Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Oaths and Vows

كتاب الأيمان والنذور

حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ، قَالَ حَدَّثَنِي مَالِكٌ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ بْنِ مَسْعُودٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، وَزَيْدِ بْنِ خَالِدٍ، أَنَّهُمَا أَخْبَرَاهُ أَنَّ رَجُلَيْنِ اخْتَصَمَا إِلَى رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ أَحَدُهُمَا اقْضِ بَيْنَنَا بِكِتَابِ اللَّهِ‏.‏ وَقَالَ الآخَرُ وَهْوَ أَفْقَهُهُمَا أَجَلْ يَا رَسُولَ اللَّهِ فَاقْضِ بَيْنَنَا بِكِتَابِ اللَّهِ، وَائْذَنْ لِي أَنْ أَتَكَلَّمَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ تَكَلَّمْ ‏"‏‏.‏ قَالَ إِنَّ ابْنِي كَانَ عَسِيفًا عَلَى هَذَا ـ قَالَ مَالِكٌ وَالْعَسِيفُ الأَجِيرُ ـ زَنَى بِامْرَأَتِهِ، فَأَخْبَرُونِي أَنَّ عَلَى ابْنِي الرَّجْمَ، فَافْتَدَيْتُ مِنْهُ بِمِائَةِ شَاةٍ وَجَارِيَةٍ لِي، ثُمَّ إِنِّي سَأَلْتُ أَهْلَ الْعِلْمِ فَأَخْبَرُونِي أَنَّ مَا عَلَى ابْنِي جَلْدُ مِائَةٍ وَتَغْرِيبُ عَامٍ، وَإِنَّمَا الرَّجْمُ عَلَى امْرَأَتِهِ‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ أَمَا وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لأَقْضِيَنَّ بَيْنَكُمَا بِكِتَابِ اللَّهِ، أَمَّا غَنَمُكَ وَجَارِيَتُكَ فَرَدٌّ عَلَيْكَ ‏"‏‏.‏ وَجَلَدَ ابْنَهُ مِائَةً وَغَرَّبَهُ عَامًا، وَأُمِرَ أُنَيْسٌ الأَسْلَمِيُّ أَنْ يَأْتِيَ امْرَأَةَ الآخَرِ، فَإِنِ اعْتَرَفَتْ رَجَمَهَا، فَاعْتَرَفَتْ فَرَجَمَهَا‏.‏

Narrated Abu Huraira and Zaid bin Khalid: Two men had a dispute in the presence of Allah's Messenger (PBUH). One of them said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Judge between us according to Allah's Laws." The other who was wiser, said, "Yes, O Allah's Apostle! Judge between us according to Allah's Laws and allow me to speak. The Prophet (PBUH) said, "Speak." He said, "My son was a laborer serving this (person) and he committed illegal sexual intercourse with his wife, The people said that my son is to be stoned to death, but I ransomed him with one-hundred sheep and a slave girl. Then I asked the learned people, who informed me that my son should receive one hundred lashes and will be exiled for one year, and stoning will be the lot for the man's wife." Allah's Messenger (PBUH) said, "Indeed, by Him in Whose Hand my soul is, I will judge between you according to Allah's Laws: As for your sheep and slave girl, they are to be returned to you." Then he scourged his son one hundred lashes and exiled him for one year. Then Unais Al- Aslami was ordered to go to the wife of the second man, and if she confessed (the crime), then stone her to death. She did confess, so he stoned her to death. ھم سے اسماعیل بن ابی اویس نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے امام مالک نے بیان کیا ، ان سے ابن شھاب نے ، ان سے عبیداللھ بن عتبھ بن مسعود رضی اللھ عنھ نے ، انھیں ابوھریرھ رضی اللھ عنھ اور زید بن خالد رضی اللھ عنھ نے خبر دی کھ دو آدمیوں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کی مجلس میں اپنا جھگڑا پیش کیا ۔ ان میں سے ایک نے کھا کھ ھمارے درمیان آپ کتاب اللھ کے مطابق فیصلھ کر دیں ۔ دوسرے نے ، جو زیادھ سمجھ دار تھا کھا کھ ٹھیک ھے ، یا رسول اللھ ! ھمارے درمیان کتاب اللھ کے مطابق فیصلھ کر دیجئیے اور مجھے اجازت دیجئیے کھ اس معاملھ میں کچھ عرض کروں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ کھو ۔ ان صاحب نے کھا کھ میرا لڑکا اس شخص کے یھاں ” عسیف “ تھا ۔ عسیف اجیر کو کھتے ھیں ۔ ( اجیر کے معنی مزدور کے ھیں ) اور اس نے اس کی بیوی سے زنا کر لیا ۔ انھوں نے مجھ سے کھا کھ اب میرے لڑکے کو سنگسار کیا جائے گا ۔ اس لئے ( اس سے نجات دلانے کے لئے ) میں نے سو بکریوں اور ایک لونڈی کا انھیں فدیھ دے دیا پھر میں نے دوسرے علم والوں سے اس مسئلھ کو پوچھا تو انھوں نے بتایا کھ میرے لڑکے کی سزا یھ ھے کھ اسے سو کوڑے لگائے جائیں اور ایک سال کے لئے شھر بدر کر دیا جائے ، سنگساری کی سزا صرف اس عورت کو ھو گی ۔ اس پر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اس ذات کی قسم جس کے ھاتھ میں میری جان ھے میں تمھارا فیصلھ کتاب اللھ کے مطابق کروں گا ۔ تمھاری بکریاں اور تمھاری لونڈی تمھیں واپس ھو گی اور پھر آپ نے اس کے لڑکے کو سو کوڑے لگوائے اور ایک سال کے لئے جلاوطن کر دیا ۔ پھر آپ نے انیس اسلمی سے فرمایا کھ مدعی کی بیوی کو لائے اور اگر وھ زنا کا اقرار کرے تو اسے سنگسار کر دے ۔ اس عورت نے زنا کا اقرار کر لیا اور سنگسار کر دی گئی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6633, 6634
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 629


