Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prophets

كتاب أحاديث الأنبياء

حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنَا أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، حَدَّثَنَا زَيْدُ بْنُ وَهْبٍ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ، حَدَّثَنَا رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم وَهْوَ الصَّادِقُ الْمَصْدُوقُ ‏"‏ إِنَّ أَحَدَكُمْ يُجْمَعُ فِي بَطْنِ أُمِّهِ أَرْبَعِينَ يَوْمًا، ثُمَّ يَكُونُ عَلَقَةً مِثْلَ ذَلِكَ، ثُمَّ يَكُونُ مُضْغَةً مِثْلَ ذَلِكَ، ثُمَّ يَبْعَثُ اللَّهُ إِلَيْهِ مَلَكًا بِأَرْبَعِ كَلِمَاتٍ، فَيُكْتَبُ عَمَلُهُ وَأَجَلُهُ وَرِزْقُهُ وَشَقِيٌّ أَوْ سَعِيدٌ، ثُمَّ يُنْفَخُ فِيهِ الرُّوحُ، فَإِنَّ الرَّجُلَ لَيَعْمَلُ بِعَمَلِ أَهْلِ النَّارِ حَتَّى مَا يَكُونُ بَيْنَهُ وَبَيْنَهَا إِلاَّ ذِرَاعٌ، فَيَسْبِقُ عَلَيْهِ الْكِتَابُ فَيَعْمَلُ بِعَمَلِ أَهْلِ الْجَنَّةِ، فَيَدْخُلُ الْجَنَّةَ، وَإِنَّ الرَّجُلَ لَيَعْمَلُ بِعَمَلِ أَهْلِ الْجَنَّةِ، حَتَّى مَا يَكُونُ بَيْنَهُ وَبَيْنَهَا إِلاَّ ذِرَاعٌ فَيَسْبِقُ عَلَيْهِ الْكِتَابُ، فَيَعْمَلُ بِعَمَلِ أَهْلِ النَّارِ فَيَدْخُلُ النَّارَ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah: Allah's Messenger (PBUH), the true and truly inspired said, "(as regards your creation), every one of you is collected in the womb of his mother for the first forty days, and then he becomes a clot for another forty days, and then a piece of flesh for another forty days. Then Allah sends an angel to write four items: He writes his deeds, time of his death, means of his livelihood, and whether he will be wretched or blessed (in religion). Then the soul is breathed into his body. So a man may do deeds characteristic of the people of the (Hell) Fire, so much so that there is only the distance of a cubit between him and it, and then what has been written (by the angel) surpasses, and so he starts doing deeds characteristic of the people of Paradise and enters Paradise. Similarly, a person may do deeds characteristic of the people of Paradise, so much so that there is only the distance of a cubit between him and it, and then what has been written (by the angel) surpasses, and he starts doing deeds of the people of the (Hell) Fire and enters the (Hell) Fire." ھم سے عمر بن حفص نے بیان کیا ، کھا ھم سے میرے والد نے بیان کیا ، کھا ھم سے اعمش نے بیان کیا ، کھا ھم سے زید بن وھب نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے بیان فرمایا اور آپ سچوں کے سچے تھے کھ انسان کی پیدائش اس کی ماں کے پیٹ میں پھلے چالیس دن تک پوری کی جاتی ھے ۔ پھر وھ اتنے ھی دنوں تک علقھ یعنی غلیظ اور جامد خون کی صورت میں رھتا ھے ۔ پھر اتنے ھی دنوں کے لیے مضغھ ( گوشت کا لوتھڑا ) کی شکل اختیار کر لیتا ھے ۔ پھر ( چوتھے چلھ میں ) اللھ تعالیٰ ایک فرشتھ کو چار باتوں کا حکم دے کر بھیجتا ھے ۔ پس وھ فرشتھ اس کے عمل ، اس کی مدت زندگی ، روزی اور یھ کھ وھ نیک ھے یا بد ، کو لکھ لیتا ھے ۔ اس کے بعد اس میں روح پھونکی جاتی ھے ۔ پس انسان ( زندگی بھر ) دوزخیوں کے کام کرتا رھتا ھے ۔ اور جب اس کے اور دوزخ کے درمیان صرف ایک ھاتھ کا فاصلھ رھ جاتا ھے تو اس کی تقدیر سامنے آتی ھے اور وھ جنتیوں کے کام کرنے لگتا ھے اور جنت میں چلا جاتا ھے ۔ اسی طرح ایک شخص جنتیوں کے کام کرتا رھتا ھے اور جب اس کے اور جنت کے درمیان صرف ایک ھاتھ کا فاصلھ رھ جاتا ھے تو اس کی تقدیر سامنے آتی ھے اور وھ دوزخیوں کے کام شروع کر دیتا ھے اور وھ دوزخ میں چلا جاتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3332
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 549


حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي بَكْرِ بْنِ أَنَسٍ، عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ إِنَّ اللَّهَ وَكَّلَ فِي الرَّحِمِ مَلَكًا فَيَقُولُ يَا رَبِّ نُطْفَةٌ، يَا رَبِّ عَلَقَةٌ، يَا رَبِّ مُضْغَةٌ، فَإِذَا أَرَادَ أَنْ يَخْلُقَهَا قَالَ يَا رَبِّ، أَذَكَرٌ أَمْ يَا رَبِّ أُنْثَى يَا رَبِّ شَقِيٌّ أَمْ سَعِيدٌ فَمَا الرِّزْقُ فَمَا الأَجَلُ فَيُكْتَبُ كَذَلِكَ فِي بَطْنِ أُمِّهِ ‏"‏‏.‏

Narrated Anas bin Malik: The Prophet (PBUH) said, "Allah has appointed an angel in the womb, and the angel says, 'O Lord! A drop of discharge (i.e. of semen), O Lord! a clot, O Lord! a piece of flesh.' And then, if Allah wishes to complete the child's creation, the angel will say. 'O Lord! A male or a female? O Lord! wretched or blessed (in religion)? What will his livelihood be? What will his age be?' The angel writes all this while the child is in the womb of its mother." ھم سے ابوالنعمان نے بیان کیا ، کھا ھم سے حماد بن زید نے بیان کیا ، ان سے عبیداللھ بن ابی بکر بن انس نے اور ان سے انس بن مالک رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اللھ تعالیٰ نے ماں کے رحم کے لیے ایک فرشتھ مقرر کر دیا ھے وھ فرشتھ عرض کرتا ھے ، اے رب ! یھ نطفھ ھے ، اے رب یھ مضغھ ھے ۔ اے رب ! یھ علقھ ھے ۔ پھر جب اللھ تعالیٰ اسے پیدا کرنے کا ارادھ کرتا ھے تو فرشتھ پوچھتا ھے اے رب ! یھ مرد ھے یا اے رب ! یھ عورت ھے ، اے رب ! یھ بد ھے یا نیک ؟ اس کی روزی کیا ھے ؟ اور مدت زندگی کتنی ھے ؟ چنانچھ اسی کے مطابق ماں کے پیٹ ھی میں سب کچھ فرشتھ رکھ لیتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3333
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 550


حَدَّثَنَا قَيْسُ بْنُ حَفْصٍ، حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ الْحَارِثِ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ أَبِي عِمْرَانَ الْجَوْنِيِّ، عَنْ أَنَسٍ، يَرْفَعُهُ ‏"‏ أَنَّ اللَّهَ، يَقُولُ لأَهْوَنِ أَهْلِ النَّارِ عَذَابًا لَوْ أَنَّ لَكَ مَا فِي الأَرْضِ مِنْ شَىْءٍ كُنْتَ تَفْتَدِي بِهِ قَالَ نَعَمْ‏.‏ قَالَ فَقَدْ سَأَلْتُكَ مَا هُوَ أَهْوَنُ مِنْ هَذَا وَأَنْتَ فِي صُلْبِ آدَمَ أَنْ لاَ تُشْرِكَ بِي‏.‏ فَأَبَيْتَ إِلاَّ الشِّرْكَ ‏"‏‏.‏

Narrated Anas: The Prophet (PBUH) said, "Allah will say to that person of the (Hell) Fire who will receive the least punishment, 'If you had everything on the earth, would you give it as a ransom to free yourself (i.e. save yourself from this Fire)?' He will say, 'Yes.' Then Allah will say, 'While you were in the backbone of Adam, I asked you much less than this, i.e. not to worship others besides Me, but you insisted on worshipping others besides me.' " ھم سے قیس بن حفص نے بیان کیا ، کھا ھم سے خالد بن حارث نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ، ان سے ابوعمران جونی نے اور ان سے حضرت انس رضی اللھ عنھ نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے کھ اللھ تعالیٰ ( قیامت کے دن ) اس شخص سے پوچھے گا جسے دوزخ کا سب سے ھلکا عذاب کیا گیا ھو گا ۔ اگر دنیا میں تمھاری کوئی چیز ھوتی تو کیا تو اس عذاب سے نجات پانے کے لیے اسے بدلے میں دے سکتا تھا ؟ وھ شخص کھے گا کھ جی ھاں اس پر اللھ تعالیٰ فرمائے گا کھ جب تو آدم کی پیٹھ میں تھا تو میں نے تجھ سے اس سے بھی معمولی چیز کا مطالبھ کیا تھا ( روز ازل میں ) کھ میرا کسی کو بھی شریک نھ ٹھھرانا ، لیکن ( جب تو دنیا میں آیا تو ) اسی شرک کا عمل اختیار کیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3334
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 551


حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصِ بْنِ غِيَاثٍ، حَدَّثَنَا أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، قَالَ حَدَّثَنِي عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُرَّةَ، عَنْ مَسْرُوقٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تُقْتَلُ نَفْسٌ ظُلْمًا إِلاَّ كَانَ عَلَى ابْنِ آدَمَ الأَوَّلِ كِفْلٌ مِنْ دَمِهَا، لأَنَّهُ أَوَّلُ مَنْ سَنَّ الْقَتْلَ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah: Allah's Messenger (PBUH) said, "Whenever a person is murdered unjustly, there is a share from the burden of the crime on the first son of Adam for he was the first to start the tradition of murdering." ھم سے عمر بن حفص بن غیاث نے بیان کیا ، کھا ھم سے ھمارے والد نے بیان کیا ، ان سے اعمش نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے عبداللھ بن مرھ نے بیان کیا ، ان سے مسروق نے اور ان سے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا جب بھی کوئی انسان ظلم سے قتل کیا جاتا ھے تو آدم علیھ السلام کے سب سے پھلے بیٹے ( قابیل ) کے نامھ اعمال میں بھی اس قتل کا گناھ لکھا جاتا ھے ۔ کیونکھ قتل ناحق کی بنا سب سے پھلے اسی نے قائم کی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3335
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 552


قَالَ قَالَ اللَّيْثُ عَنْ يَحْيَى بْنِ سَعِيدٍ، عَنْ عَمْرَةَ، عَنْ عَائِشَةَ، رضى الله عنها قَالَتْ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ الأَرْوَاحُ جُنُودٌ مُجَنَّدَةٌ، فَمَا تَعَارَفَ مِنْهَا ائْتَلَفَ، وَمَا تَنَاكَرَ مِنْهَا اخْتَلَفَ ‏"‏‏.‏ وَقَالَ يَحْيَى بْنُ أَيُّوبَ حَدَّثَنِي يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ بِهَذَا‏.‏


Chapter: Souls are like recruited troops

Narrated Aishah (ra): I heard the Prophet (PBUH), "Souls are like recruited troops: Those who are like qualities are inclined to each other, but those who have dissimilar qualities, differ." امام بخاری نے کھا کھ لیث بن سعد نے روایت کیا یحییٰ بن سعید انصاری سے ، ان سے عمرھ نے اور ان سے حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ میں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ، آپ فرما رھے تھے کھ روحوں کے جھنڈ کے جھنڈ الگ الگ تھے ۔ پھر وھاں جن روحوں میں آپس میں پھچان تھی ان میں یھاں بھی محبت ھوتی ھے اور جو وھاں غیر تھیں یھاں بھی وھ خلاف رھتی ھیں اور یحییٰ بن ایوب نے بھی اس حدیث کو روایت کیا ، کھا مجھ سے یحییٰ بن سعید نے بیان کیا ، آخر تک ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3336
Web reference: Sahih Bukhari Volume 1 Book 55 Hadith no 552


حَدَّثَنَا عَبْدَانُ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، عَنْ يُونُسَ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ سَالِمٌ وَقَالَ ابْنُ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما قَامَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فِي النَّاسِ فَأَثْنَى عَلَى اللَّهِ بِمَا هُوَ أَهْلُهُ، ثُمَّ ذَكَرَ الدَّجَّالَ، فَقَالَ ‏"‏ إِنِّي لأُنْذِرُكُمُوهُ، وَمَا مِنْ نَبِيٍّ إِلاَّ أَنْذَرَهُ قَوْمَهُ، لَقَدْ أَنْذَرَ نُوحٌ قَوْمَهُ، وَلَكِنِّي أَقُولُ لَكُمْ فِيهِ قَوْلاً لَمْ يَقُلْهُ نَبِيٌّ لِقَوْمِهِ، تَعْلَمُونَ أَنَّهُ أَعْوَرُ، وَأَنَّ اللَّهَ لَيْسَ بِأَعْوَرَ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Umar: Once Allah's Messenger (PBUH) stood amongst the people, glorified and praised Allah as He deserved and then mentioned the Dajjal saying, "l warn you against him (i.e. the Dajjal) and there was no prophet but warned his nation against him. No doubt, Noah warned his nation against him but I tell you about him something of which no prophet told his nation before me. You should know that he is one-eyed, and Allah is not one-eyed." ھم سے عبدان نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ بن مبارک نے خبر دی ، انھیں یونس نے ، انھیں زھری نے کھ سالم نے بیان کیا اور ان سے عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم لوگوں میں خطبھ سنانے کھڑے ھوئے ۔ پھلے اللھ تعالیٰ کی ، اس کی شان کے مطابق ثنا بیان کی ، پھر دجال کا ذکر فرمایا اور فرمایا کھ میں تمھیں دجال کے فتنے سے ڈراتا ھوں اور کوئی نبی ایسا نھیں گزرا جس نے اپنی قوم کو اس سے نھ ڈرایا ھو ۔ نوح علیھ السلام نے بھی اپنی قوم کو اس سے ڈرایا تھا ۔ لیکن میں تمھیں اس کے بارے میں ایک ایسی بات بتاتا ھوں جو کسی نبی نے بھی اپنی قوم کو نھیں بتائی تھی ، تمھیں معلوم ھونا چاھئے کھ دجال کانا ھو گا اور اللھ تعالیٰ اس عیب سے پاک ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3337
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 553



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.