Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Tricks

كتاب الحيل

حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنِي نَافِعٌ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم نَهَى عَنِ الشِّغَارِ‏.‏ قُلْتُ لِنَافِعٍ مَا الشِّغَارُ قَالَ يَنْكِحُ ابْنَةَ الرَّجُلِ وَيُنْكِحُهُ ابْنَتَهُ بِغَيْرِ صَدَاقٍ، وَيَنْكِحُ أُخْتَ الرَّجُلِ وَيُنْكِحُهُ أُخْتَهُ بِغَيْرِ صَدَاقٍ‏.‏ وَقَالَ بَعْضُ النَّاسِ إِنِ احْتَالَ حَتَّى تَزَوَّجَ عَلَى الشِّغَارِ، فَهْوَ جَائِزٌ، وَالشَّرْطُ بَاطِلٌ‏.‏ وَقَالَ فِي الْمُتْعَةِ النِّكَاحُ فَاسِدٌ، وَالشَّرْطُ بَاطِلٌ‏.‏ وَقَالَ بَعْضُهُمُ الْمُتْعَةُ وَالشِّغَارُ جَائِزٌ، وَالشَّرْطُ بَاطِلٌ‏.‏


Chapter: Tricks in marriages

Narrated 'Abdullah: Nafi narrated to me that 'Abdullah said that Allah's Messenger (PBUH) forbade the Shighar. I asked Nafi', "What is the Shighar?" He said, "It is to marry the daughter of a man and marry one's daughter to that man (at the same time) without Mahr (in both cases); or to marry the sister of a man and marry one's own sister to that man without Mahr." Some people said, "If one, by a trick, marries on the basis of Shighar, the marriage is valid but its condition is illegal." The same scholar said regarding Al-Mut'a, "The marriage is invalid and its condition is illegal." Some others said, "The Mut'a and the Shighar are permissible but the condition is illegal." ھم سے مسدد نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے یحییٰ بن سعید قطان نے بیان کیا ، ان سے عبیداللھ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ مجھ سے نافع نے بیان کیا ، اور ان سے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے ” شغار “ سے منع فرمایا ۔ میں نے نافع سے پوچھا شغار کیا ھے ؟ انھوں نے کھا یھ کھ کوئی شخص بغیر مھر کسی کی لڑکی سے نکاح کرتا ھے یا اس سے بغیر مھر کے اپنی لڑکی کا نکاح کرتا ھے پس اس کے سوا کوئی مھر مقرر نھ ھو اور بعض لوگوں نے کھا اگر کسی نے حیلھ کر کے نکاح شغار کر لیا تو نکاح کا عقد درست ھو گا اور شرط لغو ھو گی ( اور ھر ایک کو مھر مثل عورت کا ادا کرنا ھو گا ) اور ھاں بعض لوگوں نے متعھ میں کھا ھے کھ وھاں نکاح بھی فاسد ھے اور شرط بھی باطل ھے اور بعض حنفیھ یھ کھتے ھیں کھ متعھ اور شغار دونوں جائز ھوں گے ۔ اور شرط باطل ھو گی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6960
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 90


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ، حَدَّثَنَا الزُّهْرِيُّ، عَنِ الْحَسَنِ، وَعَبْدِ اللَّهِ، ابْنَىْ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِيٍّ عَنْ أَبِيهِمَا، أَنَّ عَلِيًّا ـ رضى الله عنه ـ قِيلَ لَهُ إِنَّ ابْنَ عَبَّاسٍ لاَ يَرَى بِمُتْعَةِ النِّسَاءِ بَأْسًا‏.‏ فَقَالَ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم نَهَى عَنْهَا يَوْمَ خَيْبَرَ، وَعَنْ لُحُومِ الْحُمُرِ الإِنْسِيَّةِ‏.‏ وَقَالَ بَعْضُ النَّاسِ إِنِ احْتَالَ حَتَّى تَمَتَّعَ، فَالنِّكَاحُ فَاسِدٌ‏.‏ وَقَالَ بَعْضُهُمُ النِّكَاحُ جَائِزٌ وَالشَّرْطُ بَاطِلٌ‏.‏

Narrated Muhammad bin `Ali: `Ali was told that Ibn `Abbas did not see any harm in the Mut'a marriage. `Ali said, "Allah's Messenger (PBUH) forbade the Mut'a marriage on the Day of the battle of Khaibar and he forbade the eating of donkey's meat." Some people said, "If one, by a tricky way, marries temporarily, his marriage is illegal." Others said, "The marriage is valid but its condition is illegal." ھم سے مسدد نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے یحییٰ قطان نے بیان کیا ، ان سے عبیداللھ بن عمر نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ ھم سے زھری نے بیان کیا ، ان سے حسن اور عبداللھ بن محمد بن علی نے بیان کیا ، ان سے ان کے والد نے کھ حضرت علی رضی اللھ عنھ سے کھا گیا کھ حضرت عبداللھ بن عباس رضی اللھ عنھما عورتوں کے متعھ میں کوئی حرج نھیں سمجھتے انھوں نے کھا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے خیبر کی لڑائی کے موقع پر متعھ سے اور پالتو گدھوں کے گوشت سے منع کر دیا تھا اور بعض لوگ کھتے ھیں کھ اگر کسی نے حیلھ سے متعھ کر لیا تو نکاح فاسد ھے اور بعض لوگوں نے کھا کھ نکاح جائز ھو جائے گا اور میعاد کی شرط باطل ھو جائے گی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6961
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 91


حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ، حَدَّثَنَا مَالِكٌ، عَنْ أَبِي الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ يُمْنَعُ فَضْلُ الْمَاءِ لِيُمْنَعَ بِهِ فَضْلُ الْكَلإِ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "One should not prevent others from watering their animals with the surplus of his water in order to prevent them from benefiting by the surplus of grass." ھم سے اسماعیل نے بیان کیا ، کھ ھم سے امام مالک نے ، ان سے ابوالزناد نے ، ان سے اعرج نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا بچا ھوا بے ضرورت پانی اس لیے نھ روکاجائے کھ اس کی وجھ سے بچی ھوئی گھاس بھی بچی رھے ( اس میں بھی حیلھ سازی سے روکا گیا ھے ۔ )

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6962
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 92


حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ، عَنْ مَالِكٍ، عَنْ نَافِعٍ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم نَهَى عَنِ النَّجْشِ‏.‏


Chapter: At-Tanajush

Narrated Ibn `Umar: Allah's Messenger (PBUH) forbade the practice of An-Najsh. ھم سے قتیبھ بن سعید نے بیان کیا ، کھا ھم سے امام مالک نے ان سے نافع نے اور ان سے ابن عمر رضی اللھ عنھما نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے بیع نجش سے منع فرمایا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6963
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 93


حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ، حَدَّثَنَا مَالِكٌ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ دِينَارٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ رَجُلاً، ذَكَرَ لِلنَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم أَنَّهُ يُخْدَعُ فِي الْبُيُوعِ فَقَالَ ‏"‏ إِذَا بَايَعْتَ فَقُلْ لاَ خِلاَبَةَ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Umar: A man mentioned to the Prophet (PBUH) that he had always been cheated in bargains. The Prophet (PBUH) said, "Whenever you do bargain, say, 'No cheating.'" ھم سے اسماعیل نے بیان کیا ، کھا ھم سے امام مالک نے بیان کیا ، ان سے عبداللھ بن دینار نے اور ان سے حضرت عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے کھ ایک صحابی نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے عرض کیا کھ وھ خریدوفروخت میں دھوکھ کھاجاتے ھیں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ جب تم کچھ خریدا کرو تو کھھ دیا کرو کھ اس میں کوئی دھوکھ نھ ھونا چاھئے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6964
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 94


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، حَدَّثَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ كَانَ عُرْوَةُ يُحَدِّثُ أَنَّهُ سَأَلَ عَائِشَةَ ‏{‏وَإِنْ خِفْتُمْ أَنْ لاَ تُقْسِطُوا فِي الْيَتَامَى فَانْكِحُوا مَا طَابَ لَكُمْ مِنَ النِّسَاءِ‏}‏‏.‏ قَالَتْ هِيَ الْيَتِيمَةُ فِي حَجْرِ وَلِيِّهَا، فَيَرْغَبُ فِي مَالِهَا وَجَمَالِهَا، فَيُرِيدُ أَنْ يَتَزَوَّجَهَا بِأَدْنَى مِنْ سُنَّةِ نِسَائِهَا، فَنُهُوا عَنْ نِكَاحِهِنَّ، إِلاَّ أَنْ يُقْسِطُوا لَهُنَّ فِي إِكْمَالِ الصَّدَاقِ، ثُمَّ اسْتَفْتَى النَّاسُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم بَعْدُ فَأَنْزَلَ اللَّهُ ‏{‏وَيَسْتَفْتُونَكَ فِي النِّسَاءِ‏}‏ فَذَكَرَ الْحَدِيثَ‏.‏


Chapter: Playing of tricks by the guardian of an attractive orphan-girl

Narrated `Urwa: That he asked `Aisha regarding the Verse: 'If you fear that you shall not be able to deal justly with the orphan girls, marry (other) women of your choice.' (4.3) `Aisha said, "It is about an orphan girl under the custody of her guardian who being attracted by her wealth and beauty wants to marry her with Mahr less than other women of her status. So such guardians were forbidden to marry them unless they treat them justly by giving them their full Mahr. Then the people sought the verdict of Allah's Apostle for such cases, whereupon Allah revealed: 'They ask your instruction concerning women..' (4.127) (The sub-narrator then mentioned the Hadith.) ھم سے ابوالیمان نے بیان کیا ، کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ، ان سے زھری نے کھ عروھ ان سے بیان کرتے تھے کھ حضرت عائشھ رضی اللھ عنھا نے آیت ” اور اگر تمھیں خوف ھو کھ تم یتیموں کے بارے میں انصاف نھیں کر سکو گے تو پھر دوسری عورتوں سے نکاح کرو جو تمھیں پسند ھوں “ آپ نے کھا کھ اس آیت میں ایسی یتیم لڑکی کا ذکر ھے جو اپنے ولی کی پرورش میں ھو اور ولی لڑکی کے مال اور اس کے حسن سے رغبت رکھتا ھو اور چاھتا ھو کھ عورتوں ( کے مھر وغیرھ کے متعلق ) جو سب سے معمولی طریقھ ھے اس کے مطابق اس سے نکاح کرے تو ایسے ولیوں کو ان لڑکیوں کے نکاح سے منع کیا گیا ھے ۔ سوا اس صورت کے کھ ولی مھر کو پورا کرنے میں انصاف سے کام لے ۔ پھر لوگوں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے اس کے بعد مسئلھ پوچھا تو اللھ تعالیٰ نے یھ آیت نازل کی ويستفتونك في النساء ‏ اور لوگ آپ سے عورتوں کے بارے میں مسئلھ پوچھتے ھیں “ اور اس واقعھ کا ذکر کیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 90 Hadith no 6965
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 86 Hadith no 95



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.