتی تو ) نحوست تین چیزوں میں ھوتی ۔ گھوڑے میں عورت میں اور گھر میں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5772
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 666


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ حَدَّثَنِي أَبُو سَلَمَةَ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ، قَالَ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ عَدْوَى ‏"‏‏.‏ قَالَ أَبُو سَلَمَةَ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ سَمِعْتُ أَبَا هُرَيْرَةَ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ تُورِدُوا الْمُمْرِضَ عَلَى الْمُصِحِّ ‏"‏‏.‏ وَعَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي سِنَانُ بْنُ أَبِي سِنَانٍ الدُّؤَلِيُّ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ عَدْوَى ‏"‏‏.‏ فَقَامَ أَعْرَابِيٌّ فَقَالَ أَرَأَيْتَ الإِبِلَ تَكُونُ فِي الرِّمَالِ أَمْثَالَ الظِّبَاءِ فَيَأْتِيهِ الْبَعِيرُ الأَجْرَبُ فَتَجْرَبُ‏.‏ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ فَمَنْ أَعْدَى الأَوَّلَ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "No 'Adha." Abu Huraira also said: The Prophet (PBUH) said, "The cattle suffering from a disease should not be mixed up with healthy cattle (or said "Do not put a patient with a healthy person as a precaution.") Abu Huraira also said: Allah's Messenger (PBUH) said, "No 'Adha." A bedouin got up and said, "Don't you see how camels on the sand look like deer but when a mangy camel mixes with them, they all get infected with mange?" On that the Prophet (PBUH) said, "Then who conveyed the (mange) disease to the first camel?" ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، ان سے زھری نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن بن عوف نے بیان کیا اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا چھوت کی کوئی حقیقت نھیں ۔ ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے بیان کیا کھ میں نے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے سنا ، ان سے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ مریض اونٹوں والا اپنے اونٹ تندرست اونٹوں والے کے اونٹ میں نھ چھوڑے ۔ اور زھری سے روایت ھے ، انھوں نے بیان کیا کھ مجھے سنان بن ابی سنان دؤلی نے خبر دی اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا چھوت کوئی چیز نھیں ھے ۔ اس پر ایک دیھاتی نے کھڑے ھو کر پوچھا آپ نے دیکھا ھو گا کھ ایک اونٹ ریگستان میں ھرن جیسا صاف رھتا ھے لیکن جب وھی ایک خارش والے اونٹ کے پاس آ جاتا ھے تو اسے بھی خارش ھو جاتی ھے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا لیکن پھلے اونٹ کو کس نے خارش لگائی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5773-5775
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 667


حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ، حَدَّثَنَا ابْنُ جَعْفَرٍ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ سَمِعْتُ قَتَادَةَ، عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ عَدْوَى، وَلاَ طِيَرَةَ، وَيُعْجِبُنِي الْفَأْلُ ‏"‏‏.‏ قَالُوا وَمَا الْفَأْلُ قَالَ ‏"‏ كَلِمَةٌ طَيِّبَةٌ ‏"‏‏.‏

Narrated Anas bin Malik: The Prophet (PBUH) said, "No 'Adha nor Tiyara; but I like Fal." They said, "What is the Fal?" He said, "A good word." مجھ سے محمد بن بشار نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابن جعفر نے بیان کیا ، ان سے شعبھ نے بیان کیا ، کھا کھ میں نے قتادھ سے سنا اور انھوں نے حضرت انس بن مالک رضی اللھ عنھ سے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا چھوت لگنا کوئی چیز نھیں ھے اور بد شگونی نھیں ھے البتھ نیک فال مجھے پسند ھے ۔ صحابی نے عرض کیا نیک فال کیا ھے ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اچھی بات منھ سے نکالنا یا کسی سے سن لینا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5776
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 668


حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي سَعِيدٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّهُ قَالَ لَمَّا فُتِحَتْ خَيْبَرُ أُهْدِيَتْ لِرَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم شَاةٌ فِيهَا سَمٌّ، فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اجْمَعُوا لِي مَنْ كَانَ هَا هُنَا مِنَ الْيَهُودِ ‏"‏‏.‏ فَجُمِعُوا لَهُ فَقَالَ لَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِنِّي سَائِلُكُمْ عَنْ شَىْءٍ فَهَلْ أَنْتُمْ صَادِقِيَّ عَنْهُ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا نَعَمْ يَا أَبَا الْقَاسِمِ‏.‏ فَقَالَ لَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنْ أَبُوكُمْ ‏"‏‏.‏ قَالُوا أَبُونَا فُلاَنٌ‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ كَذَبْتُمْ بَلْ أَبُوكُمْ فُلاَنٌ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا صَدَقْتَ وَبَرِرْتَ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ هَلْ أَنْتُمْ صَادِقِيَّ عَنْ شَىْءٍ إِنْ سَأَلْتُكُمْ عَنْهُ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا نَعَمْ يَا أَبَا الْقَاسِمِ، وَإِنْ كَذَبْنَاكَ عَرَفْتَ كَذِبَنَا كَمَا عَرَفْتَهُ فِي أَبِينَا‏.‏ قَالَ لَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنْ أَهْلُ النَّارِ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا نَكُونُ فِيهَا يَسِيرًا، ثُمَّ تَخْلُفُونَنَا فِيهَا‏.‏ فَقَالَ لَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اخْسَئُوا فِيهَا، وَاللَّهِ لاَ نَخْلُفُكُمْ فِيهَا أَبَدًا ‏"‏‏.‏ ثُمَّ قَالَ لَهُمْ ‏"‏ فَهَلْ أَنْتُمْ صَادِقِيَّ عَنْ شَىْءٍ إِنْ سَأَلْتُكُمْ عَنْهُ ‏"‏‏.‏ قَالُوا نَعَمْ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ هَلْ جَعَلْتُمْ فِي هَذِهِ الشَّاةِ سُمًّا ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا نَعَمْ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ مَا حَمَلَكُمْ عَلَى ذَلِكَ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا أَرَدْنَا إِنْ كُنْتَ كَذَّابًا نَسْتَرِيحُ مِنْكَ، وَإِنْ كُنْتَ نَبِيًّا لَمْ يَضُرَّكَ‏.‏

Narrated Abu Huraira: When Khaibar was conquered, Allah's Messenger (PBUH) was presented with a poisoned (roasted) sheep. Allah's Apostle said, "Collect for me all the Jews present in this area." (When they were gathered) Allah's Apostle said to them, "I am going to ask you about something; will you tell me the truth?" They replied, "Yes, O Abal-Qasim!" Allah's Messenger (PBUH) said to them, "Who is your father?" They said, "Our father is so-and-so." Allah's Messenger (PBUH) said, "You have told a lie. for your father is so-and-so," They said, "No doubt, you have said the truth and done the correct thing." He again said to them, "If I ask you about something; will you tell me the truth?" They replied, "Yes, O Abal-Qasim! And if we should tell a lie you will know it as you have known it regarding our father," Allah's Messenger (PBUH) then asked, "Who are the people of the (Hell) Fire?" They replied, "We will remain in the (Hell) Fire for a while and then you (Muslims) will replace us in it" Allah's Messenger (PBUH) said to them. ''You will abide in it with ignominy. By Allah, we shall never replace you in it at all." Then he asked them again, "If I ask you something, will you tell me the truth?" They replied, "Yes." He asked. "Have you put the poison in this roasted sheep?" They replied, "Yes," He asked, "What made you do that?" They replied, "We intended to learn if you were a liar in which case we would be relieved from you, and if you were a prophet then it would not harm you." ھم سے قتیبھ بن سعید نے بیان کیا ، کھا ھم سے لیث بن سعد نے ، ان سے سعید بن ابی سعید نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے ، انھوں نے بیان کیا کھ جب خیبر فتح ھوا تو رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کو ایک بکری ھدیھ میں پیش کی گئی ( ایک یھودی عورت زینب بنت حرث نے پیش کی تھی ) جس میں زھر بھرا ھوا تھا ، اس پر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ یھاں پر جتنے یھودی ھیں انھیں میرے پاس جمع کرو ۔ چنانچھ سب آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس جمع کئے گئے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ میں تم سے ایک بات پوچھو ں گا کیا تم مجھے صحیح صحیح بات بتا دو گے ؟ انھوں نے کھا کھ ھاں اے ابوالقاسم ! پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تمھارا پردادا کون ھے ؟ انھوں نے کھا کھ فلاں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ تم جھوٹ کھتے ھو تمھارا پردادا تو فلاں ھے ۔ اس پر وھ بولے کھ آپ نے سچ فرمایا درست فرمایا پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کیا اگر میں تم سے کوئی بات پوچھوں گا تو تم مجھے سچ سچ بتا دوگے ؟ انھوں نے کھا کھ ھاں اے ابوالقاسم ! اور اگر ھم جھوٹ بولیں بھی تو آپ ھمارا جھوٹ پکڑ لیں گے جیسا کھ ابھی ھمارے پردادا کے متعلق آپ نے ھمارا جھوٹ پکڑ لیا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا دوزخ والے کون لوگ ھیں ؟ انھوں نے کھا کھ کچھ دن کے لیے تو ھم اس میں رھیں گے پھر آپ لوگ ھماری جگھ لے لیں گے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تم اس میں ذلت کے ساتھ پڑے رھو گے ، واللھ ! ھم اس میں تمھاری جگھ کبھی نھیں لیں گے ۔ آپ نے پھر ان سے دریافت فرمایا کیا اگر میں تم سے ایک بات پوچھوں تو تم مجھے اس کے متعلق صحیح صحیح بتا دو گے ؟ انھوں نے کھا کھ ھاں ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے دریافت فرمایا کیا تم نے اس بکری میں زھر ملایا تھا ، انھوں نے کھا کھ ھاں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے دریافت فرمایا کھ تمھیں اس کام پر کس جذبھ نے آمادھ کیا تھا ؟ انھوں نے کھا کھ ھمارا مقصد یھ تھا کھ اگر آپ جھوٹے ھوں گے تو ھمیں آپ سے نجات مل جائے گی اور اگرسچے ھوں گے تو آپ کو نقصان نھیں پھنچا سکے گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5777
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 669