حَدَّثَنِي عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدٍ، حَدَّثَنَا وَهْبٌ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ أَبِي يَعْقُوبَ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ أَبِي بَكْرَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ أَرَأَيْتُمْ إِنْ كَانَ أَسْلَمُ وَغِفَارُ وَمُزَيْنَةُ وَجُهَيْنَةُ خَيْرًا مِنْ تَمِيمٍ وَعَامِرِ بْنِ صَعْصَعَةَ وَغَطَفَانَ وَأَسَدٍ، خَابُوا وَخَسِرُوا ‏"‏‏.‏ قَالُوا نَعَمْ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ إِنَّهُمْ خَيْرٌ مِنْهُمْ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Bakra: The Prophet (PBUH) said, "Do you think if the tribes of Aslam, Ghifar, Muzaina and Juhaina are better than the tribes of Tamim, 'Amir bin Sa'sa'a, Ghatfan and Asad, they (the second group) are despairing and losing?" They (the Prophet's companions) said, "Yes, (they are)." He said, "By Him in Whose Hand my soul is, they (the first group) are better than them (the second group). مجھ سے عبداللھ بن محمد نے بیان کیا ، کھا ھم سے وھب نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ، ان سے محمد بن ابی یعقوب نے ، ان سے عبدالرحمٰن بن ابی بکرھ نے اور ان سے ان کے والد نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا بھلا بتلاؤ اسلم ، غفار ، مزینھ اور جھینھ کے قبائل اگر تمیم ، عامر بن صعصعھ ، غطفان اور اسد والوں سے بھتر ھوں تو یھ تمیم اور عامر اور غطفان اور اسد والے گھاٹے میں پڑے اور نقصان میں رھے یا نھیں ۔ صحابھ نے عرض کیا ، جی ھاں بیشک ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اس پر پھر فرمایا کھ اس ذات کی قسم جس کے ھاتھ میں میری جان ھے ( وھ پھلے جن قبائل کا ذکر ھوا ) ان ( تمیم وغیرھ ) سے بھتر ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6635
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 630


