Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Holding Fast to the Qur'an and Sunnah

كتاب الاعتصام بالكتاب والسنة

حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ، حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ، عَنْ يُونُسَ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، أَخْبَرَنِي حُمَيْدٌ، قَالَ سَمِعْتُ مُعَاوِيَةَ بْنَ أَبِي سُفْيَانَ، يَخْطُبُ قَالَ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ مَنْ يُرِدِ اللَّهُ بِهِ خَيْرًا يُفَقِّهْهُ فِي الدِّينِ، وَإِنَّمَا أَنَا قَاسِمٌ وَيُعْطِي اللَّهُ، وَلَنْ يَزَالَ أَمْرُ هَذِهِ الأُمَّةِ مُسْتَقِيمًا حَتَّى تَقُومَ السَّاعَةُ، أَوْ حَتَّى يَأْتِيَ أَمْرُ اللَّهِ ‏"‏‏.‏

Narrated Humaid: I heard Muawiya bin Abi Sufyan delivering a sermon. He said, "I heard the Prophet (PBUH) saying, "If Allah wants to do a favor to somebody, He bestows on him, the gift of understanding the Qur'an and Sunna. I am but a distributor, and Allah is the Giver. The state of this nation will remain good till the Hour is established, or till Allah's Order comes." ھم سے اسماعیل بن ابی اویس نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے عبداللھ بن وھب نے بیان کیا ‘ ان سے یونس نے ‘ ان سے ابن شھاب نے انھیں حمید نے خبر دی ‘ کھا کھ میں نے معاویھ بن ابی سفیان رضی اللھ عنھ سے سنا ‘ وھ خطبھ دے رھے تھے ‘ انھوں نے کھا کھ میں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ اللھ جس کے ساتھ خیر کا ارادھ کرتا ھے اسے دین کی سمجھ عطا فرما دیتا ھے اور میں تو صرف تقسیم کرنے والا ھوں اور دیتا اللھ ھے اور اس امت کا معاملھ ھمیشھ درست رھے گا ‘ یھاں تک کھ قیامت ھو جائے یا ( آپ صلی اللھ علیھ وسلم نے یوں فرمایا کھ ) یھاں تک کھ اللھ کا حکم آ پھنچے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7312
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 415


حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، قَالَ عَمْرٌو سَمِعْتُ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ ـ رضى الله عنهما ـ يَقُولُ لَمَّا نَزَلَ عَلَى رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏{‏قُلْ هُوَ الْقَادِرُ عَلَى أَنْ يَبْعَثَ عَلَيْكُمْ عَذَابًا مِنْ فَوْقِكُمْ‏}‏ قَالَ ‏"‏ أَعُوذُ بِوَجْهِكَ ‏"‏‏.‏ ‏{‏أَوْ مِنْ تَحْتِ أَرْجُلِكُمْ‏}‏ قَالَ ‏"‏ أَعُوذُ بِوَجْهِكَ ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا نَزَلَتْ ‏{‏أَوْ يَلْبِسَكُمْ شِيَعًا وَيُذِيقَ بَعْضَكُمْ بَأْسَ بَعْضٍ‏}‏ قَالَ ‏"‏ هَاتَانِ أَهْوَنُ أَوْ أَيْسَرُ ‏"‏‏.‏


Chapter: “…or to cover you with confusion in party strife…”

Narrated Jabir bin `Abdullah: When the (following) Verse was revealed to Allah's Messenger (PBUH): 'Say: He has power to send torment on you from above,'..(6.65) he said, "O Allah! I seek refuge with Your Face (from that punishment)." And when this was revealed: '..or from beneath your feet.' (6.65) he said, "O Allah! I seek refuge with Your Face (from that)." And when this Verse was revealed: '..or to cover you with confusion in partystrife, and make you to taste the violence of one another,'...(6.65) he said: "These two warnings are easier (than the previous ones). ھم سے علی بن عبداللھ مدینی نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے سفیان نے بیان کیا ‘ ان سے عمر بن دینار نے بیان کیا کھ میں نے جابر بن عبداللھ رضی اللھ عنھ سے سنا ‘ انھوں نے بیان کیا کھ جب رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم پر یھ آیت نازل ھوئی کھ ” کھو کھ وھ اس پر قادر ھے کھ تم پر تمھارے اوپر سے عذاب بھیجے ۔ ” تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے کھا کھ میں تیرے با عظمت و بزرگ منھ کی پناھ مانگتا ھوں ” تمھارے پاؤں کے نیچے سے “ ( عذاب بھیجے ) تو اس پر پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے کھا کھ میں تیرے مبارک منھ کی پناھ مانگتا ھوں ‘ پھر جب یھ آیت نازل ھوئی کھ ” یا تمھیں فرقوں میں تقسیم کر دے اور تم میں سے بعض کو بعض کا خوف چکھائے “ تو آپ نے فرمایا کھ یھ دونوں آسان و سھل ھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7313
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 416


