Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prophets

كتاب أحاديث الأنبياء

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ يُونُسَ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، أَنَّ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كُنَّا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم نَجْنِي الْكَبَاثَ، وَإِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ عَلَيْكُمْ بِالأَسْوَدِ مِنْهُ، فَإِنَّهُ أَطْيَبُهُ ‏"‏‏.‏ قَالُوا أَكُنْتَ تَرْعَى الْغَنَمَ قَالَ ‏"‏ وَهَلْ مِنْ نَبِيٍّ إِلاَّ وَقَدْ رَعَاهَا ‏"‏‏.‏

Narrated Jabir bin `Abdullah: We were with Allah's Messenger (PBUH) picking the fruits of the 'Arak trees, and Allah's Messenger (PBUH) said, "Pick the black fruit, for it is the best." The companions asked, "Were you a shepherd?" He replied, "There was no prophet who was not a shepherd." ھم سے یحییٰ بن بکیر نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے لیث نے بیان کیا ‘ ان سے یونس نے ‘ ان سے ابن شھاب نے ‘ ان سے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے اور ان سے حضرت جابر بن عبداللھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ ( ایک مرتبھ ) ھم رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ ( سفر میں ) پیلو کے پھل توڑنے لگے ۔ آپ نے فرمایا کھ جو سیاھ ھوں انھیں توڑو ‘ کیونکھ وھ زیادھ لذیذ ھوتا ھے ۔ صحابھ رضوان اللھ علیھم اجمعین نے عرض کیا ‘ کیا حضور نے کبھی بکریاں چرائی ھیں ؟ آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ کوئی نبی ایسا نھیں گزرا جس نے بکریاں نھ چرائی ھوں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3406
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 618


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ مُوسَى، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ، أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ، عَنِ ابْنِ طَاوُسٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ أُرْسِلَ مَلَكُ الْمَوْتِ إِلَى مُوسَى ـ عَلَيْهِمَا السَّلاَمُ ـ فَلَمَّا جَاءَهُ صَكَّهُ، فَرَجَعَ إِلَى رَبِّهِ، فَقَالَ أَرْسَلْتَنِي إِلَى عَبْدٍ لاَ يُرِيدُ الْمَوْتَ‏.‏ قَالَ ارْجِعْ إِلَيْهِ، فَقُلْ لَهُ يَضَعُ يَدَهُ عَلَى مَتْنِ ثَوْرٍ، فَلَهُ بِمَا غَطَّتْ يَدُهُ بِكُلِّ شَعَرَةٍ سَنَةٌ‏.‏ قَالَ أَىْ رَبِّ، ثُمَّ مَاذَا قَالَ ثُمَّ الْمَوْتُ‏.‏ قَالَ فَالآنَ‏.‏ قَالَ فَسَأَلَ اللَّهَ أَنْ يُدْنِيَهُ مِنَ الأَرْضِ الْمُقَدَّسَةِ رَمْيَةً بِحَجَرٍ‏.‏ قَالَ أَبُو هُرَيْرَةَ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لَوْ كُنْتُ ثَمَّ لأَرَيْتُكُمْ قَبْرَهُ إِلَى جَانِبِ الطَّرِيقِ تَحْتَ الْكَثِيبِ الأَحْمَرِ ‏"‏‏.‏ قَالَ وَأَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ عَنْ هَمَّامٍ حَدَّثَنَا أَبُو هُرَيْرَةَ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم نَحْوَهُ‏.‏


Chapter: The death of Musa (Moses)