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي عُرْوَةُ، عَنْ أَبِي حُمَيْدٍ السَّاعِدِيِّ، أَنَّهُ أَخْبَرَهُ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم اسْتَعْمَلَ عَامِلاً فَجَاءَهُ الْعَامِلُ حِينَ فَرَغَ مِنْ عَمَلِهِ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ هَذَا لَكُمْ، وَهَذَا أُهْدِيَ لِي‏.‏ فَقَالَ لَهُ ‏"‏ أَفَلاَ قَعَدْتَ فِي بَيْتِ أَبِيكَ وَأُمِّكَ فَنَظَرْتَ أَيُهْدَى لَكَ أَمْ لاَ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ قَامَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم عَشِيَّةً بَعْدَ الصَّلاَةِ فَتَشَهَّدَ وَأَثْنَى عَلَى اللَّهِ بِمَا هُوَ أَهْلُهُ ثُمَّ قَالَ ‏"‏ أَمَّا بَعْدُ، فَمَا بَالُ الْعَامِلِ نَسْتَعْمِلُهُ، فَيَأْتِينَا فَيَقُولُ هَذَا مِنْ عَمَلِكُمْ، وَهَذَا أُهْدِيَ لِي‏.‏ أَفَلاَ قَعَدَ فِي بَيْتِ أَبِيهِ وَأُمِّهِ فَنَظَرَ هَلْ يُهْدَى لَهُ أَمْ لاَ، فَوَالَّذِي نَفْسُ مُحَمَّدٍ بِيَدِهِ لاَ يَغُلُّ أَحَدُكُمْ مِنْهَا شَيْئًا، إِلاَّ جَاءَ بِهِ يَوْمَ الْقِيَامَةِ يَحْمِلُهُ عَلَى عُنُقِهِ، إِنْ كَانَ بَعِيرًا جَاءَ بِهِ لَهُ رُغَاءٌ، وَإِنْ كَانَتْ بَقَرَةً جَاءَ بِهَا لَهَا خُوَارٌ، وَإِنْ كَانَتْ شَاةً جَاءَ بِهَا تَيْعَرُ، فَقَدْ بَلَّغْتُ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ أَبُو حُمَيْدٍ ثُمَّ رَفَعَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم يَدَهُ حَتَّى إِنَّا لَنَنْظُرُ إِلَى عُفْرَةِ إِبْطَيْهِ‏.‏ قَالَ أَبُو حُمَيْدٍ وَقَدْ سَمِعَ ذَلِكَ مَعِي زَيْدُ بْنُ ثَابِتٍ مِنَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَسَلُوهُ‏.‏

Narrated Abu Humaid As-Sa`idi: Allah's Messenger (PBUH) employed an employee (to collect Zakat). The employee returned after completing his job and said, "O Allah's Messenger (PBUH)! This (amount of Zakat) is for you, and this (other amount) was given to me as a present." The Prophet (PBUH) said to him, "Why didn't you stay at your father's or mother's house and see if you would be given presents or not?" Then Allah's Messenger (PBUH) got up in the evening after the prayer, and having testified that none has the right to be worshipped but Allah and praised and glorified Allah as He deserved, he said, "Now then ! What about an employee whom we employ and then he comes and says, 'This amount (of Zakat) is for you, and this (amount) was given to me as a present'? Why didn't he stay at the house of his father and mother to see if he would be given presents or not? By Him in Whose Hand Muhammad's soul is, none of you will steal anything of it (i.e. Zakat) but will bring it by carrying it over his neck on the Day of Resurrection. If it has been a camel, he will bring it (over his neck) while it will be grunting, and if it has been a cow, he will bring it (over his neck), while it will be mooing; and if it has been a sheep, he will bring it (over his neck) while it will be bleeding." The Prophet (PBUH) added, "I have preached you (Allah's Message)." Abu Humaid said, "Then Allah's Messenger (PBUH) raised his hands so high that we saw the whiteness of his armpits." ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، کھا کھ مجھے عروھ ثقفی نے خبر دی ، نھیں ابو حمید ساعدی رضی اللھ عنھ نے خبر دی کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے ایک عامل مقررکیا ۔ عامل اپنے کام پورے کر کے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں حاضر ھوا اور عرض کیا ، یا رسول اللھ ! یھ مال آپ کا ھے اور یھ مال مجھے تحفھ دیا گیا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ پھر تم اپنے ماں باپ کے گھر ھی میں کیوں نھیں بیٹھے رھے اور پھر دیکھتے کھ تمھیں کوئی تحفھ دیتا ھے یا نھیں ۔ اس کے بعد آپ خطبھ کے لئے کھڑے ھوئے ، رات کی نماز کے بعد اور کلمھ شھادت اور اللھ تعالیٰ کی اس کی شان کے مطابق ثنا کے بعد فرمایا امابعد ! ایسے عامل کو کیا ھو گیا ھے کھ ھم اسے عامل بناتے ھیں ۔ ( جزیھ اور دوسرے ٹیکس وصول کرنے کے لئے ) اور وھ پھر ھمارے پاس آ کر کھتا ھے کھ یھ تو آپ کا ٹیکس ھے اور مجھے تحفھ دیا گیا ھے ۔ پھر وھ اپنے ماں باپ کے گھر کیوں نھیں بیٹھا اور دیکھتاکھ اسے تحفھ دیا جاتا ھے یا نھیں ۔ اس ذات کی قسم جس کے ھاتھ میں میری جان ھے ، اگر تم میں سے کوئی بھی اس مال میں سے کچھ بھی خیانت کرے گا تو قیامت کے دن اسے اپنی گردن پر اٹھائے گا ۔ اگر اونٹ کی اس نے خیانت کی ھو گی تو اس حال میں لے کر آئے گا کھ آواز نکل رھی ھو گی ۔ اگر گائے کی خیانت کی ھو گی تو اس حال میں اسے لے کر آئے گا کھ گائے کی آواز آ رھی ھو گی ۔ اگر بکری کی خیانت کی ھو گی تو اس حال میں آئے گا کھ بکری کی آواز آ رھی ھو گی ۔ بس میں نے تم تک پھنچا دیا ۔ حضرت ابوحمید رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اپنا ھاتھ اتنی اوپر اٹھایا کھ ھم آپ کی بغلوں کی سفیدی دیکھنے لگے ۔ ابوحمید رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میرے ساتھ یھ حدیث زید بن ثابت رضی اللھ عنھ نے بھی آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے سنی تھی ، تم لوگ ان سے بھی پوچھ لو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6636
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 631