حَدَّثَنَا أَصْبَغُ بْنُ الْفَرَجِ، حَدَّثَنِي ابْنُ وَهْبٍ، عَنْ يُونُسَ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ أَعْرَابِيًّا، أَتَى رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ إِنَّ امْرَأَتِي وَلَدَتْ غُلاَمًا أَسْوَدَ، وَإِنِّي أَنْكَرْتُهُ‏.‏ فَقَالَ لَهُ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ هَلْ لَكَ مِنْ إِبِلٍ ‏"‏‏.‏ قَالَ نَعَمْ‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَمَا أَلْوَانُهَا ‏"‏‏.‏ قَالَ حُمْرٌ‏.‏ قَالَ ‏"‏ هَلْ فِيهَا مِنْ أَوْرَقَ ‏"‏‏.‏ قَالَ إِنَّ فِيهَا لَوُرْقًا‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَأَنَّى تُرَى ذَلِكَ جَاءَهَا ‏"‏‏.‏ قَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ عِرْقٌ نَزَعَهَا‏.‏ قَالَ ‏"‏ وَلَعَلَّ هَذَا عِرْقٌ نَزَعَهُ ‏"‏‏.‏ وَلَمْ يُرَخِّصْ لَهُ فِي الاِنْتِفَاءِ مِنْهُ‏.‏


Chapter: Comparing an ambiguous situation to a clear well-defined one

Narrated Abu Huraira: A bedouin came to Allah's Messenger (PBUH) and said, "My wife has delivered a black boy, and I suspect that he is not my child." Allah's Messenger (PBUH) said to him, "Have you got camels?" The bedouin said, "Yes." The Prophet said, "What color are they?" The bedouin said, "They are red." The Prophet (PBUH) said, "Are any of them Grey?" He said, "There are Grey ones among them." The Prophet (PBUH) said, "Whence do you think this color came to them?" The bedouin said, "O Allah's Messenger (PBUH)! It resulted from hereditary disposition." The Prophet (PBUH) said, "And this (i.e., your child) has inherited his color from his ancestors." The Prophet (PBUH) did not allow him to deny his paternity of the child. ھم سے اصبغ بن الفرج نے بیان کیا ‘ کھا مجھ سے عبداللھ بن وھب نے بیان کیا ‘ ان سے یونس بن یزید نے ‘ ان سے ابن شھاب نے ‘ ان سے ابوسلمھ بن عبدالرحمٰن نے اور ان سے ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ ایک اعرابی نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم کی خدمت میں حاضر ھوا اور کھا کھ میری بیوی کے یھاں لڑکا پیدا ھوا ھے جس کو میں اپنا نھیں سمجھتا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان سے فرمایا کھ تمھارے پاس اونٹ ھیں ؟ انھوں نے کھا کھ ھیں ۔ دریافت کیا کھ ان کے رنگ کیسے ھیں ؟ کھا کھ سرخ ھیں ۔ پوچھا کھ ان میں کوئی خاکی بھی ھے ؟ انھوں نے کھ ھاں ان میں خاکی بھی ھیں ۔ اس پر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے پوچھا کھ پھر کس طرح تم سمجھتے ھو کھ اس رنگ کا پیدا ھوا ؟ انھوں نے کھا کھ یا رسول اللھ ! کسی رگ نے یھ رنگ کھینچ لیا ھو گا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ممکن ھے اس بچے کا رنگ بھی کسی رگ نے کھینچ لیا ھو ؟ اور آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے ان کو بچے کے انکار کرنے کی اجازت نھیں دی ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7314
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 417


