Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prophets

كتاب أحاديث الأنبياء

حَدَّثَنَا آدَمُ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ مَنْصُورٍ، قَالَ سَمِعْتُ رِبْعِيَّ بْنَ حِرَاشٍ، يُحَدِّثُ عَنْ أَبِي مَسْعُودٍ، قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِنَّ مِمَّا أَدْرَكَ النَّاسُ مِنْ كَلاَمِ النُّبُوَّةِ إِذَا لَمْ تَسْتَحِي فَاصْنَعْ مَا شِئْتَ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Mus'ud: The Prophet (PBUH) said, "One of the sayings of the prophets which the people have got is, 'If you do not feel ashamed, then do whatever you like." ھم سے آدم بن ابی ایاس نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ان سے منصور نے باین کیا انھوں نے کھا میں نے ربعی بن حراش سے سنا وھ ابومسعود انصاری رضی اللھ عنھ سے روایت کرتے تھے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اگلے پیغمبروں کے کلام میں سے لوگوں نے جو پایا یھ بھی ھے کھ جب تجھ میں حیاء نھ ھو پھر جو جی چاھے کر ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3484
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 691


حَدَّثَنَا بِشْرُ بْنُ مُحَمَّدٍ، أَخْبَرَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا يُونُسُ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، أَخْبَرَنِي سَالِمٌ، أَنَّ ابْنَ عُمَرَ، حَدَّثَهُ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ بَيْنَمَا رَجُلٌ يَجُرُّ إِزَارَهُ مِنَ الْخُيَلاَءِ خُسِفَ بِهِ، فَهْوَ يَتَجَلْجَلُ فِي الأَرْضِ إِلَى يَوْمِ الْقِيَامَةِ ‏"‏‏.‏ تَابَعَهُ عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ خَالِدٍ عَنِ الزُّهْرِيِّ‏.‏

Narrated Ibn `Umar: The Prophet (PBUH) said, "While a man was walking, dragging his dress with pride, he was caused to be swallowed by the earth and will go on sinking in it till the Day of Resurrection." ھم سے بشر بن محمد نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ بن مبارک نے خبر دی ، کھا ھم کو یونس نے خبر دی ، انھیں زھری نے ، انھیں سالم نے خبر دی اور ان سے ابن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ایک شخص تکبر کی وجھ سے اپنا تھبند زمین سے گھسیٹتا ھوا جا رھا تھا کھا سے زمین میں دھنسا دیا اور اب وھ قیامت تک یوں ھی زمین میں دھنستا چلا جائے گا ۔ یونس کے ساتھ اس حدیث کو عبدالرحمٰن بن خالد نے بھی زھری سے روایت کیا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3485
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 692


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ، قَالَ حَدَّثَنِي ابْنُ طَاوُسٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ نَحْنُ الآخِرُونَ السَّابِقُونَ يَوْمَ الْقِيَامَةِ، بَيْدَ كُلُّ أُمَّةٍ أُوتُوا الْكِتَابَ مِنْ قَبْلِنَا وَأُوتِينَا مِنْ بَعْدِهِمْ، فَهَذَا الْيَوْمُ الَّذِي اخْتَلَفُوا، فَغَدًا لِلْيَهُودِ وَبَعْدَ غَدٍ لِلنَّصَارَى ‏"‏‏.‏ ‏"‏عَلَى كُلِّ مُسْلِمٍ فِى كُلِّ سَبْعَةِ أَيَّامٍ يَوْمٌ يَغْسِلُ رَأْسَهُ وَجَسَدَهُ‏"‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "We are the last (to come) but we will be the foremost on the Day of Resurrection, nations were given the Book (i.e. Scripture) before us, and we were given the Holy Book after them. This (i.e. Friday) is the day about which they differed. So the next day (i.e. Saturday) was prescribed for the Jews and the day after it (i.e. Sunday) for the Christians. It is incumbent on every Muslim to wash his head and body on a Day (i.e. Friday) (at least) in every seven days." ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا کھا ھم سے وھیب نے بیان کیا کھا مجھ سے عبداللھ بن طاؤس نے بیان کیا ان سے ان کے والد نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ھم ( دنیا میں ) تمام امتوں کے آخر میں آئے لیکن ( قیامت کے دن ) تمام امتوں سے آگے ھوں گے ۔ صرف اتنا فرق ھے کھ انھیں پھلے کتاب دی گئی اور ھمیں بعد میں ملی اور یھی وھ ( جمعھ کا ) دن ھے جس کے بارے یں لوگوں نے اختلاف کیا ۔ یھودیوں نے تو اسے اس کے دوسرے دن ( ھفتھ کو ) کر لیا اور نصاریٰ نے تیسرے دن ( اتوار کو ) ۔ پس ھر مسلمان کو ھفتے میں ایک دن ( یعنی جمعھ کے دن ) تو اسے جسم اور سر کو دھو لینا لازم ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3486, 3487
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 693