حَدَّثَنِي إِبْرَاهِيمُ بْنُ مُوسَى، أَخْبَرَنَا هِشَام ٌ ـ هُوَ ابْنُ يُوسُفَ ـ عَنْ مَعْمَرٍ، عَنْ هَمَّامٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ قَالَ أَبُو الْقَاسِمِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ وَالَّذِي نَفْسُ مُحَمَّدٍ بِيَدِهِ لَوْ تَعْلَمُونَ مَا أَعْلَمُ لَبَكَيْتُمْ كَثِيرًا، وَلَضَحِكْتُمْ قَلِيلاً ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Abu-l-Qasim (the Prophet) said, "By Him in Whose Hand Muhammad's soul is, if you know that which I know, you would weep much and laugh little." مجھ سے ابراھیم بن موسیٰ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم کو ھشام بن یوسف نے خبر دی ، انھیں معمر نے ، انھیں ھمام بن منبھ نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اس ذات کی قسم ! جس کے ھاتھ میں میری جان ھے اگر تم بھی آخرت کی وھ مشکلات جانتے جو میں جانتا ھوں تو تم زیادھ روتے اور کم ھنستے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6637
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 632


حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنَا أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، عَنِ الْمَعْرُورِ، عَنْ أَبِي ذَرٍّ، قَالَ انْتَهَيْتُ إِلَيْهِ وَهُوَ يَقُولُ فِي ظِلِّ الْكَعْبَةِ ‏"‏ هُمُ الأَخْسَرُونَ وَرَبِّ الْكَعْبَةِ، هُمُ الأَخْسَرُونَ وَرَبِّ الْكَعْبَةِ ‏"‏ قُلْتُ مَا شَأْنِي أَيُرَى فِيَّ شَىْءٌ مَا شَأْنِي فَجَلَسْتُ إِلَيْهِ وَهْوَ يَقُولُ، فَمَا اسْتَطَعْتُ أَنْ أَسْكُتَ، وَتَغَشَّانِي مَا شَاءَ اللَّهُ، فَقُلْتُ مَنْ هُمْ بِأَبِي أَنْتَ وَأُمِّي يَا رَسُولَ اللَّهِ قَالَ ‏"‏ الأَكْثَرُونَ أَمْوَالاً، إِلاَّ مَنْ قَالَ هَكَذَا وَهَكَذَا وَهَكَذَا ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Dhar: I reached him (the Prophet (PBUH) ) while in the shade of the Ka`ba; he was saying, "They are the losers, by the Lord of the Ka`ba! They are the losers, by the Lord of the Ka`ba!" I said (to myself ), "What is wrong with me? Is anything improper detected in me? What is wrong with me? Then I sat beside him and he kept on saying his statement. I could not remain quiet, and Allah knows in what sorrowful state I was at that time. So I said, ' Who are they (the losers)? Let My father and mother be sacrificed for you, O Allah's Messenger (PBUH)!" He said, "They are the wealthy people, except the one who does like this and like this and like this (i.e., spends of his wealth in Allah's Cause). ھم سے عمر بن حفص نے بیان کیا ، کھا ھم سے ھمارے والد نے ، کھا ھم سے اعمش نے ، ان سے معرور نے ، ان سے ابوذر رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم تک پھنچا تو آپ کعبھ کے سایھ میں بیٹھے ھوئے فرما رھے تھے کعبھ کے رب کی قسم ! وھی سب سے زیادھ خسارے والے ھیں ۔ کعبھ کے رب کی قسم وھی سب سے زیادھ خسارے والے ھیں ۔ میں نے کھا کھ حضور ، میری حالت کیسی ھے ، کیا مجھ میں ( بھی ) کوئی ایسی بات نظر آئی ھے ؟ میری حالت کیسی ھے ؟ پھر میں آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس بیٹھ گیا اور آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم فرماتے جا رھے تھے ، میں آپ کو خاموش نھیں کرا سکتا تھا اور اللھ کی مشیت کے مطابق مجھ پر عجیب بےقراری طاری ھو گئی ۔ میں نے پھر عرض کی ، میرے ماں باپ آپ پر فدا ھوں ، یا رسول اللھ ! وھ کون لوگ ھیں ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ یھ وھ لوگ ھیں جن کے پاس مال زیادھ ھے ۔ لیکن اس سے وھ مستثنیٰ ھیں ۔ جنھوں نے اس میں سے اس اس طرح ( یعنی دائیں اور بائیں بے دریغ مستحقین پر ) راھ خدا میں خرچ کیا ھو گا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6638
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 633


