Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Medicine

كتاب الطب

حَدَّثَنَا عَيَّاشُ بْنُ الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى، حَدَّثَنَا سَعِيدٌ، عَنْ قَتَادَةَ، عَنْ أَبِي الْمُتَوَكِّلِ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ، أَنَّ رَجُلاً، أَتَى النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ أَخِي يَشْتَكِي بَطْنَهُ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ اسْقِهِ عَسَلاً ‏"‏‏.‏ ثُمَّ أَتَى الثَّانِيَةَ فَقَالَ ‏"‏ اسْقِهِ عَسَلاً ‏"‏‏.‏ ثُمَّ أَتَاهُ فَقَالَ فَعَلْتُ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ صَدَقَ اللَّهُ، وَكَذَبَ بَطْنُ أَخِيكَ، اسْقِهِ عَسَلاً ‏"‏‏.‏ فَسَقَاهُ فَبَرَأَ‏.‏

Narrated Abu Sa`id Al-Khudri: A man came to the Prophet (PBUH) and said, "My brother has some Abdominal trouble." The Prophet (PBUH) said to him "Let him drink honey." The man came for the second time and the Prophet (PBUH) said to him, 'Let him drink honey." He came for the third time and the Prophet (PBUH) said, "Let him drink honey." He returned again and said, "I have done that ' The Prophet (PBUH) then said, "Allah has said the truth, but your brother's `Abdomen has told a lie. Let him drink honey." So he made him drink honey and he was cured. ھم سے عیاش بن الولید نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالاعلیٰ نے ، کھا ھم سے سعید نے ، ان سے قتادھ نے ، ان سے ابو المتوکل نے اور ان سے ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ نے کھ ایک صاحب نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں حاضر ھوئے اور عرض کیا کھ میرا بھائی پیٹ کی تکلیف میں مبتلا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ انھیں شھد پلا پھر دوسری مرتبھ وھی صحابی حاضر ھوئے ۔ آپ نے اسے اس مرتبھ بھی شھد پلانے کے لیے کھا وھ پھر تیسری مرتبھ آیا اور عرض کیا کھ ( حکم کے مطابق ) میں نے عمل کیا ( لیکن شفاء نھیں ھوئی ) آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اللھ تعالیٰ سچا ھے اور تمھارے بھائی کا پیٹ جھوٹا ھے ، انھیں پھر شھد پلا ۔ چنانچھ انھوں نے شھد پھر پلایا اور اسی سے وھ تندرست ھو گیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5684
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 588


حَدَّثَنَا مُسْلِمُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، حَدَّثَنَا سَلاَّمُ بْنُ مِسْكِينٍ، حَدَّثَنَا ثَابِتٌ، عَنْ أَنَسٍ، أَنَّ نَاسًا، كَانَ بِهِمْ سَقَمٌ قَالُوا يَا رَسُولَ اللَّهِ آوِنَا وَأَطْعِمْنَا فَلَمَّا صَحُّوا قَالُوا إِنَّ الْمَدِينَةَ وَخِمَةٌ‏.‏ فَأَنْزَلَهُمُ الْحَرَّةَ فِي ذَوْدٍ لَهُ فَقَالَ ‏"‏ اشْرَبُوا أَلْبَانَهَا ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا صَحُّوا قَتَلُوا رَاعِيَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم وَاسْتَاقُوا ذَوْدَهُ، فَبَعَثَ فِي آثَارِهِمْ، فَقَطَعَ أَيْدِيَهُمْ وَأَرْجُلَهُمْ، وَسَمَرَ أَعْيُنَهُمْ، فَرَأَيْتُ الرَّجُلَ مِنْهُمْ يَكْدُمُ الأَرْضَ بِلِسَانِهِ حَتَّى يَمُوتَ‏.‏ قَالَ سَلاَّمٌ فَبَلَغَنِي أَنَّ الْحَجَّاجَ قَالَ لأَنَسٍ حَدِّثْنِي بِأَشَدِّ عُقُوبَةٍ عَاقَبَهُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فَحَدَّثَهُ بِهَذَا‏.‏ فَبَلَغَ الْحَسَنَ فَقَالَ وَدِدْتُ أَنَّهُ لَمْ يُحَدِّثْهُ‏ بِهَذَا


