Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Oaths and Vows

كتاب الأيمان والنذور

حَدَّثَنَا أَبُو عَاصِمٍ، عَنِ ابْنِ جُرَيْجٍ، عَنْ سُلَيْمَانَ الأَحْوَلِ، عَنْ طَاوُسٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم رَأَى رَجُلاً يَطُوفُ بِالْكَعْبَةِ بِزِمَامٍ أَوْ غَيْرِهِ، فَقَطَعَهُ‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: The Prophet (PBUH) saw a man performing Tawaf around the Ka`ba, tied with a rope or something else (while another person was holding him). The Prophet (PBUH) cut that rope off. ھم سے ابوعاصم نے بیان کیا ، ان سے ابن جریج نے ، ان سے سلیمان احول نے ، ان سے طاؤس نے ، ان سے حضرت ابن عباس رضی اللھ عنھما نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ایک شخص کو دیکھا کھ وھ کعبھ کا طواف لگام یا اس کے سوا کسی اور چیز کے ذریعھ کر رھا تھا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اسے کاٹ دیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6702
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 693


حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ مُوسَى، أَخْبَرَنَا هِشَامٌ، أَنَّ ابْنَ جُرَيْجٍ، أَخْبَرَهُمْ قَالَ أَخْبَرَنِي سُلَيْمَانُ الأَحْوَلُ، أَنَّ طَاوُسًا، أَخْبَرَهُ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم مَرَّ وَهْوَ يَطُوفُ بِالْكَعْبَةِ بِإِنْسَانٍ يَقُودُ إِنْسَانًا بِخِزَامَةٍ فِي أَنْفِهِ، فَقَطَعَهَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم بِيَدِهِ، ثُمَّ أَمَرَهُ أَنْ يَقُودَهُ بِيَدِهِ

Narrated Ibn `Abbas: While performing the Tawaf around the Ka`ba, the Prophet (PBUH) passed by a person leading another person by a hair-rope nose-ring in his nose. The Prophet (PBUH) cut the hair-rope nose-ring off with his hand and ordered the man to lead him by the hand. ھم سے ابراھیم بن موسیٰ نے بیان کیا ، کھا ھم کو ھشام نے خبر دی ، انھیں ابن جریج نے خبر دی ، کھا کھ مجھے سلیمان احول نے خبر دی ، انھیں طاؤس نے خبر دی اور انھیں حضرت ابن عباس رضی اللھ عنھما نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم گزرے تو کعبھ کا ایک شخص اس طرح طواف کر رھا تھا کھ دوسرا شخص اس کی ناک میں رسی باندھ کر اس کے آگے سے اس کی رھنمائی کر رھا تھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے وھ رسی اپنے ھاتھ سے کاٹ دی ، پھر حکم دیا کھ ھاتھ سے اس کی رھنمائی کرے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6703
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 694


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ، حَدَّثَنَا أَيُّوبُ، عَنْ عِكْرِمَةَ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، قَالَ بَيْنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَخْطُبُ إِذَا هُوَ بِرَجُلٍ قَائِمٍ فَسَأَلَ عَنْهُ فَقَالُوا أَبُو إِسْرَائِيلَ نَذَرَ أَنْ يَقُومَ وَلاَ يَقْعُدَ وَلاَ يَسْتَظِلَّ وَلاَ يَتَكَلَّمَ وَيَصُومَ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مُرْهُ فَلْيَتَكَلَّمْ وَلْيَسْتَظِلَّ وَلْيَقْعُدْ وَلْيُتِمَّ صَوْمَهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ عَبْدُ الْوَهَّابِ حَدَّثَنَا أَيُّوبُ، عَنْ عِكْرِمَةَ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: While the Prophet (PBUH) was delivering a sermon, he saw a man standing, so he asked about that man. They (the people) said, "It is Abu Israil who has vowed that he will stand and never sit down, and he will never come in the shade, nor speak to anybody, and will fast.'' The Prophet (PBUH) said, "Order him to speak and let him come in the shade, and make him sit down, but let him complete his fast." ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، کھا ھم سے وھیب نے ، کھا ھم سے ایوب نے ، ان سے عکرمھ نے اور ان سے ابن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم خطبھ دے رھے تھے کھ ایک شخص کو کھڑے دیکھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اس کے متعلق پوچھا تو لوگوں نے بتایا کھ یھ ابواسرائیل نامی ھیں ۔ انھوں نے نذر مانی ھے کھ کھڑے ھی رھیں گے ، بیٹھیں گے نھیں ، نھ کسی چیز کے سایھ میں بیٹھیں گے اور نھ کسی سے بات کریں گے اور روزھ رکھیں گے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ان سے کھو کھ بات کریں ، سایھ کے نیچے بیٹھیں اٹھیں اور اپنا روزھ پورا کر لیں ۔ عبدالوھاب نے بیان کیا کھ ھم سے ایوب نے بیان کیا ، ان سے عکرمھ نے اور ان سے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6704
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 695


