Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prophets

كتاب أحاديث الأنبياء

حَدَّثَنَا قَيْسُ بْنُ حَفْصٍ، وَمُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، قَالاَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ بْنُ زِيَادٍ، حَدَّثَنَا أَبُو قُرَّةَ، مُسْلِمُ بْنُ سَالِمٍ الْهَمْدَانِيُّ قَالَ حَدَّثَنِي عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عِيسَى، سَمِعَ عَبْدَ الرَّحْمَنِ بْنَ أَبِي لَيْلَى، قَالَ لَقِيَنِي كَعْبُ بْنُ عُجْرَةَ فَقَالَ أَلاَ أُهْدِي لَكَ هَدِيَّةً سَمِعْتُهَا مِنَ النَّبِيِّ، صلى الله عليه وسلم فَقُلْتُ بَلَى، فَأَهْدِهَا لِي‏.‏ فَقَالَ سَأَلْنَا رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقُلْنَا يَا رَسُولَ اللَّهِ كَيْفَ الصَّلاَةُ عَلَيْكُمْ أَهْلَ الْبَيْتِ فَإِنَّ اللَّهَ قَدْ عَلَّمَنَا كَيْفَ نُسَلِّمُ‏.‏ قَالَ ‏"‏ قُولُوا اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا صَلَّيْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ، اللَّهُمَّ بَارِكْ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا بَارَكْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ، وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdur-Rahman bin Abi Laila: Ka`b bin Ujrah met me and said, "Shall I not give you a present I got from the Prophet?" `Abdur- Rahman said, "Yes, give it to me." I said, "We asked Allah's Messenger (PBUH) saying, 'O Allah's Messenger (PBUH)! How should one (ask Allah to) send blessings on you, the members of the family, for Allah has taught us how to salute you (in the prayer)?' He said, 'Say: O Allah! Send Your Mercy on Muhammad and on the family of Muhammad, as You sent Your Mercy on Abraham and on the family of Abraham, for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious. O Allah! Send Your Blessings on Muhammad and the family of Muhammad, as You sent your Blessings on Abraham and on the family of Abraham, for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious.' " ھم سے قیس بن حفص اور موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا کھ ھم سے عبدالواحد بن زیاد نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے ابو قرھ مسلم بن سالم ھمدانی نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا کھ مجھ سے عبداللھ بن عیسیٰ نے بیان کیا ‘ انھوں نے عبدالرحمٰن بن ابی لیلیٰ سے سنا ‘ انھوں نے بیان کیا کھ ایک مرتبھ کعب بن عجرھ رضی اللھ عنھ سے میری ملاقات ھوئی تو انھوں نے کھا کیوں نھ تمھیں ( حدیث کا ) ایک تحفھ پھنچا دوں جو میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا تھا ۔ میں نے عرض کیا جی ھاں مجھے یھ تحفھ ضرور عنایت فرمائیے ۔ انھوں نے بیان کیا کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے پوچھا تھا یا رسول اللھ ھم آپ پر اور آپ کے اھل بیت پر کس طرح درود بھیجا کریں ؟ اللھ تعالیٰ نے سلام بھیجنے کا طریقھ تو ھمیں خود ھی سکھا دیا ھے ۔ حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ یوں کھا کرو ” اے اللھ ! اپنی رحمت نازل فرما محمد صلی اللھ علیھ وسلم پر اور آل محمد صلی اللھ علیھ وسلم پر جیسا کھ تو نے اپنی رحمت نازل فرمائی ابراھیم پر اور آل ابراھیم علیھ السلام پر ۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بزرگی والا ھے ۔ اے اللھ ! برکت نازل فرما محمد پر اور آل محمد پر جیسا کھ تو نے برکت نازل فرمائی ابراھیم پر اور آل ابراھیم پر ۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بڑی عظمت والا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3370
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 589


حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ، حَدَّثَنَا جَرِيرٌ، عَنْ مَنْصُورٍ، عَنِ الْمِنْهَالِ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يُعَوِّذُ الْحَسَنَ وَالْحُسَيْنَ وَيَقُولُ ‏"‏ إِنَّ أَبَاكُمَا كَانَ يُعَوِّذُ بِهَا إِسْمَاعِيلَ وَإِسْحَاقَ، أَعُوذُ بِكَلِمَاتِ اللَّهِ التَّامَّةِ مِنْ كُلِّ شَيْطَانٍ وَهَامَّةٍ، وَمِنْ كُلِّ عَيْنٍ لاَمَّةٍ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: The Prophet (PBUH) used to seek Refuge with Allah for Al-Hasan and Al-Husain and say: "Your forefather (i.e. Abraham) used to seek Refuge with Allah for Ishmael and Isaac by reciting the following: 'O Allah! I seek Refuge with Your Perfect Words from every devil and from poisonous pests and from every evil, harmful, envious eye.' " ھم سے عثمان بن ابی شیبھ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے جریر نے بیان کیا ‘ ان سے منصور نے ‘ ان سے منھال نے ‘ ان سے سعید بن جبیر نے اور ان سے ابن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم حضرت حسن و حسین رضی اللھ عنھ کے لئے پناھ طلب کیا کرتے تھے اور فرماتے تھے کھ تمھارے بزرگ دادا ( ابراھیم علیھ السلام ) بھی ان کلمات کے ذریعھ اللھ کی پناھ اسماعیل اور اسحاق علیھ السلام کے لئے مانگا کرتے تھے “ میں پناھ مانگتا ھوں اللھ کے پورے پورے کلمات کے ذریعھ ھر ایک شیطان سے اور ھر زھریلے جانور سے اور ھر نقصان پھنچانے والی نظر بد سے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3371
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 590


حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ صَالِحٍ، حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ، قَالَ أَخْبَرَنِي يُونُسُ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، وَسَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ نَحْنُ أَحَقُّ مِنْ إِبْرَاهِيمَ إِذْ قَالَ ‏{‏رَبِّ أَرِنِي كَيْفَ تُحْيِي الْمَوْتَى قَالَ أَوَلَمْ تُؤْمِنْ قَالَ بَلَى وَلَكِنْ لِيَطْمَئِنَّ قَلْبِي‏}‏ وَيَرْحَمُ اللَّهُ لُوطًا، لَقَدْ كَانَ يَأْوِي إِلَى رُكْنٍ شَدِيدٍ وَلَوْ لَبِثْتُ فِي السِّجْنِ طُولَ مَا لَبِثَ يُوسُفُ لأَجَبْتُ الدَّاعِيَ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "We are more liable to be in doubt than Abraham when he said, 'My Lord! Show me how You give life to the dead." . He (i.e. Allah) slid: 'Don't you believe then?' He (i.e. Abraham) said: "Yes, but (I ask) in order to be stronger in Faith." (2.260) And may Allah send His Mercy on Lot! He wished to have a powerful support. If I were to stay in prison for such a long time as Joseph did I would have accepted the offer (of freedom without insisting on having my guiltless less declared). ھم سے احمد بن صالح نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے عبداللھ بن وھب نے بیان کیا ‘ کھا کھ مجھے یونس نے خبر دی ‘ انھیں ابن شھاب نے ‘ انھیں ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن اور سعید بن مسیب نے ‘ انھیں حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ ھم حضرت ابراھیم علیھ السلام کے مقابلے میں شک کرنے کے زیادھ مستحق ھیں جب کھ انھوں نے کھا تھا کھ میرے رب ! مجھے دکھا کھ تو مردوں کو کس طرح زندھ کرتا ھے ۔ اللھ تعالیٰ نے فرمایا ‘ کھا کیا تم ایمان نھیں لائے ‘ انھوں نے عرض کیا کھ کیوں نھیں ‘ لیکن یھ صرف اس لئے تاکھ میرے دل کو اور زیادھ اطمینان ھو جائے اور اللھ لوط علیھ السلام پر رحم کر کھ وھ زبردست رکن ( یعنی اللھ تعالیٰ ) کی پناھ لیتے تھے اور اگر میں اتنی مدت تک قید خانے میں رھتا جتنی مدت تک یوسف علیھ السلام رھے تھے تو میں بلانے والے کے بات ضرور مان لیتا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3372
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 591


حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ، حَدَّثَنَا حَاتِمٌ، عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِي عُبَيْدٍ، عَنْ سَلَمَةَ بْنِ الأَكْوَعِ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ مَرَّ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم عَلَى نَفَرٍ مِنْ أَسْلَمَ يَنْتَضِلُونَ، فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ ارْمُوا بَنِي إِسْمَاعِيلَ، فَإِنَّ أَبَاكُمْ كَانَ رَامِيًا، وَأَنَا مَعَ بَنِي فُلاَنٍ ‏"‏‏.‏ قَالَ فَأَمْسَكَ أَحَدُ الْفَرِيقَيْنِ بِأَيْدِيهِمْ، فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَا لَكُمْ لاَ تَرْمُونَ ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا يَا رَسُولَ اللَّهِ، نَرْمِي وَأَنْتَ مَعَهُمْ قَالَ ‏"‏ ارْمُوا وَأَنَا مَعَكُمْ كُلِّكُمْ ‏"‏‏.‏


Chapter: The Statement of Allah Taa'la: "And mention in the Book Isma'il..."

