Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Virtues of Madinah

كتاب فضائل المدينة

حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا ثَابِتُ بْنُ يَزِيدَ، حَدَّثَنَا عَاصِمٌ أَبُو عَبْدِ الرَّحْمَنِ الأَحْوَلُ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ الْمَدِينَةُ حَرَمٌ، مِنْ كَذَا إِلَى كَذَا، لاَ يُقْطَعُ شَجَرُهَا، وَلاَ يُحْدَثُ فِيهَا حَدَثٌ، مَنْ أَحْدَثَ حَدَثًا فَعَلَيْهِ لَعْنَةُ اللَّهِ وَالْمَلاَئِكَةِ وَالنَّاسِ أَجْمَعِينَ ‏"‏‏.‏


Chapter: Haram (sanctuary) of Al-Madina

Narrated Anas: The Prophet (PBUH) said, "Medina is a sanctuary from that place to that. Its trees should not be cut and no heresy should be innovated nor any sin should be committed in it, and whoever innovates in it an heresy or commits sins (bad deeds), then he will incur the curse of Allah, the angels, and all the people." (See Hadith No. 409, Vol 9). ھم سے ابوالنعمان نے بیان کیا ، ان سے ثابت بن یزید نے بیان کیا ، ان سے ابوعبدالرحمٰن احول عاصم نے بیان کیا ، اور ان سے انس رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مدینھ حرم ھے فلاں جگھ سے فلاں جگھ تک ( یعنی جبل عیر سے ثور تک ) اس حد میں کوئی درخت نھ کاٹا جائے نھ کوئی بدعت کی جائے اور جس نے بھی یھاں کوئی بدعت نکالی اس پر اللھ تعالیٰ اور تمام ملائکھ اور انسانوں کی لعنت ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1867
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 91


حَدَّثَنَا أَبُو مَعْمَرٍ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَارِثِ، عَنْ أَبِي التَّيَّاحِ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ قَدِمَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم الْمَدِينَةَ فَأَمَرَ بِبِنَاءِ الْمَسْجِدِ فَقَالَ ‏"‏ يَا بَنِي النَّجَّارِ ثَامِنُونِي ‏"‏‏.‏ فَقَالُوا لاَ نَطْلُبُ ثَمَنَهُ إِلاَّ إِلَى اللَّهِ‏.‏ فَأَمَرَ بِقُبُورِ الْمُشْرِكِينَ، فَنُبِشَتْ، ثُمَّ بِالْخِرَبِ فَسُوِّيَتْ، وَبِالنَّخْلِ فَقُطِعَ، فَصَفُّوا النَّخْلَ قِبْلَةَ الْمَسْجِدِ‏.‏

Narrated Anas: The Prophet (PBUH) came to Medina and ordered a mosque to be built and said, "O Bani Najjar! Suggest to me the price (of your land)." They said, "We do not want its price except from Allah" (i.e. they wished for a reward from Allah for giving up their land freely). So, the Prophet (PBUH) ordered the graves of the pagans to be dug out and the land to be leveled, and the date-palm trees to be cut down. The cut datepalms were fixed in the direction of the Qibla of the mosque. ھم سے ابومعمر نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبدالوارث نے بیان کیا ، ان سے ابوالتیاح نے اور ان سے انس رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم جب مدینھ ( ھجرت کر کے ) تشریف لائے تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے مسجد کی تعمیر کا حکم دیا ، آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا اے بنو نجار تم ( اپنی اس زمین کی ) مجھ سے قیمت لے لو لیکن انھوں نے عرض کی کھ ھم اس کی قیمت صرف اللھ تعالیٰ سے مانگتے ھیں ۔ پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے مشرکین کی قبروں کے متعلق فرمایا اور وھ اکھاڑی دی گئیں ، ویرانھ کے متعلق حکم دیا اور وھ برابر کر دیا گیا ، کھجور کے درختوں کے متعلق حکم دیا اور وھ کاٹ دیئے گئے اور وھ درخت قبلھ کی طرف بچھا دیئے گئے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1868
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 92


حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنِي أَخِي، عَنْ سُلَيْمَانَ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، عَنْ سَعِيدٍ الْمَقْبُرِيِّ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ حُرِّمَ مَا بَيْنَ لاَبَتَىِ الْمَدِينَةِ عَلَى لِسَانِي ‏"‏‏.‏ قَالَ وَأَتَى النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم بَنِي حَارِثَةَ فَقَالَ ‏"‏ أَرَاكُمْ يَا بَنِي حَارِثَةَ قَدْ خَرَجْتُمْ مِنَ الْحَرَمِ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ الْتَفَتَ، فَقَالَ ‏"‏ بَلْ أَنْتُمْ فِيهِ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "I have made Medina a sanctuary between its two (Harrat) mountains." The Prophet (PBUH) went to the tribe of Bani Haritha and said (to them), "I see that you have gone out of the sanctuary," but looking around, he added, "No, you are inside the sanctuary." ھم سے اسماعیل بن عبداللھ نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے میرے بھائی عبدالحمید نے بیان کیا ، ان سے سلیمان بن بلال نے ، ان سے عبیداللھ نے ، ان سے سعید مقبری نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مدینھ کے دونوں پتھریلے کناروں میں جو زمین ھے وھ میری زبان پر حرم ٹھھرائی گئی ۔ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم بنو حارثھ کے پاس آئے اور فرمایا بنوحارثھ ! میرا خیال ھے کھ تم لوگ حرم سے باھر ھو گئے ھو ، پھر آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے مڑ کر دیکھا اور فرمایا کھ نھیں بلکھ تم لوگ حرم کے اندر ھی ھو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1869
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 93


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنِ الأَعْمَشِ، عَنْ إِبْرَاهِيمَ التَّيْمِيِّ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عَلِيٍّ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ مَا عِنْدَنَا شَىْءٌ إِلاَّ كِتَابُ اللَّهِ، وَهَذِهِ الصَّحِيفَةُ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ الْمَدِينَةُ حَرَمٌ، مَا بَيْنَ عَائِرٍ إِلَى كَذَا، مَنْ أَحْدَثَ فِيهَا حَدَثًا، أَوْ آوَى مُحْدِثًا، فَعَلَيْهِ لَعْنَةُ اللَّهِ وَالْمَلاَئِكَةِ وَالنَّاسِ أَجْمَعِينَ، لاَ يُقْبَلُ مِنْهُ صَرْفٌ وَلاَ عَدْلٌ ‏"‏‏.‏ وَقَالَ ‏"‏ ذِمَّةُ الْمُسْلِمِينَ وَاحِدَةٌ، فَمَنْ أَخْفَرَ مُسْلِمًا فَعَلَيْهِ لَعْنَةُ اللَّهِ وَالْمَلاَئِكَةِ وَالنَّاسِ أَجْمَعِينَ، لاَ يُقْبَلُ مِنْهُ صَرْفٌ وَلاَ عَدْلٌ، وَمَنْ تَوَلَّى قَوْمًا بِغَيْرِ إِذْنِ مَوَالِيهِ، فَعَلَيْهِ لَعْنَةُ اللَّهِ وَالْمَلاَئِكَةِ وَالنَّاسِ أَجْمَعِينَ، لاَ يُقْبَلُ مِنْهُ صَرْفٌ وَلاَ عَدْلٌ ‏"‏‏.‏

Narrated `Ali: We have nothing except the Book of Allah and this written paper from the Prophet (wherein is written:) Medina is a sanctuary from the 'Air Mountain to such and such a place, and whoever innovates in it an heresy or commits a sin, or gives shelter to such an innovator in it will incur the curse of Allah, the angels, and all the people, none of his compulsory or optional good deeds of worship will be accepted. And the asylum (of protection) granted by any Muslim is to be secured (respected) by all the other Muslims; and whoever betrays a Muslim in this respect incurs the curse of Allah, the angels, and all the people, and none of his compulsory or optional good deeds of worship will be accepted, and whoever (freed slave) befriends (take as masters) other than his manumitters without their permission incurs the curse of Allah, the angels, and all the people, and none of his compulsory or optional good deeds of worship will be accepted. ھم سے محمد بن بشار نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے عبدالرحمٰن بن مھدی نے بیان کیا ، ان سے سفیان ثوری نے ، ان سے اعمش نے ، ان سے ان کے والد یزید بن شریک نے اور ان سے علی رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ میرے پاس کتاب اللھ اور نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے اس صحیفھ کے سوا جو نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے حوالھ سے ھے اور کوئی چیز ( شرعی احکام سے متعلق ) لکھی ھوئی صورت میں نھیں ھے ۔ اس صحیفھ میں یھ بھی لکھا ھوا ھے کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا مدینھ عائر پھاڑی سے لے کر فلاں مقام تک حرم ھے ، جس نے اس حد میں کوئی بدعت نکالی یا کسی بدعتی کو پناھ دی تو اس پر اللھ اور تمام ملائکھ اور انسانوں کی لعنت ھے ، نھ اس کی کوئی فرض عبادت مقبول ھے نھ نفل اور آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ تمام مسلمانوں میں سے کسی کا بھی عھد کافی ھے اس لیے اگر کسی مسلمان کی ( دی ھوئی امان میں دوسرے مسلمان نے ) بدعھدی کی تو اس پر اللھ تعالیٰ اور تمام ملائکھ اور انسانوں کی لعنت ھے ۔ نھ اس کی کوئی فرض عبادت مقبول ھے نھ نفل ، اور جو کوئی اپنے مالک کو چھوڑ کر اس کی اجازت کے بغیر کسی دوسرے کو مالک بنائے ، اس پر اللھ اور تمام ملائکھ اور انسانوں کی لعنت ھے ، نھ اس کی کوئی فرض عبادت مقبول ھے نھ نفل ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1870
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 94