حَدَّثَنَا آدَمُ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ مُرَّةَ، سَمِعْتُ سَعِيدَ بْنَ الْمُسَيَّبِ، قَالَ قَدِمَ مُعَاوِيَةُ بْنُ أَبِي سُفْيَانَ الْمَدِينَةَ آخِرَ قَدْمَةٍ قَدِمَهَا، فَخَطَبَنَا فَأَخْرَجَ كُبَّةً مِنْ شَعَرٍ فَقَالَ مَا كُنْتُ أُرَى أَنَّ أَحَدًا يَفْعَلُ هَذَا غَيْرَ الْيَهُودِ، وَإِنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم سَمَّاهُ الزُّورَ ـ يَعْنِي الْوِصَالَ فِي الشَّعَرِ‏.‏ تَابَعَهُ غُنْدَرٌ عَنْ شُعْبَةَ‏.‏

Narrated Sa`id bin Al-Musaiyab: When Muawiya bin Abu Sufyan came to Medina for the last time, he delivered a sermon before us. He took out a tuft of hair and said, "I never thought that someone other than the Jews would do such a thing (i.e. use false hair). The Prophet (PBUH) named such a practice, 'Az-Zur' (i.e. falsehood)," meaning the use of false hair. ھم سے آدم بن ابی ایاس نے بیان کیا ، کھا ھم سے شعبھ نے بیان کیا ان سے عمرو بن مرھ نے کھا کھ میں نے سعید بن مسیب سے سنا آپ نے بیان کیا کھ معاویھ بن ابی سفیان رضی اللھ عنھ نے مدینھ کے اپنے آخری سفر میں ھمیں خطاب فرمایا اور ( خطبھ کے دوران ) آپ نے بالوں کا ایک گچھا نکالا اور فرمایا ، میں سمجھتا ھوں کھ یھودیوں کے سوا اور کوئی اس طرح نھ کرتا ھو گا اور نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے اس طرح بال سنوارنے کا نام الزور ( فریب و جھوٹ ) رکھا ھے ۔ آپ کی مراد وصال فی الشعر سے تھی ۔ یعنی بالوں میں جوڑ لگانے سے تھی ( جیسے اکثر عورتیں مصنوعی بالوں میں جوڑ کیا کرتی ھیں ) آدم کے ساتھ اس حدیث کو غندر نے بھی شعبھ سے روایت کیا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3488
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 694


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْمَلِكِ، عَنْ رِبْعِيِّ بْنِ حِرَاشٍ، قَالَ قَالَ عُقْبَةُ بْنُ عَمْرٍو لِحُذَيْفَةَ أَلاَ تُحَدِّثُنَا مَا سَمِعْتَ مِنْ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ إِنِّي سَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ مَعَ الدَّجَّالِ إِذَا خَرَجَ مَاءً وَنَارًا، فَأَمَّا الَّذِي يَرَى النَّاسُ أَنَّهَا النَّارُ فَمَاءٌ بَارِدٌ، وَأَمَّا الَّذِي يَرَى النَّاسُ أَنَّهُ مَاءٌ بَارِدٌ فَنَارٌ تُحْرِقُ، فَمَنْ أَدْرَكَ مِنْكُمْ فَلْيَقَعْ فِي الَّذِي يَرَى أَنَّهَا نَارٌ، فَإِنَّهُ عَذْبٌ بَارِدٌ ‏"‏‏.‏ قَالَ حُذَيْفَةُ وَسَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ رَجُلاً كَانَ فِيمَنْ كَانَ قَبْلَكُمْ أَتَاهُ الْمَلَكُ لِيَقْبِضَ رُوحَهُ فَقِيلَ لَهُ هَلْ عَمِلْتَ مِنْ خَيْرٍ قَالَ مَا أَعْلَمُ، قِيلَ لَهُ انْظُرْ‏.‏ قَالَ مَا أَعْلَمُ شَيْئًا غَيْرَ أَنِّي كُنْتُ أُبَايِعُ النَّاسَ فِي الدُّنْيَا وَأُجَازِيهِمْ، فَأُنْظِرُ الْمُوسِرَ، وَأَتَجَاوَزُ عَنِ الْمُعْسِرِ‏.‏ فَأَدْخَلَهُ اللَّهُ الْجَنَّةَ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ وَسَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ رَجُلاً حَضَرَهُ الْمَوْتُ، فَلَمَّا يَئِسَ مِنَ الْحَيَاةِ أَوْصَى أَهْلَهُ إِذَا أَنَا مُتُّ فَاجْمَعُوا لِي حَطَبًا كَثِيرًا وَأَوْقِدُوا فِيهِ نَارًا حَتَّى إِذَا أَكَلَتْ لَحْمِي، وَخَلَصَتْ إِلَى عَظْمِي، فَامْتَحَشْتُ، فَخُذُوهَا فَاطْحَنُوهَا، ثُمَّ انْظُرُوا يَوْمًا رَاحًا فَاذْرُوهُ فِي الْيَمِّ‏.‏ فَفَعَلُوا، فَجَمَعَهُ فَقَالَ لَهُ لِمَ فَعَلْتَ ذَلِكَ قَالَ مِنْ خَشْيَتِكَ‏.‏ فَغَفَرَ اللَّهُ لَهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ عُقْبَةُ بْنُ عَمْرٍو، وَأَنَا سَمِعْتُهُ يَقُولُ ذَاكَ، وَكَانَ نَبَّاشًا‏.‏

