Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prayer at Night (Tahajjud)

كتاب التهجد

حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، قَالَ أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي عَلِيُّ بْنُ حُسَيْنٍ، أَنَّ حُسَيْنَ بْنَ عَلِيٍّ، أَخْبَرَهُ أَنَّ عَلِيَّ بْنَ أَبِي طَالِبٍ أَخْبَرَهُ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم طَرَقَهُ وَفَاطِمَةَ بِنْتَ النَّبِيِّ ـ عَلَيْهِ السَّلاَمُ ـ لَيْلَةً فَقَالَ ‏"‏ أَلاَ تُصَلِّيَانِ ‏"‏‏.‏ فَقُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ، أَنْفُسُنَا بِيَدِ اللَّهِ، فَإِذَا شَاءَ أَنْ يَبْعَثَنَا بَعَثَنَا‏.‏ فَانْصَرَفَ حِينَ قُلْنَا ذَلِكَ وَلَمْ يَرْجِعْ إِلَىَّ شَيْئًا‏.‏ ثُمَّ سَمِعْتُهُ وَهْوَ مُوَلٍّ يَضْرِبُ فَخِذَهُ وَهْوَ يَقُولُ ‏"‏وَكَانَ الإِنْسَانُ أَكْثَرَ شَىْءٍ جَدَلاً‏}‏‏"‏‏.‏

Narrated `Ali bin Abi Talib: One night Allah's Messenger (PBUH) came to me and Fatima, the daughter of the Prophet (PBUH) and asked, "Won't you pray (at night)?" I said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Our souls are in the hands of Allah and if He wants us to get up He will make us get up." When I said that, he left us without saying anything and I heard that he was hitting his thigh and saying, "But man is more quarrelsome than anything." (18.54) ھم سے ابو الیمان نے بیان کیا ، کھا کھ ھمیں شعیب نے زھری سے خبر دی ، کھا کھ مجھے حضرت زین العابدین علی بن حسین نے خبر دی ، اور انھیں حضرت حسین بن علی رضی اللھ عنھما نے خبر دی کھ علی بن ابی طالب رضی اللھ عنھ نے انھیں خبر دی کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم ایک رات ان کے اور فاطمھ رضی اللھ عنھما کے پاس آئے ، آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ کیا تم لوگ ( تھجد کی ) نماز نھیں پڑھو گے ؟ میں عرض کی کھ یا رسول اللھ ! ھماری روحیں خدا کے قبضھ میں ھیں ، جب وھ چاھے گا ھمیں اٹھا دے گا ۔ ھماری اس عرض پر آپ صلی اللھ علیھ وسلم واپس تشریف لے گئے ۔ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے کوئی جواب نھیں دیا لیکن واپس جاتے ھوئے میں نے سنا کھ آپ صلی اللھ علیھ وسلم ران پر ھاتھ مار کر ( سورۃ الکھف کی یھ آیت پڑھ رھے تھے ) آدمی سب سے زیادھ جھگڑالو ھے «وكان الإنسان أكثر شىء جدلا‏» ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1127
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 227


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عُرْوَةَ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ إِنْ كَانَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم لَيَدَعُ الْعَمَلَ وَهْوَ يُحِبُّ أَنْ يَعْمَلَ بِهِ خَشْيَةَ أَنْ يَعْمَلَ بِهِ النَّاسُ فَيُفْرَضَ عَلَيْهِمْ، وَمَا سَبَّحَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم سُبْحَةَ الضُّحَى قَطُّ، وَإِنِّي لأُسَبِّحُهَا‏.‏

Narrated `Aisha: Allah's Messenger (PBUH) used to give up a good deed, although he loved to do it, for fear that people might act on it and it might be made compulsory for them. The Prophet (PBUH) never prayed the Duha prayer, but I offer it. ھم سے عبداللھ بن یوسف تنیسی نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ ھم سے امام مالک نے ابن شھاب زھری سے بیان کیا ، ان سے عروھ نے ، ان سے عائشھ رضی اللھ عنھا نے فرمایا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم ایک کام کو چھوڑ دیتے اور آپ صلی اللھ علیھ وسلم کو اس کا کرنا پسند ھوتا ۔ اس خیال سے ترک کر دیتے کھ دوسرے صحابھ بھی اس پر ( آپ کو دیکھ کر ) عمل شروع کر دیں اور اس طرح وھ کام ان پر فرض ھو جائے ۔ چنانچھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے چاشت کی نماز کبھی نھیں پڑھی لیکن میں پڑھتی ھوں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1128
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 228