Narrated Salama bin Al-Akwa`: The Prophet (PBUH) passed by some persons of the tribe of Aslam practicing archery (i.e. the throwing of arrows) Allah's Messenger (PBUH) said, "O offspring of Ishmael! Practice archery (i.e. arrow throwing) as your father was a great archer (i.e. arrow-thrower). I am with (on the side of) the son of so-and-so-." Hearing that, one of the two teams stopped throwing. Allah's Messenger (PBUH) asked them, ' Why are you not throwing?" They replied, "O Allah's Messenger (PBUH)! How shall we throw when you are with the opposite team?" He said, "Throw, for I am with you all." ھم سے قتیبھ بن سعید نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے حاتم بن اسماعیل نے بیان کیا ‘ ان سے یزید بن ابی عبید نے اور ان سے سلمھ بن اکوع رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم قبیلھ اسلم کی ایک جماعت سے گزرے جو تیراندازی میں مقابلھ کر رھی تھی ۔ حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ اے بنو اسماعیل ! تیراندازی کئے جاؤ کیونکھ تمھارے بزرگ دادا بھی تیرانداز تھے اور میں بنو فلاں کے ساتھ ھوں ۔ راوی نے بیان کیا کھ یھ سنتے ھی دوسرے فریق نے تیراندازی بند کر دی ۔ حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ کیا بات ھوئی ‘ تم لوگ تیر کیوں نھیں چلاتے ؟ انھوں نے عرض کیا یا رسول اللھ ! جب آپ فریق مقابل کے ساتھ ھو گئے تو اب ھم کس طرح تیر چلا سکتے ھیں ۔ اس پر حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مقابلھ جاری رکھو ‘ میں تم سب کے ساتھ ھوں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3373
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 592


حَدَّثَنَا إِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، سَمِعَ الْمُعْتَمِرَ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي سَعِيدٍ الْمَقْبُرِيِّ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قِيلَ لِلنَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم مَنْ أَكْرَمُ النَّاسِ قَالَ ‏"‏ أَكْرَمُهُمْ أَتْقَاهُمْ ‏"‏‏.‏ قَالُوا يَا نَبِيَّ اللَّهِ، لَيْسَ عَنْ هَذَا نَسْأَلُكَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَأَكْرَمُ النَّاسِ يُوسُفُ نَبِيُّ اللَّهِ ابْنُ نَبِيِّ اللَّهِ ابْنِ نَبِيِّ اللَّهِ ابْنِ خَلِيلِ اللَّهِ ‏"‏‏.‏ قَالُوا لَيْسَ عَنْ هَذَا نَسْأَلُكَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَعَنْ مَعَادِنِ الْعَرَبِ تَسْأَلُونِي ‏"‏‏.‏ قَالُوا نَعَمْ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَخِيَارُكُمْ فِي الْجَاهِلِيَّةِ خِيَارُكُمْ فِي الإِسْلاَمِ إِذَا فَقِهُوا ‏"‏‏.‏


Chapter: "Or were you witnesses when death approached Ya`qub (Jacob)?"

Narrated Abu Huraira: Some people asked the Prophet: "Who is the most honorable amongst the people?" He replied, "The most honorable among them is the one who is the most Allah-fearing." They said, "O Allah's Prophet! We do not ask about this." He said, "Then the most honorable person is Joseph, Allah's Prophet, the son of Allah's Prophet, the son of Allah's Prophet, the son of Allah's Khalil." They said, "We do not ask about this." He said, "Then you want to ask me about the Arabs' descent?" They said, "Yes." He said, "Those who were best in the pre-lslamic period, are the best in Islam, if they comprehend (the religious knowledge). ھم سے اسحاق بن ابراھیم نے بیان کیا ‘ کھا کھ ھم نے معتمر بن سلیمان سے سنا ‘ انھوں نے عبداللھ عمری سے ‘ انھوں نے سعید بن ابی سعید مقبری سے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے پوچھا گیا ‘ سب سے زیادھ شریف کون ھے ؟ آپ نے فرمایا کھ جو سب سے زیادھ متقی ھو ‘ وھ سب سے زیادھ شریف ھے صحابھ نے عرض کیا یا رسول اللھ ! ھمارے سوال کا مقصد یھ نھیں ھے ۔ آپ نے فرمایا کھ پھر سب سے زیادھ شریف یوسف بنی اللھ بن نبی اللھ ( یعقوب ) بن نبی اللھ ( اسحاق ) بن خلیل اللھ ( ابراھیم علیھ السلام ) تھے صحابھ نے عرض کیا ‘ ھمارے سوال کا مقصد یھ بھی نھیں ھے ۔ آپ نے فرمایا کھ کیا تم لوگ عرب کے شرفاء کے بارے میں پوچھنا چاھتے ھو ؟ صحابھ نے عرض کیا کھ جی ھاں ۔ آپ نے فرمایا کھ پھر جاھلیت میں جو لوگ شریف اور اچھے عادات و اخلاق کے تھے وھ اسلام لانے کے بعد بھی شریف اور اچھے سمجھے جائیں گے جب کھ وھ دین کی سمجھ بھی حاصل کریں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3374
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 593


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏{‏يَغْفِرُ اللَّهُ لِلُوطٍ إِنْ كَانَ لَيَأْوِي إِلَى رُكْنٍ شَدِيدٍ‏}‏‏.‏


Chapter: "And (remember) Lout (Lot)!"

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "May Allah forgive Lot: He wanted to have a powerful support." ھم سے ابو الیمان نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ‘ ان سے ابوالزناد نے بیان کیا ‘ ان سے اعرج نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ‘ اللھ تعالیٰ حضرت لوط علیھ السلام کی مغفرت فرمائے کھ وھ زبردست رکن ( یعنی اللھ ) کی پناھ میں گئے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3375
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 594



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.