Narrated Rabi bin Hirash: `Uqba bin `Amr said to Hudhaifa, "Won't you relate to us of what you have heard from Allah's Apostle ?" He said, "I heard him saying, "When Al-Dajjal appears, he will have fire and water along with him. What the people will consider as cold water, will be fire that will burn (things). So, if anyone of you comes across this, he should fall in the thing which will appear to him as fire, for in reality, it will be fresh cold water." Hudhaifa added, "I also heard him saying, 'From among the people preceding your generation, there was a man whom the angel of death visited to capture his soul. (So his soul was captured) and he was asked if he had done any good deed.' He replied, 'I don't remember any good deed.' He was asked to think it over. He said, 'I do not remember, except that I used to trade with the people in the world and I used to give a respite to the rich and forgive the poor (among my debtors). So Allah made him enter Paradise." Hudhaifa further said, "I also heard him saying, 'Once there was a man on his death-bed, who, losing every hope of surviving said to his family: When I die, gather for me a large heap of wood and make a fire (to burn me). When the fire eats my meat and reaches my bones, and when the bones burn, take and crush them into powder and wait for a windy day to throw it (i.e. the powder) over the sea. They did so, but Allah collected his particles and asked him: Why did you do so? He replied: For fear of You. So Allah forgave him." `Uqba bin `Amr said, "I heard him saying that the Israeli used to dig the grave of the dead (to steal their shrouds). ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے ابوعوانھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالملک نے بیان کیا ، ان سے ربعی بن حراش نے بیان کیا کھ حضرت عقبھ بن عمرو رضی اللھ عنھ نے حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ سے کھا ، کیا آپ وھ حدیث ھم سے نھیں بیان کریں گے جو آپ نے رسول اللھ سے سنی تھی ؟ انھوں نے کھا کھ میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا تھا کھ جب دجال نکلے گا تو اس کے ساتھ آگ اور پانی دونوں ھوں گے لیکن لوگوں کو جو آگ دکھائی دے گی وھ ٹھنڈا پانی ھو گا اور لوگوں کو جو ٹھنڈا پانی دکھائی دے گا تو وھ جلانے والی آگ ھو گی ۔ اس لیے تم میں سے جو کوئی اس کے زمانے میں ھو تو اسے اس میں گرنا چاھئے جو آگ ھو گی کیونکھ وھی انتھائی شیریں اور ٹھنڈا پانی ھو گا ۔ حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ نے فرمایا کھ میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا تھا کھ پھلے زمانے میں ایک شخص کے پاس ملک الموت ان کی روح قبض کرنے آئے تو ان سے پوچھا گیا کوئی اپنی نیکی تمھیں یاد ھے ؟ انھوں نے کھا کھ مجھے تو یاد نھیں پڑتی ، ان سے دوبارھ کھا گیا کھ یاد کرو ! انھوں نے کھا کھ مجھے کوئی اپنی نیکی یاد نھیں ، سوا اس کے کھ میں دنیا میں لوگوں کے ساتھ خریدوفروخت کیا کرتا تھا اور لین دین کیا کرتا تھا ، جو لوگ خوشحال ھوتے انھیں تو میں ( اپنا قرض وصول کرتے وقت ) مھلت دیا کرتا تھا اور تنگ ھاتھ والوں کو معاف کر دیا کرتا تھا ۔ اللھ تعالیٰ نے انھیں اسی پر جنت میں داخل کیا ۔ اور حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا کھ ایک شخص کی موت کا جب وقت آ گیا اور وھ اپنی زندگی سے بالکل مایوس ھو گیا تو اس نے اپنے گھر والوں کو وصیت کی کھ جب میری موت ھو جائے تو میرے لیے بھت ساری لکڑیاں جمع کرنا اور ان میں آگ لگا دینا ۔ جب آگ میرے گوشت کو جلا چکے اور آخری ھڈی کو بھی جلا دے تو ان جلی ھوئی ھڈیوں کو پیس ڈالنا اور کسی تند ھوا والے دن کا انتظار کرنا اور ( ایسے کسی دن ) میری راکھ کو دریا میں بھا دینا ۔ اس کے گھر والوں نے ایسا ھی کیا ۔ لیکن اللھ تعالیٰ نے اس کی راکھ کو جمع کیا اور اس سے پوچھا ایسا تو نے کیوں کروایا تھا ؟ اس نے جواب دیا کھ تیرے ھی خوف سے اے اﷲ ! اللھ تعالیٰ نے اسی وجھ سے اس کی مغفرت فرما دی ۔ حضرت عقبھ بن عمرو رضی اللھ عنھ نے کھا کھ میں نے آپ کو یھ فرماتے سنا تھا کھ یھ شخص کفن چور تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3450, 3451
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 659