Chapter: To treat with the milk of camels

Narrated Anas: Some people were sick and they said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Give us shelter and food. So when they became healthy they said, "The weather of Medina is not suitable for us." So he sent them to Al-Harra with some she-camels of his and said, "Drink of their milk." But when they became healthy, they killed the shepherd of the Prophet (PBUH) and drove away his camels. The Prophet (PBUH) sent some people in their pursuit. Then he got their hands and feet cut and their eyes were branded with heated pieces of iron. I saw one of them licking the earth with his tongue till he died. ھم سے مسلم بن ابراھیم نے بیان کیا ، کھا ھم سے سلام بن مسکین ابو الروح بصریٰ نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے ثابت نے بیان کیا ان سے حضرت انس رضی اللھ عنھ نے کھ کچھ لوگوں کو بیماری تھی ، انھوں نے کھا یا رسول اللھ ! ھمیں قیام کی جگھ عنایت فرما دیں اور ھمارے کھانے کا انتظام کر دیں پھر جب وھ لوگ تندرست ھو گئے تو انھوں نے کھا کھ مدینھ کی آب و ھوا خراب ھے چنانچھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے مقام حرھ میں اونٹوں کے ساتھ ان کے قیام کا انتظام کر دیا اور فرمایا کھ ان کا دودھ پیو جب وھ تندرست ھو گئے تو انھوں نے آپ کے چرواھے کو قتل کر دیا اور اونٹوں کوھانک کر لے گئے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کے پیچھے آدمی دوڑائے اور وھ پکڑ ے گئے ( جیسا کھ انھوں نے چرواھے کے ساتھ کیا تھا ) آپ نے بھی ویسا ھی کیا ان کے ھاتھ پاؤں کٹوادیئے اور ان کی آنکھوں میں سلائی پھر وادی ۔ میں نے ان میں سے ایک شخص کو دیکھا کھ زبان سے زمین چاٹتا تھا اور اسی حالت میں وھ مر گیا ۔ سلام نے بیان کیا کھ مجھے معلوم ھو اکھ حجاج نے حضرت انس رضی اللھ عنھ سے کھا تم مجھ سے وھ سب سے سخت سزا بیان کرو جو رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے کسی کو دی ھو تو انھوں نے یھی واقعھ بیان کیا جب حضرت امام حسن بصری تک یھ بات پھنچی توانھون نے کھا کاش وھ یھ حدیث حجاج سے نھ بیان کرتے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5685
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 589


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا هَمَّامٌ، عَنْ قَتَادَةَ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ نَاسًا، اجْتَوَوْا فِي الْمَدِينَةِ فَأَمَرَهُمُ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم أَنْ يَلْحَقُوا بِرَاعِيهِ ـ يَعْنِي الإِبِلَ ـ فَيَشْرَبُوا مِنْ أَلْبَانِهَا وَأَبْوَالِهَا، فَلَحِقُوا بِرَاعِيهِ فَشَرِبُوا مِنْ أَلْبَانِهَا وَأَبْوَالِهَا، حَتَّى صَلَحَتْ أَبْدَانُهُمْ فَقَتَلُوا الرَّاعِيَ وَسَاقُوا الإِبِلَ، فَبَلَغَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فَبَعَثَ فِي طَلَبِهِمْ، فَجِيءَ بِهِمْ فَقَطَعَ أَيْدِيَهُمْ وَأَرْجُلَهُمْ، وَسَمَرَ أَعْيُنَهُمْ‏.‏ قَالَ قَتَادَةُ فَحَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ سِيرِينَ أَنَّ ذَلِكَ كَانَ قَبْلَ أَنْ تَنْزِلَ الْحُدُودُ‏.‏