Narrated Abu Huraira: The Angel of Death was sent to Moses when he came to Moses, Moses slapped him on the eye. The angel returned to his Lord and said, "You have sent me to a Slave who does not want to die." Allah said, "Return to him and tell him to put his hand on the back of an ox and for every hair that will come under it, he will be granted one year of life." Moses said, "O Lord! What will happen after that?" Allah replied, "Then death." Moses said, "Let it come now." Moses then requested Allah to let him die close to the Sacred Land so much so that he would be at a distance of a stone's throw from it." Abu Huraira added, "Allah's Messenger (PBUH) said, 'If I were there, I would show you his grave below the red sand hill on the side of the road." ھم سے یحییٰ بن موسیٰ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے عبدالرزاق نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو معمر نے خبر دی ‘ انھیں عبداللھ بن طاوس نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ اللھ تعالیٰ نے حضرت موسیٰ علیھ السلام کے پاس ملک الموت کو بھیجا ‘ جب ملک الموت حضرت موسیٰ علیھ السلام کے پاس آئے تو انھوں نے انھیں چانٹا مارا ( کیونکھ وھ انسان کی صورت میں آیا تھا ) ملک الموت ‘ اللھ رب العزت کی بارگاھ میں واپس ھوئے اور عرض کیا کھ تو نے اپنے ایک ایسے بندے کے پاس مجھے بھیجا جو موت کے لئے تیار نھیں ھے ۔ اللھ تعالیٰ نے فرمایا کھ دوبارھ ان کے پاس جاؤ اور کھو کھ اپنا ھا تھ کسی بیل کی پیٹھ پر رکھیں ، ان کے ھاتھ میں جتنے بال اس کے آ جائیں ان میں سے ھر بال کے بدلے ایک سال کی عمر انھیں دی جائے گی ( ملک الموت دوبارھ آئے اور اللھ تعالیٰ کا فیصلھ سنایا ) حضرت موسیٰ علیھ السلام بولے اے رب ! پھر اس کے بعد کیا ھو گا ؟ اللھ تعالیٰ نے فرمایا کھ پھر موت ھے ۔ حضرت موسیٰ علیھ السلام نے عرض کیا کھ پھر ابھی کیوں نھ آ جائے ۔ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ پھر حضرت موسیٰ علیھ السلام نے اللھ تعالیٰ سے دعا کی کھ بیت المقدس سے مجھے اتنا قریب کر دیا جائے کھ ( جھاں ان کی قبر ھو وھاں سے ) اگر کوئی پتھر پھینکے تو وھ بیت المقدس تک پھنچ سکے ۔ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اگر میں وھاں موجود ھوتا تو بیت المقدس میں ‘ میں تمھیں ان کی قبر دکھاتا جو راستے کے کنارے پر ھے ‘ ریت کے سرخ ٹیلے سے نیچے ۔ عبدالرزاق بن ھمام نے بیان کیا کھ ھمیں معمر نے خبر دی ‘ انھیں ھمام نے اور ان کو ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے اسی طرح بیان کیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3407
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 619


