Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Limits and Punishments set by Allah (Hudood)

كتاب الحدود

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ الْوَهَّابِ، حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ الْحَارِثِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا أَبُو حَصِينٍ، سَمِعْتُ عُمَيْرَ بْنَ سَعِيدٍ النَّخَعِيَّ، قَالَ سَمِعْتُ عَلِيَّ بْنَ أَبِي طَالِبٍ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ مَا كُنْتُ لأُقِيمَ حَدًّا عَلَى أَحَدٍ فَيَمُوتَ، فَأَجِدَ فِي نَفْسِي، إِلاَّ صَاحِبَ الْخَمْرِ، فَإِنَّهُ لَوْ مَاتَ وَدَيْتُهُ، وَذَلِكَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم لَمْ يَسُنَّهُ‏.‏

Narrated `Ali bin Abi Talib: I would not feel sorry for one who dies because of receiving a legal punishment, except the drunk, for if he should die (when being punished), I would give blood money to his family because no fixed punishment has been ordered by Allah's Messenger (PBUH) for the drunk. ھم سے عبداللھ بن عبدالوھاب نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے خالد بن الحارث نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے سفیان نے بیان کیا ، ان سے ابوحصین نے ، انھوں نے کھا کھ میں نے عمیر بن سعید نخعی سے سنا ، کھا کھ میں نے علی بن ابی طالب رضی اللھ عنھ سے سنا ، انھوں نے کھا کھ میں نھیں پسندکروں گا کھ حد میں کسی کو ایسی سزا دوں کھ وھ مر جائے اور پھر مجھے اس کا رنج ھو ، سوا شرابی کے کھ اگر وھ مر جائے تو میں اس کی دیت ادا کر دوں گا کیونکھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے اس کی کوئی حد مقرر نھیں کی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6778
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 769


حَدَّثَنَا مَكِّيُّ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، عَنِ الْجُعَيْدِ، عَنْ يَزِيدَ بْنِ خُصَيْفَةَ، عَنِ السَّائِبِ بْنِ يَزِيدَ، قَالَ كُنَّا نُؤْتَى بِالشَّارِبِ عَلَى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم وَإِمْرَةِ أَبِي بَكْرٍ وَصَدْرًا مِنْ خِلاَفَةِ عُمَرَ، فَنَقُومُ إِلَيْهِ بِأَيْدِينَا وَنِعَالِنَا وَأَرْدِيَتِنَا، حَتَّى كَانَ آخِرُ إِمْرَةِ عُمَرَ، فَجَلَدَ أَرْبَعِينَ، حَتَّى إِذَا عَتَوْا وَفَسَقُوا جَلَدَ ثَمَانِينَ‏.‏

Narrated As-Sa'ib bin Yazid: We used to strike the drunks with our hands, shoes, clothes (by twisting it into the shape of lashes) during the lifetime of the Prophet, Abu Bakr and the early part of `Umar's caliphate. But during the last period of `Umar's caliphate, he used to give the drunk forty lashes; and when drunks became mischievous and disobedient, he used to scourge them eighty lashes. ھم سے مکی بن ابراھیم نے بیان کیا ، ان سے جعید نے ، ان سے یزید بن خصیفھ نے ، ان سے سائب بن یزید نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم اور ابوبکر رضی اللھ عنھ اور پھر عمر رضی اللھ عنھ کے ابتدائی دور خلافت میں شراب پینے والا ھمارے پاس لایا جاتا تو ھم اپنے ھاتھ ، جوتے اور چادریں لے کر کھڑے ھو جاتے ( اور اسے مارتے ) آخر عمر رضی اللھ عنھ نے اپنے آخری دور خلافت میں شراب پینے والوں کو چالیس کوڑے مارے اور جب ان لوگوں نے مزید سرکشی کی اور فسق و فجور کیا تو ( 80 ) اسی کوڑے مارے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6779
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 770


