Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Wishes

كتاب التمنى

حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ، عَنِ الْقَاسِمِ بْنِ مُحَمَّدٍ، قَالَ ذَكَرَ ابْنُ عَبَّاسٍ الْمُتَلاَعِنَيْنِ فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ شَدَّادٍ أَهِيَ الَّتِي قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لَوْ كُنْتُ رَاجِمًا امْرَأَةً مِنْ غَيْرِ بَيِّنَةٍ ‏"‏‏.‏ قَالَ لاَ، تِلْكَ امْرَأَةٌ أَعْلَنَتْ‏.‏

Narrated Al-Qasim bin Muhammad: Ibn `Abbas mentioned the case of a couple on whom the judgment of Lian has been passed. `Abdullah bin Shaddad said, "Was that the lady in whose case the Prophet (PBUH) said, "If I were to stone a lady to death without a proof (against her)?' "Ibn `Abbas said, "No! That was concerned with a woman who though being a Muslim used to arouse suspicion by her outright misbehavior." (See Hadith No. 230, Vol.7) ھم سے علی بن عبداللھ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے سفیان نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابوالزناد نے بیان کیا ‘ ان سے قاسم بن محمد نے بیان کیا کھ ابن عباس رضی اللھ عنھما نے دو لعان کرنے والوں کا ذکر کیا تو اس پر عبداللھ بن شداد نے پوچھا ‘ کیا یھی وھ ھیں جن کے متعلق رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تھا کھ ” اگر میں کسی عورت کو بغیر گواھ کے رجم کر سکتا تو اسے کرتا “ ۔ ابن عباس رضی اللھ عنھما نے کھا کھ نھیں وھ ایک عورت تھی جو ( اسلام لانے کے بعد ) کھلے عام ( فحش کام ) کرتی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7238
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 344


حَدَّثَنَا عَلِيٌّ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، قَالَ عَمْرٌو حَدَّثَنَا عَطَاءٌ، قَالَ أَعْتَمَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم بِالْعِشَاءِ فَخَرَجَ عُمَرُ فَقَالَ الصَّلاَةَ يَا رَسُولَ اللَّهِ، رَقَدَ النِّسَاءُ وَالصِّبْيَانُ، فَخَرَجَ وَرَأْسُهُ يَقْطُرُ يَقُولُ ‏"‏ لَوْلاَ أَنْ أَشُقَّ عَلَى أُمَّتِي ـ أَوْ عَلَى النَّاسِ، وَقَالَ سُفْيَانُ أَيْضًا، عَلَى أُمَّتِي ـ لأَمَرْتُهُمْ بِالصَّلاَةِ هَذِهِ السَّاعَةَ ‏"‏‏.‏ قَالَ ابْنُ جُرَيْجٍ عَنْ عَطَاءٍ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ أَخَّرَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم هَذِهِ الصَّلاَةَ فَجَاءَ عُمَرُ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ رَقَدَ النِّسَاءُ وَالْوِلْدَانُ‏.‏ فَخَرَجَ وَهْوَ يَمْسَحُ الْمَاءَ عَنْ شِقِّهِ يَقُولُ ‏"‏ إِنَّهُ لَلْوَقْتُ، لَوْلاَ أَنْ أَشُقَّ عَلَى أُمَّتِي ‏"‏‏.‏ وَقَالَ عَمْرٌو حَدَّثَنَا عَطَاءٌ لَيْسَ فِيهِ ابْنُ عَبَّاسٍ أَمَّا عَمْرٌو فَقَالَ رَأْسُهُ يَقْطُرُ‏.‏ وَقَالَ ابْنُ جُرَيْجٍ يَمْسَحُ الْمَاءَ عَنْ شِقِّهِ‏.‏ وَقَالَ عَمْرٌو لَوْلاَ أَنْ أَشُقَّ عَلَى أُمَّتِي‏.‏ وَقَالَ ابْنُ جُرَيْجٍ إِنَّهُ لَلْوَقْتُ، لَوْلاَ أَنْ أَشُقَّ عَلَى أُمَّتِي‏.‏ وَقَالَ إِبْرَاهِيمُ بْنُ الْمُنْذِرِ حَدَّثَنَا مَعْنٌ، حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ مُسْلِمٍ، عَنْ عَمْرٍو، عَنْ عَطَاءٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏.‏