Chapter: To treat with the urine of camels

Narrated Anas: The climate of Medina did not suit some people, so the Prophet (PBUH) ordered them to follow his shepherd, i.e. his camels, and drink their milk and urine (as a medicine). So they followed the shepherd that is the camels and drank their milk and urine till their bodies became healthy. Then they killed the shepherd and drove away the camels. When the news reached the Prophet (PBUH) he sent some people in their pursuit. When they were brought, he cut their hands and feet and their eyes were branded with heated pieces of iron. ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا ھم سے ھمام نے بیان کیا ، ان سے قتادھ نے اور ان سے حضرت انس رضی اللھ عنھ نے کھ ( عرینھ کے ) کچھ لوگوں کو مدینھ منورھ کی آب و ھوا موافق نھیں آئی تھی تو نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کھ وھ آپ کے چرواھے کے یھاں چلے جائیں یعنی اونٹوں میں اور ان کا دودھ اورپیشاب پئیں ۔ چنانچھ وھ لوگ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے چرواھے کے پاس چلے گئے اور اونٹوں کا دودھ اور پیشاب پیا جب وھ تندرست ھو گئے تو انھوں نے چرواھے کو قتل کر دیا اور اونٹوں کوھانک کر لے گئے ۔ آپ کو جب اس کا علم ھوا تو آپ نے انھیں تلاش کرنے کے لیے لوگوں کو بھیجا جب انھیں لایا گیا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے حکم سے ان کے بھی ھاتھ اورپاؤں کاٹ دیئے گئے اور ان کی آنکھوں میں سلائی پھیر دی گئی ( جیسا کھ انھوں نے چرواھے کے ساتھ کیا تھا ) قتادھ نے بیان کیا کھ مجھ سے محمد بن سیرین نے بیان کیا کھ یھ حدود کے نازل ھونے سے پھلے کا واقعھ ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5686
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 590


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ، حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ، حَدَّثَنَا إِسْرَائِيلُ، عَنْ مَنْصُورٍ، عَنْ خَالِدِ بْنِ سَعْدٍ، قَالَ خَرَجْنَا وَمَعَنَا غَالِبُ بْنُ أَبْجَرَ فَمَرِضَ فِي الطَّرِيقِ، فَقَدِمْنَا الْمَدِينَةَ وَهْوَ مَرِيضٌ، فَعَادَهُ ابْنُ أَبِي عَتِيقٍ فَقَالَ لَنَا عَلَيْكُمْ بِهَذِهِ الْحُبَيْبَةِ السَّوْدَاءِ، فَخُذُوا مِنْهَا خَمْسًا أَوْ سَبْعًا فَاسْحَقُوهَا، ثُمَّ اقْطُرُوهَا فِي أَنْفِهِ بِقَطَرَاتِ زَيْتٍ فِي هَذَا الْجَانِبِ وَفِي هَذَا الْجَانِبِ، فَإِنَّ عَائِشَةَ حَدَّثَتْنِي أَنَّهَا سَمِعَتِ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ هَذِهِ الْحَبَّةَ السَّوْدَاءَ شِفَاءٌ مِنْ كُلِّ دَاءٍ إِلاَّ مِنَ السَّامِ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ وَمَا السَّامُ قَالَ الْمَوْتُ‏.‏


Chapter: (To treat with) black cumin (Nigella seeds)

