Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Wedlock, Marriage (Nikaah)

كتاب النكاح

وَقَالَ لَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَنْبَلٍ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ، عَنْ سُفْيَانَ، حَدَّثَنِي حَبِيبٌ، عَنْ سَعِيدٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، حَرُمَ مِنَ النَّسَبِ سَبْعٌ، وَمِنَ الصِّهْرِ سَبْعٌ‏.‏ ثُمَّ قَرَأَ ‏{‏حُرِّمَتْ عَلَيْكُمْ أُمَّهَاتُكُمْ‏}‏ الآيَةَ‏.‏ وَجَمَعَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ جَعْفَرٍ بَيْنَ ابْنَةِ عَلِيٍّ وَامْرَأَةِ عَلِيٍّ‏.‏ وَقَالَ ابْنُ سِيرِينَ لاَ بَأْسَ بِهِ‏.‏ وَكَرِهَهُ الْحَسَنُ مَرَّةً ثُمَّ قَالَ لاَ بَأْسَ بِهِ‏.‏ وَجَمَعَ الْحَسَنُ بْنُ الْحَسَنِ بْنِ عَلِيٍّ بَيْنَ ابْنَتَىْ عَمٍّ فِي لَيْلَةٍ، وَكَرِهَهُ جَابِرُ بْنُ زَيْدٍ لِلْقَطِيعَةِ، وَلَيْسَ فِيهِ تَحْرِيمٌ لِقَوْلِهِ تَعَالَى ‏{‏وَأُحِلَّ لَكُمْ مَا وَرَاءَ ذَلِكُمْ‏}‏ وَقَالَ عِكْرِمَةُ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ إِذَا زَنَى بِأُخْتِ امْرَأَتِهِ لَمْ تَحْرُمْ عَلَيْهِ امْرَأَتُهُ‏.‏ وَيُرْوَى عَنْ يَحْيَى الْكِنْدِيِّ عَنِ الشَّعْبِيِّ وَأَبِي جَعْفَرٍ، فِيمَنْ يَلْعَبُ بِالصَّبِيِّ إِنْ أَدْخَلَهُ فِيهِ، فَلاَ يَتَزَوَّجَنَّ أُمَّهُ، وَيَحْيَى هَذَا غَيْرُ مَعْرُوفٍ، لَمْ يُتَابَعْ عَلَيْهِ‏.‏ وَقَالَ عِكْرِمَةُ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ إِذَا زَنَى بِهَا لَمْ تَحْرُمْ عَلَيْهِ امْرَأَتُهُ‏.‏ وَيُذْكَرُ عَنْ أَبِي نَصْرٍ أَنَّ ابْنَ عَبَّاسٍ حَرَّمَهُ‏.‏ وَأَبُو نَصْرٍ هَذَا لَمْ يُعْرَفْ بِسَمَاعِهِ مِنِ ابْنِ عَبَّاسٍ‏.‏ وَيُرْوَى عَنْ عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ وَجَابِرِ بْنِ زَيْدٍ وَالْحَسَنِ وَبَعْضِ أَهْلِ الْعِرَاقِ تَحْرُمُ عَلَيْهِ‏.‏ وَقَالَ أَبُو هُرَيْرَةَ لاَ تَحْرُمُ حَتَّى يُلْزِقَ بِالأَرْضِ يَعْنِي يُجَامِعَ‏.‏ وَجَوَّزَهُ ابْنُ الْمُسَيَّبِ وَعُرْوَةُ وَالزُّهْرِيُّ‏.‏ وَقَالَ الزُّهْرِيُّ قَالَ عَلِيٌّ لاَ تَحْرُمُ‏.‏ وَهَذَا مُرْسَلٌ‏.‏

