Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Holding Fast to the Qur'an and Sunnah

كتاب الاعتصام بالكتاب والسنة

حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ حَرْبٍ، حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ أَبِي زَكَرِيَّاءَ الْغَسَّانِيُّ، عَنْ هِشَامٍ، عَنْ عُرْوَةَ، عَنْ عَائِشَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم خَطَبَ النَّاسَ فَحَمِدَ اللَّهَ وَأَثْنَى عَلَيْهِ وَقَالَ ‏"‏ مَا تُشِيرُونَ عَلَىَّ فِي قَوْمٍ يَسُبُّونَ أَهْلِي مَا عَلِمْتُ عَلَيْهِمْ مِنْ سُوءٍ قَطُّ ‏"‏‏.‏ وَعَنْ عُرْوَةَ قَالَ لَمَّا أُخْبِرَتْ عَائِشَةُ بِالأَمْرِ قَالَتْ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَتَأْذَنُ لِي أَنْ أَنْطَلِقَ إِلَى أَهْلِي‏.‏ فَأَذِنَ لَهَا وَأَرْسَلَ مَعَهَا الْغُلاَمَ‏.‏ وَقَالَ رَجُلٌ مِنَ الأَنْصَارِ سُبْحَانَكَ مَا يَكُونُ لَنَا أَنْ نَتَكَلَّمَ بِهَذَا، سُبْحَانَكَ هَذَا بُهْتَانٌ عَظِيمٌ‏.‏

Narrated Aisha: Allah's Messenger (PBUH) addressed the people, and after praising and glorifying Allah, he said, "What do you suggest me regarding those people who are abusing my wife? I have never known anything bad about her." The sub-narrator, `Urwa, said: When `Aisha was told of the slander, she said, "O Allah's Apostle! Will you allow me to go to my parents' home?" He allowed her and sent a slave along with her. An Ansari man said, "Subhanaka! It is not right for us to speak about this. Subhanaka! This is a great lie!" ھم سے محمد بن حرب نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے یحییٰ بن زکریا نے بیان کیا ‘ ان سے ھشام بن عروھ نے ‘ ان سے عروھ اور ان سے عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے لوگوں کو خطاب کیا اور اللھ کی حمد و ثنا کے بعد فرمایا ‘ تم مجھے ان لوگوں کے بارے میں مشورھ دیتے ھو جو میرے اھل خانھ کو بد نام کرتے ھیں حالانکھ ان کے بارے میں مجھے کوئی بری بات کبھی نھیں معلوم ھوئی ۔ عروھ سے روایت ھے ‘ انھوں نے ھم سے بیان کیا کھ عائشھ رضی اللھ عنھا کو جب اس واقعھ کا علم ھوا ( کھ کچھ لوگ انھیں بد نام کر رھے ھیں ) تو انھوں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے کھا یا رسول اللھ ! کیا مجھے آپ اپنے والد کے گھر جانے کی اجازت دیں گے ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں اجازت دی اور ان کے ساتھ غلام کو بھیجا ۔ انصار میں سے ایک صاحب ابوایوب رضی اللھ عنھ نے کھا سبحانک مایکون لنا ان نتکلم بھذا سبحانک ھذا بھتان عظیم تیری ذات پاک ھے اے اللھ ! ھمارے لیے مناسب نھیں کھ ھم اس طرح کی باتیں کریں تیری ذات پاک ھے ‘یھ تو بھت بڑا بھتان ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7370
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 463



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.