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي أَبُو سَلَمَةَ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، وَسَعِيدُ بْنُ الْمُسَيَّبِ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ اسْتَبَّ رَجُلٌ مِنَ الْمُسْلِمِينَ وَرَجُلٌ مِنَ الْيَهُودِ‏.‏ فَقَالَ الْمُسْلِمُ وَالَّذِي اصْطَفَى مُحَمَّدًا صلى الله عليه وسلم عَلَى الْعَالَمِينَ‏.‏ فِي قَسَمٍ يُقْسِمُ بِهِ‏.‏ فَقَالَ الْيَهُودِيُّ وَالَّذِي اصْطَفَى مُوسَى عَلَى الْعَالَمِينَ‏.‏ فَرَفَعَ الْمُسْلِمُ عِنْدَ ذَلِكَ يَدَهُ، فَلَطَمَ الْيَهُودِيَّ، فَذَهَبَ الْيَهُودِيُّ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَأَخْبَرَهُ الَّذِي كَانَ مِنْ أَمْرِهِ وَأَمْرِ الْمُسْلِمِ فَقَالَ ‏"‏ لاَ تُخَيِّرُونِي عَلَى مُوسَى، فَإِنَّ النَّاسَ يَصْعَقُونَ فَأَكُونُ أَوَّلَ مَنْ يُفِيقُ، فَإِذَا مُوسَى بَاطِشٌ بِجَانِبِ الْعَرْشِ، فَلاَ أَدْرِي أَكَانَ فِيمَنْ صَعِقَ فَأَفَاقَ قَبْلِي أَوْ كَانَ مِمَّنِ اسْتَثْنَى اللَّهُ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: A Muslim and a Jew quarreled. The Muslim taking an oath, said, "By Him Who has preferred Muhammad over all people...!" The Jew said, "By Him Who has preferred Moses, over all people." The Muslim raised his hand and slapped the Jew who came to the Prophet (PBUH) to tell him what had happened between him and the Muslim. The Prophet (PBUH) said, "Don't give me superiority over Moses, for the people will become unconscious (on the Day of Resurrection) and I will be the first to gain consciousness to see Moses standing and holding a side of Allah's Throne. I will not know if he has been among those people who have become unconscious; and that he has gained consciousness before me, or he has been amongst those whom Allah has exempted." ھم سے ابو الیمان نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ‘ ان سے زھری نے بیان کیا ‘ انھیں ابوسلمھ بن عبدالرحمان اور سعید بن مسیب نے خبر دی اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ مسلمانوں کی جماعت کے ایک آدمی اور یھودیوں میں سے ایک شخص کا جھگڑا ھوا ۔ مسلمان نے کھا کھ اس ذات کی قسم جس نے محمد صلی اللھ علیھ وسلم کو ساری دنیا میں برگذیدھ بنایا ‘ قسم کھاتے ھوئے انھوں نے یھ کھا ۔ اس پر یھودی نے کھا ‘ قسم ھے اس ذات کی جس نے موسیٰ علیھ السلام کو ساری دنیا میں برگزیدھ بنایا ۔ اس پر مسلمان نے اپنا ھاتھ اٹھا کر یھودی کو تھپڑ مار دیا ۔ وھ یھودی ‘ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں آیا اور اپنے اور مسلمان کے جھگڑے کی آپ کو خبر دی ۔ آپ نے اسی موقع پر فرمایا کھ مجھے حضرت موسیٰ علیھ السلام پر ترجیح نھ دیا کرو ۔ لوگ قیامت کے دن بیھوش کر دئے جائیں گے اور سب سے پھلے میں ھوش میں آؤں گا پھر دیکھوں گا کھ حضرت موسیٰ علیھ السلام عرش کا پایھ پکڑ ے ھوئے کھڑے ھیں ۔ اب مجھے معلوم نھیں کھ وھ بھی بیھوش ھونے والوں میں تھے اور مجھ سے پھلے ھی ھوش میں آ گئے یا انھیں اللھ تعالیٰ نے بیھوش ھونے والوں میں ھی نھیں رکھا تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3408
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 620


حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ حُمَيْدِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ، قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ احْتَجَّ آدَمُ وَمُوسَى فَقَالَ لَهُ مُوسَى أَنْتَ آدَمُ الَّذِي أَخْرَجَتْكَ خَطِيئَتُكَ مِنَ الْجَنَّةِ‏.‏ فَقَالَ لَهُ آدَمُ أَنْتَ مُوسَى الَّذِي اصْطَفَاكَ اللَّهُ بِرِسَالاَتِهِ وَبِكَلاَمِهِ، ثُمَّ تَلُومُنِي عَلَى أَمْرٍ قُدِّرَ عَلَىَّ قَبْلَ أَنْ أُخْلَقَ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ فَحَجَّ آدَمُ مُوسَى ‏"‏ مَرَّتَيْنِ‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "Adam and Moses argued with each other. Moses said to Adam. 'You are Adam whose mistake expelled you from Paradise.' Adam said to him, 'You are Moses whom Allah selected as His Messenger and as the one to whom He spoke directly; yet you blame me for a thing which had already been written in my fate before my creation?"' Allah's Messenger (PBUH) said twice, "So, Adam overpowered Moses." ھم سے عبدالعزیز بن عبداللھ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابراھیم بن سعد نے بیان کیا ‘ ان سے ابن شھاب نے ‘ ان سے حمید بن عبد الرحمان نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ حضرت موسیٰ اور حضرت آدم علیھم السلام نے آپس میں بحث کی ۔ حضرت موسیٰ علیھ السلام نے ان سے کھا کھ آپ آدم ھیں جنھیں ان کی لغزش نے جنت سے نکالا ۔ حضرت آدم علیھ السلام بولے اور آپ موسیٰ علیھ السلام ھیں کھ جنھیں اللھ تعالیٰ نے اپنی رسالت اور اپنے کلام سے نوازا ‘ پھر بھی آپ مجھے ایک ایسے معاملے پر ملامت کرتے ھیں جو اللھ تعالیٰ نے میری پیدائش سے بھی پھلے مقدر کر دیا ۔ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ چنانچھ حضرت آدم علیھ السلام حضرت موسیٰ علیھ السلام پر غالب آ گئے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے یھ جملھ دو مرتبھ فرمایا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3409
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 621