Ibn 'Abbas further said, "Seven types of marriages are unlawful because of blood relations, and seven because of marriage relations." Then Ibn 'Abbas recited the Verse: "Forbidden for you (for marriages) are your mothers..." (4:23). 'Abdullah bin Ja'far married the daughter and wife of 'Ali at the same time (they were step-daughter and mother). Ibn Sirin said, "There is no harm in that." But Al-Hasan Al-Basri disapproved of it at first, but then said that there was no harm in it. Al-Hasan bin Al-Hasan bin 'Ali married two of his cousins in one night. Ja'far bin Zaid disapproved of that because of it would bring hatred (between the two cousins), but it is not unlawful, as Allah said, "Lawful to you are all others [beyond those (mentioned)]. (4:24). Ibn 'Abbas said: "If somebody commits illegal sexual intercourse with his wife's sister, his wife does not become unlawful for him." And narrated Abu Ja'far, "If a person commits homosexuality with a boy, then the mother of that boy is unlawful for him to marry." Narrated Ibn 'Abbas, "If one commits illegal sexual intercourse with his mother in law, then his married relation to his wife does not become unlawful." Abu Nasr reported to have said that Ibn 'Abbas in the above case, regarded his marital relation to his wife unlawful, but Abu Nasr is not known well for hearing Hadith from Ibn 'Abbas. Imran bin Hussain, Jabir b. Zaid, Al-Hasan and some other Iraqi's, are reported to have judged that his marital relations to his wife would be unlawful. In the above case Abu Hurairah said, "The marital relation to one's wife does not become unlawful except if one as had sexual intercourse (with her mother)." Ibn Al-Musaiyab, 'Urwa, and Az-Zuhri allows such person to keep his wife. 'Ali said, "His marital relations to his wife does not become unlawful." اور امام احمد بن حنبل نے مجھ سے کھا کھ ھم سے یحییٰ بن سعید قطان نے بیان کیا ، انھوں نے سفیا ن ثوری سے ، کھا مجھ سے حبیب بن ابی ثابت نے بیان کیا ، انھوں نے سعید بن جبیر سے ، انھوں نے ابن عباس رضی اللھ عنھما سے ، انھوں نے کھا خون کی روسے تم پر سات رشتے حرام ھیں اور شادی کی وجھ سے ( یعنی سسرال کی طرف سے ) سات رشتے بھی ۔ انھوں نے یھ آیت پڑھی ۔ حرمت علیکم امھاتکم آخر تک اور عبداللھ بن جعفر بن ابی طالب نے علی رضی اللھ عنھ کی صاحبزادی زینب اور علی کی بی بی ( لیلٰی بنت مسعود ) دونوں سے نکاح کیا ، ان کو جمع کیا اور ابن سیرین نے کھا اس میں کوئی قباحت نھیں ھے اور امام حسن بصری نے ایک بار تو اسے مکروھ کھا پھر کھنے لگے اس میں کوئی قباحت نھیں ھے اور حسن بن حسن بن علی بن ابی طالب نے اپنے دونوں چاچاؤں ( یعنی محمد بن علی اور عمرو بن علی ) کی بیٹیوں کو ایک ساتھ میں نکاح میں لے لیا اور جابر بن زید تابعی نے اس کو مکروھ جانا ، اس خیال سے کھ بھنوںمیں جلا پانھ پیدا ھو مگر یھ کچھ حرام نھیں ھے کیونکھ اللھ تعالیٰ نے فرمایا کھ ان کے سوا اور سب عورتیں تم کو حلال ھیں اور عکرمھ نے ابن عباس رضی اللھ عنھماسے روایت کیا اگر کسی نے اپنی سالی سے زنا کیا تو اس کی بیوی ( سالی کی بھن ) اس پر حرام نھ ھو گی اور یحییٰ بن قیس کندی سے روایت ھے ، انھوں نے شعبی اور جعفر سے ، دونوں نے کھا اگر کوئی شخص لواطت کرے اور کسی لونڈے کے دخول کر دے تو اب اس کی ماں سے نکاح نھ کرے اور یحییٰ راوی مشھور شخص نھیں ھے اور نھ کسی اور نے اس کے ساتھ ھو کر یھ روایت کی ھے اور عکرمھ نے ابن عباس رضی اللھ عنھما سے روایت کی کھ اگر کسی نے اپنی ساس سے زنا کیا تو اس کی بیوی اس پر حرام نھ ھو گی اور ابو نصر نے ابن عباس رضی اللھ عنھما سے روایت کی کھ حرام ھو جائے گی اور اس راوی ابو نصر کا حال معلوم نھیں ۔ اس نے ابن عباس سے سنا ھے یا نھیں ( لیکن ابوزرعھ نے اسے ثقھ کھا ھے ) اور عمر ان بن حصین اور جابر بن زید اور حسن بصری اور بعض عراق والوں ( امام ثوری اوراما م ابوحنیفھ رحمھ اللھ ) کا یھی قول ھے کھ حرام ھو جائے گی اور ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھا حرام نھ ھو گی جب تک اس کی ماں ( اپنی خوشدامن ) کو زمین سے نھ لگا دے ( یعنی اس سے جماع نھ کرے ) اور سعید بن مسیب اور عروھ اور زھری نے اس کے متعلق کھا ھے کھ اگر کوئی ساس سے زنا کرے تب بھی اس کی بیٹی یعنی زنا کرنیوالے کی بیوی اس پر حرام نھ ھو گی ( اس کو رکھ سکتا ھے اور زھری نے کھا علی رضی اللھ عنھ نے فرمایا اس کی جورو اس پر حرام نھ ھو گی اور یھ روایت منقطع ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5105
Web reference: Sahih Bukhari Volume 1 Book 62 Hadith no 41