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْمَلِكِ، عَنْ رِبْعِيِّ بْنِ حِرَاشٍ، قَالَ قَالَ عُقْبَةُ بْنُ عَمْرٍو لِحُذَيْفَةَ أَلاَ تُحَدِّثُنَا مَا سَمِعْتَ مِنْ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ إِنِّي سَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ مَعَ الدَّجَّالِ إِذَا خَرَجَ مَاءً وَنَارًا، فَأَمَّا الَّذِي يَرَى النَّاسُ أَنَّهَا النَّارُ فَمَاءٌ بَارِدٌ، وَأَمَّا الَّذِي يَرَى النَّاسُ أَنَّهُ مَاءٌ بَارِدٌ فَنَارٌ تُحْرِقُ، فَمَنْ أَدْرَكَ مِنْكُمْ فَلْيَقَعْ فِي الَّذِي يَرَى أَنَّهَا نَارٌ، فَإِنَّهُ عَذْبٌ بَارِدٌ ‏"‏‏.‏ قَالَ حُذَيْفَةُ وَسَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ رَجُلاً كَانَ فِيمَنْ كَانَ قَبْلَكُمْ أَتَاهُ الْمَلَكُ لِيَقْبِضَ رُوحَهُ فَقِيلَ لَهُ هَلْ عَمِلْتَ مِنْ خَيْرٍ قَالَ مَا أَعْلَمُ، قِيلَ لَهُ انْظُرْ‏.‏ قَالَ مَا أَعْلَمُ شَيْئًا غَيْرَ أَنِّي كُنْتُ أُبَايِعُ النَّاسَ فِي الدُّنْيَا وَأُجَازِيهِمْ، فَأُنْظِرُ الْمُوسِرَ، وَأَتَجَاوَزُ عَنِ الْمُعْسِرِ‏.‏ فَأَدْخَلَهُ اللَّهُ الْجَنَّةَ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ وَسَمِعْتُهُ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّ رَجُلاً حَضَرَهُ الْمَوْتُ، فَلَمَّا يَئِسَ مِنَ الْحَيَاةِ أَوْصَى أَهْلَهُ إِذَا أَنَا مُتُّ فَاجْمَعُوا لِي حَطَبًا كَثِيرًا وَأَوْقِدُوا فِيهِ نَارًا حَتَّى إِذَا أَكَلَتْ لَحْمِي، وَخَلَصَتْ إِلَى عَظْمِي، فَامْتَحَشْتُ، فَخُذُوهَا فَاطْحَنُوهَا، ثُمَّ انْظُرُوا يَوْمًا رَاحًا فَاذْرُوهُ فِي الْيَمِّ‏.‏ فَفَعَلُوا، فَجَمَعَهُ فَقَالَ لَهُ لِمَ فَعَلْتَ ذَلِكَ قَالَ مِنْ خَشْيَتِكَ‏.‏ فَغَفَرَ اللَّهُ لَهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ عُقْبَةُ بْنُ عَمْرٍو، وَأَنَا سَمِعْتُهُ يَقُولُ ذَاكَ، وَكَانَ نَبَّاشًا‏.‏