Narrated 'Ata: One night the Prophet (PBUH) delayed the `Isha' prayer whereupon `Umar went to him and said, "The prayer, O Allah's Messenger (PBUH)! The women and children had slept." The Prophet (PBUH) came out with water dropping from his head, and said, "Were I not afraid that it would be hard for my followers (or for the people), I would order them to pray `Isha prayer at this time." (Various versions of this Hadith are given by the narrators with slight differences in expression but not in content). ھم سے علی بن عبداللھ مدینی نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے سفیان بن عیینھ نے کھ عمر بن دینار نے کھا ‘ ھم سے عطاء بن ابی رباح نے بیان کیا ‘ ایک رات ایسا ھوا آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے عشاء کی نماز میں دیر کی ۔ آخر حضرت عمر رضی اللھ عنھ نکلے اور کھنے لگے یا رسول اللھ ! نماز پڑھے عورتیں اور بچے سونے لگے ۔ اس وقت آپ صلی اللھ علیھ وسلم ( حجرے سے ) بر آمد ھوئے آپ کے سر سے پانی ٹپک رھا تھا ( غسل کر کے باھر تشریف لائے ) فرمانے لگے اگر میری امت پر یا یوں فرمایا لوگوں پر دشوار نھ ھوتا ۔ سفیان بن عیینھ نے یوں کھا میری امت پر دشوار نھ ھوتا تو میں اس وت ( اتنی رات گئی ) ان کو یھ نماز پڑھنے کا حکم دیتا ۔ اور ابن جریج نے ( اسی سند سے سفیان سے ‘ انھوں نے ( ابن جریج سے ) انھوں نے عطاء سے روایت کی ‘ انھوں نے ابن عباس رضی اللھ عنھما سے کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اس نماز ( یعنی عشاء کی نماز میں دیر کی ۔ حضرت عمر رضی اللھ عنھ آئے اور کھنے لگے یا رسول اللھ ! عورتیں بچے سو گئے ۔ یھ سن کر آپ باھر تشریف لائے ‘ اپنے سر کی ایک جانب سے پانی پونچھ رھے تھے ‘ فرما رھے تھے اس نماز کا ( عمدھ ) وقت یھی ھے اگر میری امت پر شاق نھ ھو ۔ عمرو بن دینار نے اس حدیث میں یوں نقل کیا ۔ ھم سے عطاء نے بیان کیا اور ابن عباس رضی اللھ عنھما کا ذکر نھیں کیا لیکن عمرو نے یوں کھا آپ کے سر سے پانی ٹپک رھا تھا ۔ اور ابن جریج کی روایت میں یوں ھے آپ صلی اللھ علیھ وسلم سر کے ایک جانب سے پانی پونچھ رھے تھے ۔ اور عمرو نے کھا آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اگر میری امت پر شاق نھ ھوتا ۔ اور ابن جریج نے کھا آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اگر میری امت پر شاق نھ ھوتا تو اس نماز کا ( افضل ) وقت تو یھی ھے ۔ اور ابراھیم بن المنذر ( امام بخاری کے شیخ ) نے کھا ھم سے معن بن عیسیٰ نے بیان کیا ‘ کھا مجھ سے محمد بن مسلم نے ‘ انھوں نے عمرو بن دینار سے ‘ انھوں نے عطاء بن ابی رباح سے ‘ انھوں نے ابن عباس رضی اللھ عنھما سے ‘ انھوں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے پھر یھی حدیث نقل کی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7239
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 345


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ جَعْفَرِ بْنِ رَبِيعَةَ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، سَمِعْتُ أَبَا هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لَوْلاَ أَنْ أَشُقَّ عَلَى أُمَّتِي لأَمَرْتُهُمْ بِالسِّوَاكِ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "Were I not afraid that it would be hard on my followers, I would order them to use the siwak (as obligatory, for cleaning the teeth). ھم سے یحییٰ بن بکیر نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے لیث بن سعد نے بیان کیا ‘ان سے جعفر بن ربیعھ نے ‘ ان سے عبدالرحمٰن اعرج نے اور انھوں نے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے سنا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اگر میری امت پر شاق نھ ھوتا تو میں ان پر مسواک کرنا واجب قرار دیتا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7240
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 346