حَدَّثَنَا الْحُمَيْدِيُّ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا هِشَامٌ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ زَيْنَبَ، عَنْ أُمِّ حَبِيبَةَ، قَالَتْ قُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ هَلْ لَكَ فِي بِنْتِ أَبِي سُفْيَانَ قَالَ ‏"‏ فَأَفْعَلُ مَاذَا ‏"‏‏.‏ قُلْتُ تَنْكِحُ‏.‏ قَالَ ‏"‏ أَتُحِبِّينَ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ لَسْتُ لَكَ بِمُخْلِيَةٍ، وَأَحَبُّ مَنْ شَرِكَنِي فِيكَ أُخْتِي‏.‏ قَالَ ‏"‏ إِنَّهَا لاَ تَحِلُّ لِي ‏"‏‏.‏ قُلْتُ بَلَغَنِي أَنَّكَ تَخْطُبُ‏.‏ قَالَ ‏"‏ ابْنَةَ أُمِّ سَلَمَةَ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ نَعَمْ‏.‏ قَالَ ‏"‏ لَوْ لَمْ تَكُنْ رَبِيبَتِي مَا حَلَّتْ لِي، أَرْضَعَتْنِي وَأَبَاهَا ثُوَيْبَةُ، فَلاَ تَعْرِضْنَ عَلَىَّ بَنَاتِكُنَّ وَلاَ أَخَوَاتِكُنَّ ‏"‏‏.‏ وَقَالَ اللَّيْثُ حَدَّثَنَا هِشَامٌ دُرَّةُ بِنْتُ أَبِي سَلَمَةَ‏.‏

Narrated Um Habiba: I said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Do you like to have (my sister) the daughter of Abu Sufyan?" The Prophet (PBUH) said, "What shall I do (with her)?" I said, "Marry her." He said, "Do you like that?" I said, "(Yes), for even now I am not your only wife, so I like that my sister should share you with me." He said, "She is not lawful for me (to marry)." I said, "We have heard that you want to marry." He said, "The daughter of Um Salama?" I said, "Yes." He said, "Even if she were not my stepdaughter, she should be unlawful for me to marry, for Thuwaiba suckled me and her father (Abu Salama). So you should neither present your daughters, nor your sisters, to me." ھم سے حمیدی نے بیان کیا ، کھا ھم سے سفیان بن عیینھ نے بیان کیا کھ ھم سے ھشام بن عروھ نے بیان کیا ، ان سے ان کے والد نے اور ان سے زینب بنت ابی سلمھ نے اور ان سے ام حبیبھ نے بیان کیا کھ میں نے عرض کیا یا رسول اللھ ! آپ صلی اللھ علیھ وسلم ابوسفیان کی صاحبزادی ( غرھ یادرھ یاحمنھ ) کو چاھتے ھیں ۔ حضور اکرم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا پھر میں اس کے ساتھ کیا کروں گا ؟ میں نے عرض کیا کھ اس سے آپ نکاح کر لیں ۔ فرمایا کیا تم اسے پسند کروگی ؟ میں نے عرض کیا میں کوئی تنھا تو ھوں نھیں اور میں اپنی بھن کے لئے یھ پسند کرتی ھوں کھ وھ بھی میرے ساتھ آپ کے تعلق میں شریک ھو جائے ۔ اس پر آنحضرت نے فرمایا کھ وھ میرے لئے حلال نھیں ھے میں نے عرض کیا مجھے معلوم ھوا ھے کھ آپ نے ( زینب سے ) نکاح کا پیغام بھیجا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ام سلمھ کی لڑکی کے پاس ؟ میں نے کھا کھ جی ھاں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا واھ واھ اگر وھ میری ربیبھ نھ ھوتی جب بھی وھ میرے لئے حلال نھ ھوتی ۔ مجھے اور اس کے والد ابوسلمھ کو ثویبھ نے دودھ پلایا تھا ۔ دیکھو تم آئندھ میرے نکاح کے لئے اپنی لڑکیوں اور بھنوں کو نھ پیش کیا کرو اور لیث بن سعد نے بھی اس حدیث کو ھشام سے روایت کیا ھے اس میں ابوسلمھ کی بیٹی کا نام درھ مذکور ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5106
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 62 Hadith no 42