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا حُصَيْنُ بْنُ نُمَيْرٍ، عَنْ حُصَيْنِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ خَرَجَ عَلَيْنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَوْمًا قَالَ ‏"‏ عُرِضَتْ عَلَىَّ الأُمَمُ، وَرَأَيْتُ سَوَادًا كَثِيرًا سَدَّ الأُفُقَ فَقِيلَ هَذَا مُوسَى فِي قَوْمِهِ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: The Prophet (PBUH) once came to us and said, "All the nations were displayed in front of me, and I saw a large multitude of people covering the horizon. Somebody said, 'This is Moses and his followers.' " ھم سے مسدد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے حصین بن نمیر نے بیان کیا ‘ ان سے حصین بن عبدالرحمٰن نے ‘ ان سے سعید بن جبیر نے اور ان سے حضرت عبداللھ بن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ ایک دن نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم ھمارے پاس تشریف لائے اور فرمایا کھ میرے سامنے تمام امتیں لائی گئیں اور میں نے دیکھا کھ ایک بھت بڑی جماعت آسمان کے کناروں پر چھائی ھوئی ھے ۔ پھر بتایا گیا کھ یھ اپنی قوم کے ساتھ حضرت موسیٰ علیھ السلام ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3410
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 622


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ جَعْفَرٍ، حَدَّثَنَا وَكِيعٌ، عَنْ شُعْبَةَ، عَنْ عَمْرِو بْنِ مُرَّةَ، عَنْ مُرَّةَ الْهَمْدَانِيِّ، عَنْ أَبِي مُوسَى ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ كَمَلَ مِنَ الرِّجَالِ كَثِيرٌ، وَلَمْ يَكْمُلْ مِنَ النِّسَاءِ إِلاَّ آسِيَةُ امْرَأَةُ فِرْعَوْنَ، وَمَرْيَمُ بِنْتُ عِمْرَانَ، وَإِنَّ فَضْلَ عَائِشَةَ عَلَى النِّسَاءِ كَفَضْلِ الثَّرِيدِ عَلَى سَائِرِ الطَّعَامِ ‏"‏‏.‏


Chapter: The Statement of Allah Taa'la: "And Allah has set forth an example for those who believe, the wife of Fir'aun..."

Narrated Abu Musa: Allah's Messenger (PBUH) said, "Many amongst men reached (the level of) perfection but none amongst the women reached this level except Asia, Pharaoh's wife, and Mary, the daughter of `Imran. And no doubt, the superiority of `Aisha to other women is like the superiority of Tharid (i.e. a meat and bread dish) to other meals." ھم سے یحییٰ بن جعفر نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے وکیع نے بیان کیا ‘ ان سے شعبھ نے بیان کیا ‘ ان سے عمرو بن مرھ نے ‘ ان سے مرھ ھمدانی نے اور ان سے حضرت ابوموسیٰ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مردوں میں تو بھت سے کامل لوگ اٹھے لیکن عورتوں میں فرعون کی بیوی آسیھ اور مریم بنت عمران علیھما السلام کے سوا اور کوئی کامل نھیں پیدا ھوئی ‘ ھاں عورتوں پر حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا کی فضیلت ایسی ھے جیسے تمام کھانوں پر ثریدکی فضیلت ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3411
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 623



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.