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ بُكَيْرٍ، حَدَّثَنِي اللَّيْثُ، قَالَ حَدَّثَنِي خَالِدُ بْنُ يَزِيدَ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي هِلاَلٍ، عَنْ زَيْدِ بْنِ أَسْلَمَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عُمَرَ بْنِ الْخَطَّابِ، أَنَّ رَجُلاً، عَلَى عَهْدِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم كَانَ اسْمُهُ عَبْدَ اللَّهِ، وَكَانَ يُلَقَّبُ حِمَارًا، وَكَانَ يُضْحِكُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم، وَكَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم قَدْ جَلَدَهُ فِي الشَّرَابِ، فَأُتِيَ بِهِ يَوْمًا فَأَمَرَ بِهِ فَجُلِدَ، فَقَالَ رَجُلٌ مِنَ الْقَوْمِ اللَّهُمَّ الْعَنْهُ مَا أَكْثَرَ مَا يُؤْتَى بِهِ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تَلْعَنُوهُ، فَوَاللَّهِ مَا عَلِمْتُ أَنَّهُ يُحِبُّ اللَّهَ وَرَسُولَهُ ‏"‏‏.‏


Chapter: Cursing is disliked against the drunkard and he is not regarded as a non-Muslim

Narrated `Umar bin Al-Khattab: During the lifetime of the Prophet (PBUH) there was a man called `Abdullah whose nickname was Donkey, and he used to make Allah's Messenger (PBUH) laugh. The Prophet (PBUH) lashed him because of drinking (alcohol). And one-day he was brought to the Prophet (PBUH) on the same charge and was lashed. On that, a man among the people said, "O Allah, curse him ! How frequently he has been brought (to the Prophet (PBUH) on such a charge)!" The Prophet (PBUH) said, "Do not curse him, for by Allah, I know for he loves Allah and His Apostle." ھم سے یحییٰ بن بکیر نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے لیث نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے خالد بن یزید نے بیان کیا ، ان سے سعید بن ابی ھلال نے ، ان سے زید بن اسلم نے ، ان سے ان کے والد نے اور ان سے عمر بن خطاب رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے زمانھ میں ایک شخص ، جس کا نام عبداللھ تھا اور ” حمار “ ( گدھا ) کے لقب سے پکارے جاتے تھے ، وھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کو ھنساتے تھے اور آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں شراب پینے پر مارا تھا تو انھیں ایک دن لایا گیا اور آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کے لیے حکم دیا اور انھیں ماراگیا ۔ حاضرین میں ایک صاحب نے کھا اللھ اس پر لعنت کرے ! کتنی مرتبھ کھا جا چکا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اس پر لعنت نھ کرو واللھ میں نے اس کے متعلق یھی جانا ھے کھ یھ اللھ اور اس کے رسول سے محبت کرتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6780
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 771


حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ جَعْفَرٍ، حَدَّثَنَا أَنَسُ بْنُ عِيَاضٍ، حَدَّثَنَا ابْنُ الْهَادِ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ إِبْرَاهِيمَ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ أُتِيَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم بِسَكْرَانَ، فَأَمَرَ بِضَرْبِهِ، فَمِنَّا مَنْ يَضْرِبُهُ بِيَدِهِ، وَمِنَّا مَنْ يَضْرِبُهُ بِنَعْلِهِ، وَمِنَّا مَنْ يَضْرِبُهُ بِثَوْبِهِ، فَلَمَّا انْصَرَفَ قَالَ رَجُلٌ مَالَهُ أَخْزَاهُ اللَّهُ‏.‏ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تَكُونُوا عَوْنَ الشَّيْطَانِ عَلَى أَخِيكُمْ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: A drunk was brought to the Prophet (PBUH) and he ordered him to be beaten (lashed). Some of us beat him with our hands, and some with their shoes, and some with their garments (twisted in the form of a lash). When that drunk had left, a man said, "What is wrong with him? May Allah disgrace him!" Allah's Messenger (PBUH) said, "Do not help Satan against your (Muslim) brother." ھم سے علی بن عبداللھ بن جعفر نے بیان کیا ، انھوں نے ھم سے انس بن عیاض نے بیان کیا ، ان سے ابن الھاد نے بیان کیا ، ان سے محمد بن ابراھیم نے ، ان سے ابوسلمھ نے بیان کیا اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس ایک شخص نشھ میں لایا گیا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں مارنے کا حکم دیا ۔ ھم میں بعض نے انھیں ھاتھ سے مارا ، بعض نے جوتے سے مارا اور بعض نے کپڑے سے مارا ۔ جب مارچکے تو ایک شخص نے کھا ، کیا ھو گیا اسے ، اللھ اسے رسوا کرے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اپنے بھائی کے خلاف شیطان کی مدد نھ کرو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6781
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 772