Narrated Khalid bin Sa`d: We went out and Ghalib bin Abjar was accompanying us. He fell ill on the way and when we arrived at Medina he was still sick. Ibn Abi 'Atiq came to visit him and said to us, "Treat him with black cumin. Take five or seven seeds and crush them (mix the powder with oil) and drop the resulting mixture into both nostrils, for `Aisha has narrated to me that she heard the Prophet (PBUH) saying, 'This black cumin is healing for all diseases except As-Sam.' Aisha said, 'What is As-Sam?' He said, 'Death." ھم سے عبداللھ بن ابی شیبھ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے عبیداللھ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے اسرائیل نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ان سے منصور نے بیان کیا ، ان سے خالد بن سعد نے بیان کیا کھ ھم باھر گئے ھوئے تھے اورھمارے ساتھ حضرت غالب بن ابجر رضی اللھ عنھ بھی تھے ۔ وھ راستھ میں بیمار پڑ گئے پھر جب ھم مدینھ واپس آئے اسوقت بھی وھ بیمار ھی تھے ۔ حضرت ابن ابی عتیق ان کی عیادت کے لیے تشریف لائے اور ھم سے کھا کھ انھیں یھ کالے دانے ( کلونجی ) استعمال کراؤ ، اس کے پانچ یا سات دانے لے کرپیس لو اور پھر زیتون کے تیل میں ملا کر ( ناک کے ) اس طرف اور اس طرف اسے قطرھ قطرھ کر کے ٹپکاؤ کیونکھ حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے مجھ سے بیان کیا کھ انھوں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ یھ کلونجی ھر بیماری کی دواھے سوا سام کے ۔ میں نے عرض کیا سام کیا ھے ؟ فرمایا کھ موت ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5687
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 591


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ عُقَيْلٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي أَبُو سَلَمَةَ، وَسَعِيدُ بْنُ الْمُسَيَّبِ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ، أَخْبَرَهُمَا أَنَّهُ، سَمِعَ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ فِي الْحَبَّةِ السَّوْدَاءِ شِفَاءٌ مِنْ كُلِّ دَاءٍ إِلاَّ السَّامَ ‏"‏‏.‏ قَالَ ابْنُ شِهَابٍ وَالسَّامُ الْمَوْتُ، وَالْحَبَّةُ السَّوْدَاءُ الشُّونِيزُ‏.‏

Narrated Abu Huraira: I heard Allah's Messenger (PBUH) saying, "There is healing in black cumin for all diseases except death." ھم سے یحییٰ بن بکیر نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے لیث نے بیان کیا ، ان سے عقیل نے بیان کیا ، ان سے ابن شھاب نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ مجھے ابوسلمھ اور سعید بن مسیب نے خبر دی اور انھیں حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے خبر دی ، انھوں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ، آپ نے فرمایا کھ سیاھ دانوں میں ھر بیماری سے شفاء ھے سوا سام کے ۔ ابن شھاب نے کھا کھ سام موت ھے اور ” سیاھ دانھ “ کلونجی کو کھتے ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5688
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 592


حَدَّثَنَا حِبَّانُ بْنُ مُوسَى، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا يُونُسُ بْنُ يَزِيدَ، عَنْ عُقَيْلٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عُرْوَةَ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ أَنَّهَا كَانَتْ تَأْمُرُ بِالتَّلْبِينِ لِلْمَرِيضِ وَلِلْمَحْزُونِ عَلَى الْهَالِكِ، وَكَانَتْ تَقُولُ إِنِّي سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ التَّلْبِينَةَ تُجِمُّ فُؤَادَ الْمَرِيضِ، وَتَذْهَبُ بِبَعْضِ الْحُزْنِ ‏"‏‏.‏


Chapter: At-Talbina prepared for the patient

Narrated 'Urwa: Aisha used to recommend at-Talbina for the sick and for such a person as grieved over a dead person. She used to say, "I heard Allah's Messenger (PBUH) saying, 'at-Talbina gives rest to the heart of the patient and makes it active and relieves some of his sorrow and grief.'" ھم سے حبان بن موسیٰ نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ نے خبر دی ، انھیں یونس بن یزید نے خبر دی ، انھیں عقیل نے ، انھیں ابن شھاب نے ، انھیں عروھ نے کھ حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا بیمار کے لیے اور میت کے سوگوار وں کے لیے تلبینھ ( روا ، دودھ اور شھد ملا کر دلیھ ) پکانے کا حکم دیتی تھیں اور فرماتی تھیں کھ میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا آپ نے فرمایا کھ تلبینھ مریض کے دل کو سکون پھنچاتا ھے اور غم کو دور کرتا ھے ( کیونکھ اسے پینے کے بعد عموماً نیند آجاتی ھے یھ زود ھضم بھی ھے ۔ )

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 76 Hadith no 5689
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 71 Hadith no 593



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.