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ قَالَ سُلَيْمَانُ لأَطُوفَنَّ اللَّيْلَةَ عَلَى تِسْعِينَ امْرَأَةً، كُلُّهُنَّ تَأْتِي بِفَارِسٍ يُجَاهِدُ فِي سَبِيلِ اللَّهِ‏.‏ فَقَالَ لَهُ صَاحِبُهُ إِنْ شَاءَ اللَّهُ‏.‏ فَلَمْ يَقُلْ إِنْ شَاءَ اللَّهُ‏.‏ فَطَافَ عَلَيْهِنَّ جَمِيعًا، فَلَمْ تَحْمِلْ مِنْهُنَّ إِلاَّ امْرَأَةٌ وَاحِدَةٌ، جَاءَتْ بِشِقِّ رَجُلٍ، وَايْمُ الَّذِي نَفْسُ مُحَمَّدٍ بِيَدِهِ لَوْ قَالَ إِنْ شَاءَ اللَّهُ‏.‏ لَجَاهَدُوا فِي سَبِيلِ اللَّهِ فُرْسَانًا أَجْمَعُونَ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "(The Prophet) Solomon once said, 'Tonight I will sleep with ninety women, each of whom will bring forth a (would-be) cavalier who will fight in Allah's Cause." On this, his companion said to him, "Say: Allah willing!" But he did not say Allah willing. Solomon then slept with all the women, but none of them became pregnant but one woman who later delivered a halfman. By Him in Whose Hand Muhammad's soul is, if he (Solomon) had said, 'Allah willing' (all his wives would have brought forth boys) and they would have fought in Allah's Cause as cavaliers. " ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، کھا ھم سے ابوالزناد نے بیان کیا ، ان سے عبدالرحمٰن اعرج نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا سلیمان علیھ السلام نے ایک دن کھا کھ آج میں رات میں اپنی نوے بیویوں کے پاس جاؤں گا اور ھر ایک کے یھاں ایک گھوڑ سوار بچھ پیدا ھو گا جو اللھ کے راستھ میں جھاد کرے گا ۔ اس پر ان کے ساتھ نے کھا کھ انشاءاللھ ۔ لیکن سلیمان علیھ السلام نے انشاءاللھ نھیں کھا ۔ چنانچھ وھ اپنی تمام بیویوں کے پاس گئے لیکن ایک عورت کے سوا کسی کو حمل نھیں ھوا اور اس سے بھی ناقص بچھ پیدا ھوا اور اس ذات کی قسم جس کے ھاتھ میں محمد کی جان ھے ! اگر انھوں نے انشاءاللھ کھھ دیا ھوتا تو ( تمام بیویوں کے یھاں بچے پیدا ھوتے ) اور سب گھوڑوں پر سوار ھو کر اللھ کے راستے میں جھاد کرنے والے ھوتے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6639
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 634



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.