Narrated Rabi bin Hirash: `Uqba bin `Amr said to Hudhaifa, "Won't you relate to us of what you have heard from Allah's Apostle ?" He said, "I heard him saying, "When Al-Dajjal appears, he will have fire and water along with him. What the people will consider as cold water, will be fire that will burn (things). So, if anyone of you comes across this, he should fall in the thing which will appear to him as fire, for in reality, it will be fresh cold water." Hudhaifa added, "I also heard him saying, 'From among the people preceding your generation, there was a man whom the angel of death visited to capture his soul. (So his soul was captured) and he was asked if he had done any good deed.' He replied, 'I don't remember any good deed.' He was asked to think it over. He said, 'I do not remember, except that I used to trade with the people in the world and I used to give a respite to the rich and forgive the poor (among my debtors). So Allah made him enter Paradise." Hudhaifa further said, "I also heard him saying, 'Once there was a man on his death-bed, who, losing every hope of surviving said to his family: When I die, gather for me a large heap of wood and make a fire (to burn me). When the fire eats my meat and reaches my bones, and when the bones burn, take and crush them into powder and wait for a windy day to throw it (i.e. the powder) over the sea. They did so, but Allah collected his particles and asked him: Why did you do so? He replied: For fear of You. So Allah forgave him." `Uqba bin `Amr said, "I heard him saying that the Israeli used to dig the grave of the dead (to steal their shrouds). ھم سے موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے ابوعوانھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالملک نے بیان کیا ، ان سے ربعی بن حراش نے بیان کیا کھ حضرت عقبھ بن عمرو رضی اللھ عنھ نے حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ سے کھا ، کیا آپ وھ حدیث ھم سے نھیں بیان کریں گے جو آپ نے رسول اللھ سے سنی تھی ؟ انھوں نے کھا کھ میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا تھا کھ جب دجال نکلے گا تو اس کے ساتھ آگ اور پانی دونوں ھوں گے لیکن لوگوں کو جو آگ دکھائی دے گی وھ ٹھنڈا پانی ھو گا اور لوگوں کو جو ٹھنڈا پانی دکھائی دے گا تو وھ جلانے والی آگ ھو گی ۔ اس لیے تم میں سے جو کوئی اس کے زمانے میں ھو تو اسے اس میں گرنا چاھئے جو آگ ھو گی کیونکھ وھی انتھائی شیریں اور ٹھنڈا پانی ھو گا ۔ حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ نے فرمایا کھ میں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا تھا کھ پھلے زمانے میں ایک شخص کے پاس ملک الموت ان کی روح قبض کرنے آئے تو ان سے پوچھا گیا کوئی اپنی نیکی تمھیں یاد ھے ؟ انھوں نے کھا کھ مجھے تو یاد نھیں پڑتی ، ان سے دوبارھ کھا گیا کھ یاد کرو ! انھوں نے کھا کھ مجھے کوئی اپنی نیکی یاد نھیں ، سوا اس کے کھ میں دنیا میں لوگوں کے ساتھ خریدوفروخت کیا کرتا تھا اور لین دین کیا کرتا تھا ، جو لوگ خوشحال ھوتے انھیں تو میں ( اپنا قرض وصول کرتے وقت ) مھلت دیا کرتا تھا اور تنگ ھاتھ والوں کو معاف کر دیا کرتا تھا ۔ اللھ تعالیٰ نے انھیں اسی پر جنت میں داخل کیا ۔ اور حضرت حذیفھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کو یھ فرماتے سنا کھ ایک شخص کی موت کا جب وقت آ گیا اور وھ اپنی زندگی سے بالکل مایوس ھو گیا تو اس نے اپنے گھر والوں کو وصیت کی کھ جب میری موت ھو جائے تو میرے لیے بھت ساری لکڑیاں جمع کرنا اور ان میں آگ لگا دینا ۔ جب آگ میرے گوشت کو جلا چکے اور آخری ھڈی کو بھی جلا دے تو ان جلی ھوئی ھڈیوں کو پیس ڈالنا اور کسی تند ھوا والے دن کا انتظار کرنا اور ( ایسے کسی دن ) میری راکھ کو دریا میں بھا دینا ۔ اس کے گھر والوں نے ایسا ھی کیا ۔ لیکن اللھ تعالیٰ نے اس کی راکھ کو جمع کیا اور اس سے پوچھا ایسا تو نے کیوں کروایا تھا ؟ اس نے جواب دیا کھ تیرے ھی خوف سے اے اﷲ ! اللھ تعالیٰ نے اسی وجھ سے اس کی مغفرت فرما دی ۔ حضرت عقبھ بن عمرو رضی اللھ عنھ نے کھا کھ میں نے آپ کو یھ فرماتے سنا تھا کھ یھ شخص کفن چور تھا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3450, 3451
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 659



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.