حَدَّثَنَا عَيَّاشُ بْنُ الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى، حَدَّثَنَا حُمَيْدٌ، عَنْ ثَابِتٍ، عَنْ أَنَسٍ، رضى الله عنه قَالَ وَاصَلَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم آخِرَ الشَّهْرِ، وَوَاصَلَ أُنَاسٌ، مِنَ النَّاسِ فَبَلَغَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ ‏"‏ لَوْ مُدَّ بِيَ الشَّهْرُ لَوَاصَلْتُ وِصَالاً يَدَعُ الْمُتَعَمِّقُونَ تَعَمُّقَهُمْ، إِنِّي لَسْتُ مِثْلَكُمْ، إِنِّي أَظَلُّ يُطْعِمُنِي رَبِّي وَيَسْقِينِ ‏"‏‏.‏ تَابَعَهُ سُلَيْمَانُ بْنُ مُغِيرَةَ عَنْ ثَابِتٍ عَنْ أَنَسٍ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏.‏

Narrated Anas: The Prophet (PBUH) fasted Al-Wisal on the last days of the month. Some people did the same, and when the news reached the Prophet (PBUH) he said, "If the month had been prolonged for me, then I would have fasted Wisal for such a long time that the most exaggerating ones among you would have given up their exaggeration. I am not like you; my Lord always makes me eat and drink." ھم سے عیاش بن الولید نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے عبد الاعلیٰ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے حمید طویل نے ‘ ان سے ثابت نے اور ان سے انس رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے رمضان کے آخری دنوں میں صوم وصال رکھا تو بعض صحابھ نے بھی صوم وصال رکھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو اس کی اطلاع ملی تو آپ نے فرمایا اگر اس مھینے کے دن اور بڑھ جاتے تو میں اتنے دن متواتر وصال کرتاکھ ھوس کرنیوالے اپنی ھوس چھوڑ دیتے ‘ میں تم لوگوں جیسا نھیں ھوں ۔ میں اس طرح دن گزارتا ھوں کھ میرا رب مجھے کھلاتا پلاتا ھے ۔ اس روایت کی متابعت سلیمان بن مغیرھ نے کی ‘ ان سے ثابت نے ‘ ان سے انس رضی اللھ عنھ نے ‘ ان سے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے ایسا فرمایا جو اوپر مذکور ھوا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7241
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 347


حَدَّثَنَا أَبُو الْيَمَانِ، أَخْبَرَنَا شُعَيْبٌ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، وَقَالَ اللَّيْثُ، حَدَّثَنِي عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ خَالِدٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، أَنَّ سَعِيدَ بْنَ الْمُسَيَّبِ، أَخْبَرَهُ أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ قَالَ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم عَنِ الْوِصَالِ، قَالُوا فَإِنَّكَ تُوَاصِلُ‏.‏ قَالَ ‏"‏ أَيُّكُمْ مِثْلِي، إِنِّي أَبِيتُ يُطْعِمُنِي رَبِّي وَيَسْقِينِ ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا أَبَوْا أَنْ يَنْتَهُوا وَاصَلَ بِهِمْ يَوْمًا ثُمَّ يَوْمًا ثُمَّ رَأَوُا الْهِلاَلَ فَقَالَ ‏"‏ لَوْ تَأَخَّرَ لَزِدْتُكُمْ ‏"‏‏.‏ كَالْمُنَكِّلِ لَهُمْ‏.‏