حَدَّثَنِي عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ دَاوُدَ، حَدَّثَنَا فُضَيْلُ بْنُ غَزْوَانَ، عَنْ عِكْرِمَةَ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ يَزْنِي الزَّانِي حِينَ يَزْنِي وَهْوَ مُؤْمِنٌ، وَلاَ يَسْرِقُ حِينَ يَسْرِقُ وَهْوَ مُؤْمِنٌ ‏"‏‏.‏


Chapter: The thief while stealing

Narrated Ibn `Abbas: The Prophet (PBUH) said, "When (a person) an adulterer commits illegal sexual intercourse then he is not a believer at the time he is doing it; and when somebody steals, then he is not a believer at the time he is stealing." ھم سے عمرو بن علی نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے عبداللھ بن داؤد نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے فضیل بن غزوان نے بیان کیا ، ان سے عکرمھ نے اور ان سے حضرت عبداللھ بن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا جب زنا کرنے والا زنا کرتا ھے تو وھ مومن نھیں رھتا اور اسی طرح جب چور چوری کرتا ھے تو وھ مومن نھیں رھتا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6782
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 773


حَدَّثَنَا عُمَرُ بْنُ حَفْصِ بْنِ غِيَاثٍ، حَدَّثَنِي أَبِي، حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا صَالِحٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لَعَنَ اللَّهُ السَّارِقَ، يَسْرِقُ الْبَيْضَةَ فَتُقْطَعُ يَدُهُ، وَيَسْرِقُ الْحَبْلَ فَتُقْطَعُ يَدُهُ ‏"‏‏.‏ قَالَ الأَعْمَشُ كَانُوا يَرَوْنَ أَنَّهُ بَيْضُ الْحَدِيدِ، وَالْحَبْلُ كَانُوا يَرَوْنَ أَنَّهُ مِنْهَا مَا يَسْوَى دَرَاهِمَ‏.‏


Chapter: To curse thieves without mentioning names

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "Allah curses a man who steals an egg and gets his hand cut off, or steals a rope and gets his hands cut off." Al-A`mash said, "People used to interpret the Baida as an iron helmet, and they used to think that the rope may cost a few dirhams." ھم سے عمرو بن حفص بن غیاث نے بیان کیا ، انھوں نے کھا مجھ سے میرے والد نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے اعمش نے بیان کیا ، کھا کھ میں نے ابوصالح سے سنا ، ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اللھ نے چور پر لعنت بھیجی کھ ایک انڈا چراتا ھے اور اس کا ھاتھ کاٹ لیا جاتا ھے ۔ ایک رسی چراتا ھے اس کا ھاتھ کاٹ لیا جاتا ھے ۔ اعمش نے کھا کھ لوگ خیال کرتے تھے کھ انڈے سے مراد لوھے کا انڈا ھے اور رسی سے مراد ایسی رسی سمجھتے تھے جو کئی درھم کی ھو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 86 Hadith no 6783
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 81 Hadith no 774



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.