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ أَبِي بَكْرٍ الْمُقَدَّمِيُّ، حَدَّثَنَا فُضَيْلُ بْنُ سُلَيْمَانَ، حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ عُقْبَةَ، حَدَّثَنَا حَكِيمُ بْنُ أَبِي حُرَّةَ الأَسْلَمِيُّ، أَنَّهُ سَمِعَ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ سُئِلَ عَنْ رَجُلٍ، نَذَرَ أَنْ لاَ، يَأْتِيَ عَلَيْهِ يَوْمٌ إِلاَّ صَامَ، فَوَافَقَ يَوْمَ أَضْحًى أَوْ فِطْرٍ‏.‏ فَقَالَ لَقَدْ كَانَ لَكُمْ فِي رَسُولِ اللَّهِ أُسْوَةٌ حَسَنَةٌ، لَمْ يَكُنْ يَصُومُ يَوْمَ الأَضْحَى وَالْفِطْرِ، وَلاَ يَرَى صِيَامَهُمَا‏.‏


Chapter: If somebody has vowed that he will observe Saum

Narrated `Abdullah bin `Umar: that he was asked about a man who had vowed that he would fast all the days of his life then the day of `Id al Adha or `Id-al-Fitr came. `Abdullah bin `Umar said: You have indeed a good example in Allah's Messenger (PBUH). He did not fast on the day of `Id al Adha or the day of `Id-al-Fitr, and we do not intend fasting on these two days. ھم سے محمد بن ابوبکر مقدمی نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے فضیل بن سلیمان نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے موسیٰ بن عقبھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے حکیم بن ابی حرھ اسلمی نے بیان کیا ، انھوں نے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما سے سنا ، ان سے ایسے شحص کے متعلق پوچھا گیا جس نے نذر مانی ھو کھ کچھ مخصوص دنوں میں روزے رکھے گا ۔ پھر اتفاق سے انھیں دنوںمیں بقرعید یا عید کے دن پڑ گئے ھوں ؟ حضرت عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے کھا کھ تمارے لیے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کی زندگی بھترین نمونھ ھے ۔ آنحضرت بقرعید اور عید کے دن روزے نھیں رکھتے تھے اور نھ ان دنوں میں روزے کو جائز سمجھتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6705
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 696


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ، حَدَّثَنَا يَزِيدُ بْنُ زُرَيْعٍ، عَنْ يُونُسَ، عَنْ زِيَادِ بْنِ جُبَيْرٍ، قَالَ كُنْتُ مَعَ ابْنِ عُمَرَ فَسَأَلَهُ رَجُلٌ فَقَالَ نَذَرْتُ أَنْ أَصُومَ كُلَّ يَوْمِ ثَلاَثَاءَ أَوْ أَرْبِعَاءَ مَا عِشْتُ، فَوَافَقْتُ هَذَا الْيَوْمَ يَوْمَ النَّحْرِ‏.‏ فَقَالَ أَمَرَ اللَّهُ بِوَفَاءِ النَّذْرِ، وَنُهِينَا أَنْ نَصُومَ يَوْمَ النَّحْرِ‏.‏ فَأَعَادَ عَلَيْهِ فَقَالَ مِثْلَهُ، لاَ يَزِيدُ عَلَيْهِ‏.‏

Narrated Ziyad bin Jubair: I was with Ibn `Umar when a man asked him, "I have vowed to fast every Tuesday or Wednesday throughout my life and if the day of my fasting coincided with the day of Nahr (the first day of `Id-al- Adha), (What shall I do?)" Ibn `Umar said, "Allah has ordered the vows to be fulfilled, and we are forbidden to fast on the day of Nahr." The man repeated his question and Ibn `Umar repeated his former answer, adding nothing more. ھم سے عبداللھ بن مسلمھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے یزید بن ذریع نے بیان کیا ، ان سے یونس نے ، ان سے زیادھ بن جبیر نے بیان کیا کھ میں حضرت ابن عمر رضی اللھ عنھما کے ساتھ تھا ایک شخص نے ان سے پوچھا کھ میں نے نذر مانی ھے کھ ھر منگل یا بدھ کے دن روزھ رکھوں گا ۔ اتفاق سے اسی دن کی بقرعید پڑگئی ھے ؟ حضرت ابن عمر رضی اللھ عنھما نے کھا کھ اللھ تعالیٰ نذر پوری کرنے کا حکم دیا ھے اور ھمیں بقرعید کے دن روزھ رکھنے کی ممانعت کی گئی ھے ۔ اس شخص نے دوبارھ اپنا سوال دھرایا تو آپ نے پھر اس سے صرف اتنی ھی بات کھی اس پر کوئی زیادتی نھیں کی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6706
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 697


حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ، قَالَ حَدَّثَنِي مَالِكٌ، عَنْ ثَوْرِ بْنِ زَيْدٍ الدِّيلِيِّ، عَنْ أَبِي الْغَيْثِ، مَوْلَى ابْنِ مُطِيعٍ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ خَرَجْنَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَوْمَ خَيْبَرَ فَلَمْ نَغْنَمْ ذَهَبًا وَلاَ فِضَّةً إِلاَّ الأَمْوَالَ وَالثِّيَابَ وَالْمَتَاعَ، فَأَهْدَى رَجُلٌ مِنْ بَنِي الضُّبَيْبِ يُقَالُ لَهُ رِفَاعَةُ بْنُ زَيْدٍ لِرَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم غُلاَمًا يُقَالُ لَهُ مِدْعَمٌ، فَوَجَّهَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم إِلَى وَادِي الْقُرَى حَتَّى إِذَا كَانَ بِوَادِي الْقُرَى بَيْنَمَا مِدْعَمٌ يَحُطُّ رَحْلاً لِرَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم إِذَا سَهْمٌ عَائِرٌ فَقَتَلَهُ، فَقَالَ النَّاسُ هَنِيئًا لَهُ الْجَنَّةُ‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ كَلاَّ وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ إِنَّ الشَّمْلَةَ الَّتِي أَخَذَهَا يَوْمَ خَيْبَرَ مِنَ الْمَغَانِمِ، لَمْ تُصِبْهَا الْمَقَاسِمُ، لَتَشْتَعِلُ عَلَيْهِ نَارًا ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا سَمِعَ ذَلِكَ النَّاسُ جَاءَ رَجُلٌ بِشِرَاكٍ أَوْ شِرَاكَيْنِ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ ‏"‏ شِرَاكٌ مِنْ نَارٍ ـ أَوْ ـ شِرَاكَانِ مِنْ نَارٍ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: We went out in the company of Allah's Messenger (PBUH) on the day of (the battle of) Khaibar, and we did not get any gold or silver as war booty, but we got property in the form of things and clothes. Then a man called Rifa`a bin Zaid, from the tribe of Bani Ad-Dubaib, presented a slave named Mid`am to Allah's Apostle. Allah's Messenger (PBUH) headed towards the valley of Al-Qura, and when he was in the valley of Al- Qura an arrow was thrown by an unidentified person, struck and killed Mid`am who was making a she-camel of Allah's Messenger (PBUH) kneel down. The people said, "Congratulations to him (the slave) for gaining Paradise." Allah's Messenger (PBUH) said, "No! By Him in Whose Hand my soul is, for the sheet which he stole from the war booty before its distribution on the day of Khaibar, is now burning over him." When the people heard that, a man brought one or two Shiraks (leather straps of shoes) to the Prophet. The Prophet (PBUH) said, "A Shirak of fire, or two Shiraks of fire." ھم سے اسماعیل نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ مجھ سے امام مالک نے بیان کیا ، ان سے ثور بن زید دیلی نے بیان کیا ، ان سے ابن مطیع کے غلام ابوالغیث نے بیان کیا ، ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ ھم نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ خیبر کی لڑائی کے لیے نکلے ۔ اس لڑائی میں ھمیں سونا ، چاندی غنیمت میں نھیں ملا تھا بلکھ دوسرے اموال ، کپڑے اور سامان ملا تھا ۔ پھر بنی خبیب کے ایک شخص رفاعھ بن زید نامی نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو ایک غلام ھدیھ میں دیا غلام کا نام مدعم تھا ۔ پھر آنحضرت وادی قریٰ کی طرف متوجھ ھوئے اور جب آپ وادی القریٰ میں پھنچ گئے تو مدعم کو جب کھ وھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کا کجاھ درست کر رھا تھا ۔ ایک انجان تیر آ کر لگا اور اس کی موت ھو گئی ۔ لوگوں نے کھا کھ جنت اسے مبارک ھو ، لیکن آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ھرگز نھیں ، اس ذات کی قسم جس کے ھاتھ میں میری جان ھے وھ کمبل جو اس نے تقسیم سے پھلے خیبر کے مال غنیمت میں سے چرالیا تھا ، وھ اس پر آگ کا انگارھ بن کر بھڑ رھا ھے ۔ جب لوگوں نے یھ بات سنی تو ایک شخص چپل کا تسمھ یا دو تسمے لے کر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں حاضر ھوا ، آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ یھ آگ کا تسمھ ھے یا دو تسمے آگ کے ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6707
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 698



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.