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) forbade Al-Wisal. The people said (to him), "But you fast Al-`Wisal," He said, "Who among you is like me? When I sleep (at night), my Lord makes me eat and drink. But when the people refused to give up Al-Wisal, he fasted Al-Wisal along with them for two days and then they saw the crescent whereupon the Prophet (PBUH) said, "If the crescent had not appeared I would have fasted for a longer period," as if he intended to punish them herewith. ھم سے ابو الیمان نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو شعیب نے خبر دی ‘ کھا ھم کو زھری نے خبر دی اور لیث نے کھا کھ مجھ سے عبدالرحمٰن بن خالد نے بیان کیا‘ان سے ابن شھاب ( زھری ) نے ‘ انھیں سعید بن مسیب نے خبر دی اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے صوم وصال سے منع کیا تو صحابھ نے عرض کی کھ آپ تو وصال کرتے ھیں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا تم میں کون مجھ جیسا ھے ‘میں تو اس حال میں رات گزراتا ھوں کھ میرا رب مجھے کھلاتا پلاتا ھے لیکن جب لوگ نھ مانے تو آپ نے ایک دن کے ساتھ دوسرا دن ملا کر ( وصال کا ) روزھ رکھا ‘ پھر لوگوں نے ( عیدکا ) چاند دیکھا تو آپ نے فرمایا کھ اگر چاند نھ ھوتا تو میں اور وصال کرتا ۔ گویا آپ نے انھیں تنبیھ کرنے کے لیے ایسا فرمایا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7242
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 348


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا أَبُو الأَحْوَصِ، حَدَّثَنَا أَشْعَثُ، عَنِ الأَسْوَدِ بْنِ يَزِيدَ، عَنْ عَائِشَةَ، قَالَتْ سَأَلْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم عَنِ الْجَدْرِ أَمِنَ الْبَيْتِ هُوَ قَالَ ‏"‏ نَعَمْ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ فَمَا لَهُمْ لَمْ يُدْخِلُوهُ فِي الْبَيْتِ قَالَ ‏"‏ إِنَّ قَوْمَكِ قَصَّرَتْ بِهِمُ النَّفَقَةُ ‏"‏‏.‏ قُلْتُ فَمَا شَأْنُ بَابِهِ مُرْتَفِعًا قَالَ ‏"‏ فَعَلَ ذَاكِ قَوْمُكِ، لِيُدْخِلُوا مَنْ شَاءُوا، وَيَمْنَعُوا مَنْ شَاءُوا، لَوْلاَ أَنَّ قَوْمَكِ حَدِيثٌ عَهْدُهُمْ بِالْجَاهِلِيَّةِ، فَأَخَافُ أَنْ تُنْكِرَ قُلُوبُهُمْ أَنْ أُدْخِلَ الْجَدْرَ فِي الْبَيْتِ، وَأَنْ أُلْصِقَ بَابَهُ فِي الأَرْضِ ‏"‏‏.‏

Narrated `Aisha: I asked the Prophet (PBUH) about the wall (outside the Ka`ba). "Is it regarded as part of the Ka`ba?" He replied, "Yes." I said, "Then why didn't the people include it in the Ka`ba?" He said, "(Because) your people ran short of money." I asked, "Then why is its gate so high?" He replied, ''Your people did so in order to admit to it whom they would and forbid whom they would. Were your people not still close to the period of ignorance, and were I not afraid that their hearts might deny my action, then surely I would include the wall in the Ka`ba and make its gate touch the ground." ھم سے مسدد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابوالاحوص نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے اشعث نے ‘ ان سے اسود بن یزید نے اور ان سے عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ میں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم سے ( خانھ کعبھ کے ) حطیم کے بارے میں پوچھا کھ کیا یھ بھی خانھ کعبھ کا حصھ ھے ؟ فرمایا کھ ھاں ۔ میں نے کھا ‘ پھر کیوں ان لوگوں نے اسے بیت اللھ میں داخل نھیں کیا ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ تمھاری قوم کے پاس خرچ کی کمی ھو گئی تھی ۔ میں نے کھا کھ یھ خانھ کعبھ کا دروازھ اونچائی پر کیوں ھے ؟ فرمایا کھ یھ اس لیے انھوں نے کیا ھے تاکھ جسے چاھیں اندر داخل کریں اور جسے چاھیں روک دیں ۔ اگر تمھاری قوم ( قریش ) کا زمانھ جاھلیت سے قریب نھ ھوتا اور مجھے خوف نھ ھوتا کھ ان کے دلوں میں اس سے انکار پیدا ھو گا تو میں حطیم کو بھی خانھ کعبھ میں شامل کر دیتا اور اس کے دروازے کو زمین کے برابر کر دیتا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 94 Hadith no 7243
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 90 Hadith no 349



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.