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ يَحْيَى بْنِ سَعِيدٍ، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا الْحُبَابِ، سَعِيدَ بْنَ يَسَارٍ يَقُولُ سَمِعْتُ أَبَا هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم‏.‏ ‏"‏ أُمِرْتُ بِقَرْيَةٍ تَأْكُلُ الْقُرَى يَقُولُونَ يَثْرِبُ‏.‏ وَهْىَ الْمَدِينَةُ، تَنْفِي النَّاسَ كَمَا يَنْفِي الْكِيرُ خَبَثَ الْحَدِيدِ ‏"‏‏.‏


Chapter: Superiority of Al-Madina. It expels (evil) persons

Narrated Abu Huraira: Allah's Messenger (PBUH) said, "I was ordered to migrate to a town which will swallow (conquer) other towns and is called Yathrib and that is Medina, and it turns out (bad) persons as a furnace removes the impurities of iron. ھم سے عبداللھ بن یوسف نے بیان کیا ، کھا ھمیں امام مالک رحمھ اللھ نے خبر دی ، انھیں یحییٰ بن سعید نے ، انھوں نے بیان کیا کھ میں نے ابوالحباب سعید بن یسار سے سنا ، انھوں نے کھا کھ میں نے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ سے سنا ، انھوں نے بیان کیا کھ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ مجھے ایک ایسے شھر ( میں ھجرت ) کا حکم ھوا ھے جو دوسرے شھروں کو کھا لے گا ۔ ( یعنی سب کا سردار بنے گا ) منافقین اسے یثرب کھتے ھیں لیکن اس کا نام مدینھ ھے وھ ( برے ) لوگوں کو اس طرح باھر کر دیتا ھے جس طرح بھٹی لوھے کے زنگ کو نکال دیتی ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1871
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 95


حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ مَخْلَدٍ، حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ، قَالَ حَدَّثَنِي عَمْرُو بْنُ يَحْيَى، عَنْ عَبَّاسِ بْنِ سَهْلِ بْنِ سَعْدٍ، عَنْ أَبِي حُمَيْدٍ ـ رضى الله عنه ـ أَقْبَلْنَا مَعَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم مِنْ تَبُوكَ حَتَّى أَشْرَفْنَا عَلَى الْمَدِينَةِ فَقَالَ ‏"‏ هَذِهِ طَابَةُ ‏"‏‏.‏


Chapter: Al-Madina is also called Taba

Narrated Abu Humaid: We came with the Prophet (PBUH) from Tabuk, and when we reached near Medina, the Prophet (PBUH) said, "This is Tabah." ھم سے خالد بن مخلد نے بیان کیا ، کھا کھ ھم سے سلیمان بن بلال نے بیان کیا ، کھا کھ مجھ سے عمرو بن یحییٰ نے بیان کیا ، ان سے عباس بن سھل بن سعد نے اور ان سے ابو حمید ساعدی رضی اللھ عنھ نے یھ بیان کیا کھ ھم غزوھ تبوک سے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کے ساتھ واپس ھوتے ھوئے جب مدینھ کے قریب پھنچے تو آپ نے فرمایا کھ یھ طابھ آ گیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 29 Hadith no 1872
Web reference: Sahih Bukhari Volume 3 Book 30 Hadith no 96



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.