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ الْوَهَّابِ، حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ الْحَارِثِ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ سُلَيْمَانَ، قَالَ سَمِعْتُ ذَكْوَانَ، يُحَدِّثُ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ مَنْ تَرَدَّى مِنْ جَبَلٍ فَقَتَلَ نَفْسَهُ، فَهْوَ فِي نَارِ جَهَنَّمَ، يَتَرَدَّى فِيهِ خَالِدًا مُخَلَّدًا فِيهَا أَبَدًا، وَمَنْ تَحَسَّى سَمًّا فَقَتَلَ نَفْسَهُ، فَسَمُّهُ فِي يَدِهِ، يَتَحَسَّاهُ فِي نَارِ جَهَنَّمَ خَالِدًا مُخَلَّدًا فِيهَا أَبَدًا، وَمَنْ قَتَلَ نَفْسَهُ بِحَدِيدَةٍ، فَحَدِيدَتُهُ فِي يَدِهِ، يَجَأُ بِهَا فِي بَطْنِهِ فِي نَارِ جَهَنَّمَ خَالِدًا مُخَلَّدًا فِيهَا أَبَدًا ‏"‏‏.‏


Chapter: The taking of poison and treating with it

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "Whoever purposely throws himself from a mountain and kills himself, will be in the (Hell) Fire falling down into it and abiding therein perpetually forever; and whoever drinks poison and kills himself with it, he will be carrying his poison in his hand and drinking it in the (Hell) Fire wherein he will abide eternally forever; and whoever kills himself with an iron weapon, will be carrying that weapon in his hand and stabbing his `Abdomen with it in the (Hell) Fire wherein he will abide eternally forever." ھم سے عبداللھ بن عبدالوھاب نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے خالد بن حارث نے بیان کیا ، ان سے شعبھ نے بیان کیا ، ان سے سلیمان نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ میں نے ذکوان سے سنا ، وھ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے یھ حدیث بیان کرتے تھے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا جس نے پھاڑ سے اپنے آپ کو گرا کر خودکشی کر لی وھ جھنم کی آگ میں ھو گا اور اس میں ھمیشھ پڑا رھے گا اور جس نے زھر پی کر خودکشی کر لی وھ زھر اس کے ساتھ میں ھو گا اور جھنم کی آگ میں وھ اسے اسی طرح ھمیشھ پیتا رھے گا اور جس نے لوھے کے کسی ھتھیار سے خودکشی کر لی تو اس کا ھتھیار اس کے ساتھ میں ھو گا اور جھنم کی آگ میں ھمیشھ کے لیے وھ اسے اپنے پیٹ میں مارتا رھے گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5778
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 670



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.