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ عُقَيْلٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، أَنَّ عُرْوَةَ بْنَ الزُّبَيْرِ، أَخْبَرَهُ أَنَّ زَيْنَبَ ابْنَةَ أَبِي سَلَمَةَ أَخْبَرَتْهُ أَنَّ أُمَّ حَبِيبَةَ قَالَتْ قُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ انْكِحْ أُخْتِي بِنْتَ أَبِي سُفْيَانَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ وَتُحِبِّينَ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ نَعَمْ، لَسْتُ بِمُخْلِيَةٍ، وَأَحَبُّ مَنْ شَارَكَنِي فِي خَيْرٍ أُخْتِي‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِنَّ ذَلِكَ لاَ يَحِلُّ لِي ‏"‏‏.‏ قُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ فَوَاللَّهِ إِنَّا لَنَتَحَدَّثُ أَنَّكَ تُرِيدُ أَنْ تَنْكِحَ دُرَّةَ بِنْتَ أَبِي سَلَمَةَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ بِنْتَ أُمِّ سَلَمَةَ ‏"‏‏.‏ فَقُلْتُ نَعَمْ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَوَاللَّهِ لَوْ لَمْ تَكُنْ فِي حَجْرِي مَا حَلَّتْ لِي إِنَّهَا لاَبْنَةُ أَخِي مِنَ الرَّضَاعَةِ، أَرْضَعَتْنِي وَأَبَا سَلَمَةَ ثُوَيْبَةُ فَلاَ تَعْرِضْنَ عَلَىَّ بَنَاتِكُنَّ وَلاَ أَخَوَاتِكُنَّ ‏"‏‏.‏


Chapter: "(It is prohibited to have) two sisters in wedlock at the same time..."

Narrated Um Habiba: I said, "O Allah's Messenger (PBUH)! Marry my sister, the daughter of Abu Sufyan." He said, "Do you like that?" I said, "Yes, for even now I am not your only wife; and the most beloved person to share the good with me is my sister." The Prophet (PBUH) said, "But that is not lawful for me (i.e., to be married to two sisters at a time.)" I said, "O Allah's Messenger (PBUH)! By Allah, we have heard that you want to marry Durra, the daughter of Abu Salama." He said, "You mean the daughter of Um Salama?" I said, "Yes." He said, "By Allah ! Even if she were not my stepdaughter, she would not be lawful for me to marry, for she is my foster niece, for Thuwaiba has suckled me and Abu Salama; so you should neither present your daughters, nor your sisters to me." ھم سے عبداللھ بن یوسف تنیسی نے بیان کیا ، کھا ھم سے لیث بن سعد نے بیان کیا ، ان سے عقیل نے ، ان سے ابن شھاب نے ، انھیں عروھ بن زبیر نے خبر دی اور انھیں زینب بنت ابی سلمھ رضی اللھ عنھما نے خبر دی کھ حضرت ام حبیبھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ میں نے عرض کیا یا رسول اللھ ! میری بھن ( غرھ ) بنت ابی سفیان سے آپ نکاح کر لیں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اور تمھیں بھی پسند ھے ؟ میں نے عرض کیا جی ھاں کوئی میں تنھا تو ھوں نھیں اور میری خواھش ھے کھ آپ کی بھلائی میں میرے ساتھ میری بھن بھی شریک ھو جائے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا یھ میرے لئے حلال نھیں ھے ۔ میں نے عرض کیا یا رسول اللھ ! اللھ کی قسم ، اس طرح کی باتیں سننے میں آتی ھیں کھ آپ ابوسلمھ رضی اللھ عنھ کی صاحبزادی درھ سے نکاح کرنا چاھتے ھیں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے دریافت فرمایا ام سلمھ رضی اللھ عنھا کی لڑکی سے ؟ میں نے کھا جی ھاں ۔ فرمایا اللھ کی قسم اگو وھ میری پرورش میں نھ ھوتی جب بھی وھ میرے لئے حلال نھیں تھی کیونکھ وھ میرے رضاعی بھائی کی لڑکی ھے ۔ مجھے اور ابوسلمھ کو ثویبھ نے دودھ پلایا تھا ۔ ( اس لئے وھ میری رضاعی بھتیجی ھو گئی ) تم لوگ میرے نکاح کے لئے اپنی لڑکیوں اور بھنوں کو نھ پیش کیا کرو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5107
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 62 Hadith no 43


