Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Prophets

كتاب أحاديث الأنبياء

قَالَ وَقَالَ ابْنُ كَثِيرٍ عَنْ سُفْيَانَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنِ ابْنِ أَبِي نُعْمٍ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ بَعَثَ عَلِيٌّ ـ رضى الله عنه ـ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم بِذُهَيْبَةٍ فَقَسَمَهَا بَيْنَ الأَرْبَعَةِ الأَقْرَعِ بْنِ حَابِسٍ الْحَنْظَلِيِّ ثُمَّ الْمُجَاشِعِيِّ، وَعُيَيْنَةَ بْنِ بَدْرٍ الْفَزَارِيِّ، وَزَيْدٍ الطَّائِيِّ ثُمَّ أَحَدِ بَنِي نَبْهَانَ، وَعَلْقَمَةَ بْنِ عُلاَثَةَ الْعَامِرِيِّ ثُمَّ أَحَدِ بَنِي كِلاَبٍ، فَغَضِبَتْ قُرَيْشٌ وَالأَنْصَارُ، قَالُوا يُعْطِي صَنَادِيدَ أَهْلِ نَجْدٍ وَيَدَعُنَا‏.‏ قَالَ ‏"‏ إِنَّمَا أَتَأَلَّفُهُمْ ‏"‏‏.‏ فَأَقْبَلَ رَجُلٌ غَائِرُ الْعَيْنَيْنِ مُشْرِفُ الْوَجْنَتَيْنِ، نَاتِئُ الْجَبِينِ، كَثُّ اللِّحْيَةِ، مَحْلُوقٌ فَقَالَ اتَّقِ اللَّهَ يَا مُحَمَّدُ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ مَنْ يُطِعِ اللَّهَ إِذَا عَصَيْتُ، أَيَأْمَنُنِي اللَّهُ عَلَى أَهْلِ الأَرْضِ فَلاَ تَأْمَنُونِي ‏"‏‏.‏ فَسَأَلَهُ رَجُلٌ قَتْلَهُ ـ أَحْسِبُهُ خَالِدَ بْنَ الْوَلِيدِ ـ فَمَنَعَهُ، فَلَمَّا وَلَّى قَالَ ‏"‏ إِنَّ مِنْ ضِئْضِئِ هَذَا ـ أَوْ فِي عَقِبِ هَذَا ـ قَوْمٌ يَقْرَءُونَ الْقُرْآنَ، لاَ يُجَاوِزُ حَنَاجِرَهُمْ، يَمْرُقُونَ مِنَ الدِّينِ مُرُوقَ السَّهْمِ مِنَ الرَّمِيَّةِ، يَقْتُلُونَ أَهْلَ الإِسْلاَمِ، وَيَدَعُونَ أَهْلَ الأَوْثَانِ، لَئِنْ أَنَا أَدْرَكْتُهُمْ لأَقْتُلَنَّهُمْ قَتْلَ عَادٍ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Sa`id: `Ali sent a piece of gold to the Prophet (PBUH) who distributed it among four persons: Al-Aqra' bin H`Abis Al-Hanzali from the tribe of Mujashi, 'Uyaina bin Badr Al-Fazari, Zaid at-Ta'i who belonged to (the tribe of) Bani Nahban, and 'Alqama bin Ulatha Al-`Amir who belonged to (the tribe of) Bani Kilab. So the Quraish and the Ansar became angry and said, "He (i.e. the Prophet, ) gives the chief of Najd and does not give us." The Prophet (PBUH) said, "I give them) so as to attract their hearts (to Islam)." Then a man with sunken eyes, prominent checks, a raised forehead, a thick beard and a shaven head, came (in front of the Prophet (PBUH) ) and said, "Be afraid of Allah, O Muhammad!" The Prophet (PBUH) ' said "Who would obey Allah if I disobeyed Him? (Is it fair that) Allah has trusted all the people of the earth to me while, you do not trust me?" Somebody who, I think was Khalid bin Al-Walid, requested the Prophet (PBUH) to let him chop that man's head off, but he prevented him. When the man left, the Prophet (PBUH) said, "Among the off-spring of this man will be some who will recite the Qur'an but the Qur'an will not reach beyond their throats (i.e. they will recite like parrots and will not understand it nor act on it), and they will renegade from the religion as an arrow goes through the game's body. They will kill the Muslims but will not disturb the idolaters. If I should live up to their time' I will kill them as the people of 'Ad were killed (i.e. I will kill all of them)." ( حضرت امام بخاری رحمھ اللھ نے کھا ) کھ ابن کثیر نے بیان کیا ، ان سے سفیان ثوری نے ، ان سے ان کے والد نے ، ان سے ابن ابی نعیم نے اور ان سے حضرت ابو سعید خدری رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ حضرت علی رضی اللھ عنھ نے ( یمن سے ) نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں کچھ سونا بھیجا تو آپ نے اسے چار آدمیوں میں تقسیم کر دیا ، اقرع بن حابس حنظلی ثم المجاشعی ، عیینھ بن بدر فزاری ، زید طائی بنی نبھان والے اور علقمھ بن علاثھ عامری بنو کلاب والے ، اس پر قریش اور انصار کے لوگوں کو غصھ آیا اور کھنے لگے کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے نجد کے بڑوں کو تو دیا لیکن ھمیں نظرانداز کر دیا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ میں صرف ان کے دل ملانے کے لیے انھیں دیتا ھوں ( کیونکھ ابھی حال ھی میں یھ لوگ مسلمان ھوئے ھیں ) پھر ایک شخص سامنے آیا ، اس کی آنکھیں دھنسی ھوئی تھیں ، کلے پھولے ھوئے تھے ، پیشانی بھی اٹھی ھوئی ، ڈاڑھی بھت گھنی تھی اور سر منڈا ھوا تھا ۔ اس نے کھا اے محمد ! اللھ سے ڈرو ( صلی اللھ علیھ وسلم ) آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ، اگر میں ھی اللھ کی نافرمانی کروں گا تو پھر اس کی فرمانبرداری کون کرے گا ؟ اللھ تعالیٰ نے مجھے روئے زمین پر دیانت دار بنا کر بھیجا ھے ۔ کیا تم مجھے امین نھیں سمجھتے ؟ اس شخص کی اس گستاخی پر ایک صحابی نے اس کے قتل کی اجازت چاھی ، میرا خیال ھے کھ یھ حضرت خالد بن ولید تھے ، لیکن آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں اس سے روک دیا ، پھر وھ شخص وھاں سے چلنے لگا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اس شخص کی نسل سے یا ( آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ) اس شخص کے بعد اسی کی قوم سے ایسے لوگ جھوٹے مسلمان پیدا ھوں گے ، جو قرآن کی تلاوت تو کریں گے ، لیکن قرآن مجید ان کے حلق سے نیچے نھیں اترے گا ، دین سے وھ اس طرح نکل جائیں گے جیسے تیر کمان سے نکل جاتاھے ، یھ مسلمانوں کو قتل کریں گے اور بت پرستوں کو چھوڑ دیں گے ، اگر میری زندگی اس وقت تک باقی رھے تو میں ان کو اس طرح قتل کروں گا جیسے قوم عاد کا ( عذاب الٰھی سے ) قتل ھوا تھا کھ ایک بھی باقی نھ بچا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3344
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 558


حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ يَزِيدَ، حَدَّثَنَا إِسْرَائِيلُ، عَنْ أَبِي إِسْحَاقَ، عَنِ الأَسْوَدِ، قَالَ سَمِعْتُ عَبْدَ اللَّهِ، قَالَ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقْرَأُ ‏{‏فَهَلْ مِنْ مُدَّكِرٍ ‏}‏‏.‏

Narrated `Abdullah: I heard the Prophet (PBUH) reciting: "Fahal Min Muddakir." (See Hadith No. 557) ھم سے خالد بن یزید نے بیان کیا ، کھا ھم سے اسرائیل نے بیان کیا ، ان سے ابواسحاق نے ان سے اسود نے کھا کھ میں نے حضرت عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما سے سنا ، وھ بیان کرتے تھے کھ میں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا آپ آیت فھل من مدکر کی تلاوت فرما رھے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3345
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 559


حَدَّثَنَا الْحُمَيْدِيُّ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، حَدَّثَنَا هِشَامُ بْنُ عُرْوَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنَ زَمْعَةَ، قَالَ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم‏.‏ وَذَكَرَ الَّذِي عَقَرَ النَّاقَةَ قَالَ ‏"‏ انْتَدَبَ لَهَا رَجُلٌ ذُو عِزٍّ وَمَنَعَةٍ فِي قُوَّةٍ كَأَبِي زَمْعَةَ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin Zam`a: I heard the Prophet (PBUH) while referring to the person who had cut the legs of the she-camel (of the Prophet (PBUH) Salih), saying, "The man who was appointed for doing this job, was a man of honor and power in his nation like Abu Zam`a." ھم سے حمیدی نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے سفیا ن بن عیینھ نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ھشام بن عروھ نے بیان کیا ‘ ان سے ان کے والد نے اور ان سے عبداللھ بن زمعھ نے بیان کیا کھ میں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ( خطبھ کے دوران ) آپ نے قوم کا ذکر کیا جنھوں نے اونٹنی کو ذبح کر دیا تھا ۔ آپ نے فرمایا کھ ( خدا کی قسم بھیجی ھوئی ) اس ( اونٹنی کو ) ذبح کرنے والا قوم کا ایک بھت ھی باعزت آدمی ( قیدار نامی ) تھا ‘ جیسے ھمارے زمانے میں ابو زمعھ ( اسود بن مطلب ) ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3377
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 560


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مِسْكِينٍ أَبُو الْحَسَنِ، حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ حَسَّانَ بْنِ حَيَّانَ أَبُو زَكَرِيَّاءَ، حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ دِينَارٍ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم لَمَّا نَزَلَ الْحِجْرَ فِي غَزْوَةِ تَبُوكَ أَمَرَهُمْ أَنْ لاَ يَشْرَبُوا مِنْ بِئْرِهَا، وَلاَ يَسْتَقُوا مِنْهَا فَقَالُوا قَدْ عَجَنَّا مِنْهَا، وَاسْتَقَيْنَا‏.‏ فَأَمَرَهُمْ أَنْ يَطْرَحُوا ذَلِكَ الْعَجِينَ وَيُهَرِيقُوا ذَلِكَ الْمَاءَ‏.‏ وَيُرْوَى عَنْ سَبْرَةَ بْنِ مَعْبَدٍ وَأَبِي الشُّمُوسِ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم أَمَرَ بِإِلْقَاءِ الطَّعَامِ‏.‏ وَقَالَ أَبُو ذَرٍّ عَنِ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنِ اعْتَجَنَ بِمَائِهِ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Umar: When Allah's Messenger (PBUH) landed at Al-Hijr during the Ghazwa of Tabuk, he ordered his companions not to drink water from its well or reserve water from it. They said, "We have already kneaded the dough with its water. and also filled our bags with its water.'' On that, the Prophet (PBUH) ordered them to throw away the dough and pour out the water. ھم سے محمد بن مسکین ابوالحسن نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے یحییٰ بن حسان بن حیان ابو زکریا نے بیان کیا ‘ انھوں نے کھا ھم سے سلیمان نے بیان کیا ‘ ان سے عبداللھ بن دینار نے اور ان سے حضرت عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے جب حجر ( ثمود کی بستی ) میں غزوھ تبوک کے لئے جاتے ھوئے پڑاو کیا تو آپ نے صحابھ رضی اللھ عنھم کو حکم فرمایا کھ یھاں کے کنوؤں کا پانی نھ پینا اور نھ اپنے برتنوں میں ساتھ لینا ۔ صحابھ رضوان اللھ علیھم اجمعین نے عرض کیا کھ ھم نے تو اس سے اپنا آٹا بھی گوندھ لیا ھے اور پانی اپنے برتنوں میں بھی رکھ لیا ھے ۔ حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں حکم دیا کھ گندھا ھوا آٹا پھینک دیا جائے اور ابوذر رضی اللھ عنھ نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے نقل کیا ھے کھ جس نے آٹا اس پانی سے گوندھ لیا ھو ( وھ اسے پھینک دے ) ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3378
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 561


حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ الْمُنْذِرِ، حَدَّثَنَا أَنَسُ بْنُ عِيَاضٍ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، عَنْ نَافِعٍ، أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ أَخْبَرَهُ أَنَّ النَّاسَ نَزَلُوا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم أَرْضَ ثَمُودَ الْحِجْرَ، فَاسْتَقَوْا مِنْ بِئْرِهَا، وَاعْتَجَنُوا بِهِ، فَأَمَرَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم أَنْ يُهَرِيقُوا مَا اسْتَقَوْا مِنْ بِئْرِهَا، وَأَنْ يَعْلِفُوا الإِبِلَ الْعَجِينَ، وَأَمَرَهُمْ أَنْ يَسْتَقُوا مِنَ الْبِئْرِ الَّتِي كَانَ تَرِدُهَا النَّاقَةُ‏.‏ تَابَعَهُ أُسَامَةُ عَنْ نَافِعٍ‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Umar: The people landed at the land of Thamud called Al-Hijr along with Allah's Messenger (PBUH) and they took water from its well for drinking and kneading the dough with it as well. (When Allah's Messenger (PBUH) heard about it) he ordered them to pour out the water they had taken from its wells and feed the camels with the dough, and ordered them to take water from the well whence the she-camel (of Prophet Salih) used to drink. ھم سے ابراھیم بن المنذر نے بیان کیا‘انھوں نے کھا ھم سے انس بن عیاض نے بیان کیا ‘ ان سے عبیداللھ نے ‘ ان سے نافع نے اور اور انھیں عبداللھ بن عمر رضی اللھ عنھما نے خبر دی کھ صحابھ نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ ثمود کی بستی حجر میں پڑاؤ کیا تو وھاں کے کنوؤں کا پانی اپنے برتنوں میں بھر لیا اور آٹا بھی اس پانی سے گوندھ لیا ۔ لیکن حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں حکم دیا کھ جو پانی انھوں نے اپنے برتنوں میں بھر لیا ھے اسے انڈیل دیں اور گندھا ھوا آٹا جانوروں کو کھلا دیں ۔ اس کے بجائے حضور صلی اللھ علیھ وسلم نے انھیں یھ حکم دیا کھ اس کنویں سے پانی لیں جس سے صالح علیھ السلام کی اونٹنی پانی پیا کرتی تھی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3379
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 562


حَدَّثَنِي مُحَمَّدٌ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، عَنْ مَعْمَرٍ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، قَالَ أَخْبَرَنِي سَالِمُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، عَنْ أَبِيهِ ـ رضى الله عنهم أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم لَمَّا مَرَّ بِالْحِجْرِ قَالَ ‏"‏ لاَ تَدْخُلُوا مَسَاكِنَ الَّذِينَ ظَلَمُوا إِلاَّ أَنْ تَكُونُوا بَاكِينَ، أَنْ يُصِيبَكُمْ مَا أَصَابَهُمْ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ تَقَنَّعَ بِرِدَائِهِ، وَهْوَ عَلَى الرَّحْلِ‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Umar: When the Prophet (PBUH) passed by (a place called) Al Hijr, he said, "Do not enter the house of those who were unjust to themselves, unless (you enter) weeping, lest you should suffer the same punishment as was inflicted upon them." After that he covered his face with his sheet cloth while he was on the camel-saddle. ھم سے محمد نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو عبداللھ نے خبر دی ‘ انھیں معمر نے ‘ ان سے زھری نے بیان کیا ‘ کھا مجھ کو سالم بن عبداللھ نے خبر دی اور انھیں ان کے والد ( عبداللھ رضی اللھ عنھ ) نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم جب مقام حجر سے گزرے تو فرمایا کھ ان لوگوں کی بستی میں جنھوں نے ظلم کیا تھا نھ داخل ھو ‘ لیکن اس صورت میں کھ تم روتے ھوئے ھو ۔ کھیں ایسا نھ ھو کھ تم پر وھی عذاب آ جائے جو ان پر آیا تھا ۔ پھر آپ نے اپنی چادر چھرھ مبارک پر ڈال لی ۔ آپ اس وقت کجاوے پر تشریف رکھتے تھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 60 Hadith no 3380
Web reference: Sahih Bukhari Volume 4 Book 55 Hadith no 563



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.