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عُرْوَةَ بْنِ الزُّبَيْرِ، عَنْ عَائِشَةَ أُمِّ الْمُؤْمِنِينَ ـ رضى الله عنها أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم صَلَّى ذَاتَ لَيْلَةٍ فِي الْمَسْجِدِ فَصَلَّى بِصَلاَتِهِ نَاسٌ، ثُمَّ صَلَّى مِنَ الْقَابِلَةِ فَكَثُرَ النَّاسُ، ثُمَّ اجْتَمَعُوا مِنَ اللَّيْلَةِ الثَّالِثَةِ أَوِ الرَّابِعَةِ، فَلَمْ يَخْرُجْ إِلَيْهِمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم، فَلَمَّا أَصْبَحَ قَالَ ‏"‏ قَدْ رَأَيْتُ الَّذِي صَنَعْتُمْ وَلَمْ يَمْنَعْنِي مِنَ الْخُرُوجِ إِلَيْكُمْ إِلاَّ أَنِّي خَشِيتُ أَنْ تُفْرَضَ عَلَيْكُمْ ‏"‏، وَذَلِكَ فِي رَمَضَانَ‏.‏

Narrated `Aisha the mother of the faithful believers: One night Allah's Messenger (PBUH) offered the prayer in the Mosque and the people followed him. The next night he also offered the prayer and too many people gathered. On the third and the fourth nights more people gathered, but Allah's Messenger (PBUH) did not come out to them. In the morning he said, "I saw what you were doing and nothing but the fear that it (i.e. the prayer) might be enjoined on you, stopped me from coming to you." And that happened in the month of Ramadan. ھم سے عبداللھ بن یوسف تنیسی نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ ھمیں امام مالک رحمھ اللھ نے خبر دی ، انھیں ابن شھاب زھری نے ، انھیں عروھ بن زبیر نے ، انھیں ام المؤمنین حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے ایک رات مسجد میں نماز پڑھی ۔ صحابھ نے بھی آپ صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ یھ نماز پڑھی ۔ دوسری رات بھی آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے یھ نماز پڑھی تو نمازیوں کی تعداد بھت بڑھ گئی تیسری یا چوتھی رات تو پورا اجتماع ھی ھو گیا تھا ۔ لیکن نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم اس رات نماز پڑھانے تشریف نھیں لائے ۔ صبح کے وقت آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ تم لوگ جتنی بڑی تعداد میں جمع ھو گئے تھے ۔ میں نے اسے دیکھا لیکن مجھے باھر آنے سے یھ خیال مانع رھا کھ کھیں تم پر یھ نماز فرض نھ ھو جائے ۔ یھ رمضان کا واقعھ تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1129
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 229


حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ، قَالَ حَدَّثَنَا مِسْعَرٌ، عَنْ زِيَادٍ، قَالَ سَمِعْتُ الْمُغِيرَةَ ـ رضى الله عنه ـ يَقُولُ إِنْ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم لَيَقُومُ لِيُصَلِّيَ حَتَّى تَرِمُ قَدَمَاهُ أَوْ سَاقَاهُ، فَيُقَالُ لَهُ فَيَقُولُ ‏"‏ أَفَلاَ أَكُونُ عَبْدًا شَكُورًا ‏"‏‏.‏

Narrated Al-Mughira: The Prophet (PBUH) used to stand (in the prayer) or pray till both his feet or legs swelled. He was asked why (he offered such an unbearable prayer) and he said, "should I not be a thankful slave." ھم سے ابونعیم نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے مسعر نے بیان کیا ، ان سے زیاد بن علاقھ نے ، انھوں نے بیان کیا کھ میں نے مغیرھ بن شعبھ رضی اللھ عنھ کو یھ کھتے سنا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم اتنی دیر تک کھڑے ھو کر نماز پڑھتے رھتے کھ آپ صلی اللھ علیھ وسلم کے قدم یا ( یھ کھا کھ ) پنڈلیوں پر ورم آ جاتا ، جب آپ صلی اللھ علیھ وسلم سے اس کے متعلق کچھ عرض کیا جاتا تو فرماتے ” کیا میں اللھ کا شکرگزار بندھ نھ بنوں “ ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1130
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 230


حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، قَالَ حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ دِينَارٍ، أَنَّ عَمْرَو بْنَ أَوْسٍ، أَخْبَرَهُ أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَمْرِو بْنِ الْعَاصِ ـ رضى الله عنهما ـ أَخْبَرَهُ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ لَهُ ‏"‏ أَحَبُّ الصَّلاَةِ إِلَى اللَّهِ صَلاَةُ دَاوُدَ ـ عَلَيْهِ السَّلاَمُ ـ وَأَحَبُّ الصِّيَامِ إِلَى اللَّهِ صِيَامُ دَاوُدَ، وَكَانَ يَنَامُ نِصْفَ اللَّيْلِ وَيَقُومُ ثُلُثَهُ وَيَنَامُ سُدُسَهُ، وَيَصُومُ يَوْمًا وَيُفْطِرُ يَوْمًا ‏"‏‏.‏


Chapter: Sleeping in the last hours of the night

Narrated `Abdullah bin `Amr bin Al-`As: Allah's Messenger (PBUH) told me, "The most beloved prayer to Allah is that of David and the most beloved fasts to Allah are those of David. He used to sleep for half of the night and then pray for one third of the night and again sleep for its sixth part and used to fast on alternate days." ھم سے علی بن عبداللھ نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے سفیان بن عیینھ نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے عمرو بن دینار نے بیان کیا کھ عمرو بن اوس نے انھیں خبر دی اور انھیں عبداللھ بن عمرو بن العاص رضی اللھ عنھما نے خبر دی کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کھ سب نمازوں میں اللھ تعالیٰ کے نزدیک پسندیدھ نماز داؤد علیھ السلام کی نماز ھے اور روزوں میں بھی داؤد علیھ السلام ھی کا روزھ ۔ آپ آدھی رات تک سوتے ، اس کے بعد تھائی رات نماز پڑھنے میں گزارتے ۔ پھر رات کے چھٹے حصے میں بھی سو جاتے ۔ اسی طرح آپ ایک دن روزھ رکھتے اور ایک دن افطار کرتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1131
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 231


حَدَّثَنِي عَبْدَانُ، قَالَ أَخْبَرَنِي أَبِي، عَنْ شُعْبَةَ، عَنْ أَشْعَثَ، سَمِعْتُ أَبِي قَالَ، سَمِعْتُ مَسْرُوقًا، قَالَ سَأَلْتُ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ أَىُّ الْعَمَلِ كَانَ أَحَبَّ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَتِ الدَّائِمُ‏.‏ قُلْتُ مَتَى كَانَ يَقُومُ قَالَتْ يَقُومُ إِذَا سَمِعَ الصَّارِخَ‏.

Narrated Masruq: I asked `Aisha which deed was most loved by the Prophet. She said, "A deed done continuously." I further asked, "When did he used to get up (in the night for the prayer)." She said, "He used to get up on hearing the crowing of a cock." ھم سے عبدان نے بیان کیا ، کھا کھ مجھے میرے باپ عثمان بن جبلھ نے شعبھ سے خبر دی ، انھیں اشعث نے ۔ اشعث نے کھا کھ میں نے اپنے باپ ( سلیم بن اسود ) سے سنا اور میرے باپ نے مسروق سے سنا ، انھوں نے بیان کیا کھ میں نے عائشھ رضی اللھ عنھا سے پوچھا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کو کون سا عمل زیادھ پسند تھا ؟ آپ نے جواب دیا کھ جس پر ھمیشگی کی جائے ( خواھ وھ کوئی بھی نیک کام ھو ) میں نے دریافت کیا کھ آپ ( رات میں نماز کے لیے ) کب کھڑے ھوتے تھے ؟ آپ نے فرمایا کھ جب مرغ کی آواز سنتے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 19 Hadith no 1132
Web reference: Sahih Bukhari Volume 2 Book 21 Hadith no 232



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.