حَدَّثَنَا عَبْدَانُ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا عَاصِمٌ، عَنِ الشَّعْبِيِّ، سَمِعَ جَابِرًا، رضى الله عنه قَالَ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم أَنْ تُنْكَحَ الْمَرْأَةُ عَلَى عَمَّتِهَا أَوْ خَالَتِهَا‏.‏ وَقَالَ دَاوُدُ وَابْنُ عَوْنٍ عَنِ الشَّعْبِيِّ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ‏.‏


Chapter: A woman should not marry a man already married to her paternal aunt

Narrated Jabir: Allah's Messenger (PBUH) forbade that a woman should be married to man along with her paternal or maternal aunt. ھم سے عبدالرحمٰن نے بیان کیا ، کھا ھم کو عبداللھ نے خبر دی ، کھا ھم کو عاصم نے خبر دی ، انھیں شعبی نے اور انھوں نے حضرت جابر رضی اللھ عنھ سے سنا ، انھوں نے بیان کیاکھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے کسی ایسی عورت سے نکاح کرنے سے منع کیا تھا جس کی پھوپھی یا خالھ اس کے نکاح میں ھو ۔ اور داؤ د بن عون نے شعبی سے بیان کیا اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5108
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 62 Hadith no 44


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ أَبِي الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، رضى الله عنه أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ يُجْمَعُ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا، وَلاَ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَخَالَتِهَا ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "A woman and her paternal aunt should not be married to the same man; and similarly, a woman and her maternal aunt should not be married to the same man." ھم سے عبداللھ بن یوسف نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم کو امام مالک نے خبر دی ، انھیں ابوالزناد نے ، انھیں اعرج نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیاکھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ، کسی عورت کواس کی پھوپھی یا اس کی خالھ کے ساتھ نکاح میں جمع نھ کیا جائے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5109
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 62 Hadith no 45


حَدَّثَنَا عَبْدَانُ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، قَالَ أَخْبَرَنِي يُونُسُ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ حَدَّثَنِي قَبِيصَةُ بْنُ ذُؤَيْبٍ، أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ، يَقُولُ نَهَى النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم أَنْ تُنْكَحَ الْمَرْأَةُ عَلَى عَمَّتِهَا وَالْمَرْأَةُ وَخَالَتُهَا‏.‏ فَنُرَى خَالَةَ أَبِيهَا بِتِلْكَ الْمَنْزِلَةِ‏.‏ لأَنَّ عُرْوَةَ حَدَّثَنِي عَنْ عَائِشَةَ، قَالَتْ حَرِّمُوا مِنَ الرَّضَاعَةِ مَا يَحْرُمُ مِنَ النَّسَبِ‏.‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) forbade that a woman should be married to a man along with her paternal aunt or with her maternal aunt (at the same time). Az-Zuhri (the sub-narrator) said: There is a similar order for the paternal aunt of the father of one's wife, for 'Urwa told me that `Aisha said, "What is unlawful because of blood relations, is also unlawful because of the corresponding foster suckling relations." Translation Not Available

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 67 Hadith no 5110, 5111
Web reference: Sahih Bukhari Volume 7 Book 62 Hadith no 46



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.