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ، عَنْ أَبِي بِشْرٍ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، أَنَّ امْرَأَةً، جَاءَتْ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَتْ إِنَّ أُمِّي نَذَرَتْ أَنْ تَحُجَّ فَمَاتَتْ قَبْلَ أَنْ تَحُجَّ أَفَأَحُجَّ عَنْهَا قَالَ ‏"‏ نَعَمْ حُجِّي عَنْهَا، أَرَأَيْتِ لَوْ كَانَ عَلَى أُمِّكِ دَيْنٌ أَكُنْتِ قَاضِيَتَهُ ‏"‏‏.‏ قَالَتْ نَعَمْ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ فَاقْضُوا الَّذِي لَهُ، فَإِنَّ اللَّهَ أَحَقُّ بِالْوَفَاءِ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: A woman came to the Prophet (PBUH) and said, "My mother vowed to perform the Hajj but she died before performing it. Should I perform the Hajj on her behalf?" He said, "Yes! Perform the Hajj on her behalf. See, if your mother had been in debt, would you have paid her debt?" She said, "Yes." He said, "So you should pay what is for Him as Allah has more right that one should fulfill one's obligations to Him. " ھم سے مسدد نے بیان کیا ‘ کھا ھم سے ابو عوانھ نے بیان کیا ‘ ان سے ابو بشر نے ‘ ان سے سعید بن جبیر نے اور ان سے ابن عباس رضی اللھ عنھما نے کھ ایک خاتون رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کے پاس آئیں اور عرض کیا کھ میری والدھ نے حج کرنے کی نذر مانی تھی اور وھ ( ادائےگی سے پھلے ھی ) وفات پاگئیں ۔ کیا میں ان کی طرف سے حج کر لو ں ؟ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ ھاں ان کی طرف سے حج کر لو ۔ تمھارا کیا خیال ھے ‘ اگر تمھاری والدھ پر قرض ھوتا تو تم اسے پورا کرتیں ؟ انھوں نے کھا کھ ھاں ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ پھر اس قرض کو بھی پورا کر جو اللھ تعالیٰ کا ھے کیونکھ اس قرض کا پورا کرنا زیادھ ضروری ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7315
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 418


حَدَّثَنَا شِهَابُ بْنُ عَبَّادٍ، حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ حُمَيْدٍ، عَنْ إِسْمَاعِيلَ، عَنْ قَيْسٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ، قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ حَسَدَ إِلاَّ فِي اثْنَتَيْنِ رَجُلٌ آتَاهُ اللَّهُ مَالاً فَسُلِّطَ عَلَى هَلَكَتِهِ فِي الْحَقِّ، وَآخَرُ آتَاهُ اللَّهُ حِكْمَةً فَهْوَ يَقْضِي بِهَا وَيُعَلِّمُهَا ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah: Allah's Messenger (PBUH) said, "Do not wish to be like anybody except in two cases: The case of a man whom Allah has given wealth and he spends it in the right way, and that of a man whom Allah has given religious wisdom (i.e., Qur'an and Sunna) and he gives his verdicts according to it and teaches it." (to others i.e., religious knowledge of Qur'an and Sunna (Prophet's Traditions)). " ھم سے شھاب بن عباد نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابراھیم بن حمید نے بیان کیا ، ان سے اسماعیل بن ابی خالد نے ، ان سے قیس بن ابی حازم نے ، ان سے عبداللھ بن مسعود رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا ، رشک دو ھی آدمیوں پر ھو سکتا ھے ، ایک وھ جیسے اللھ نے مال دیا اور اسے ( مال کو ) راھ حق میں لٹانے کی پوری طرح توفیق ملی ھوتی ھے اور دوسراوھ جسے اللھ نے حکمت دی ھے اور اس کے ذریعھ فیصلھ کرتا ھے اور اس کی تعلیم دیتا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7316
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 419


حَدَّثَنَا مُحَمَّدٌ، أَخْبَرَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ، حَدَّثَنَا هِشَامٌ، عَنْ أَبِيهِ، عَنِ الْمُغِيرَةِ بْنِ شُعْبَةَ، قَالَ سَأَلَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ عَنْ إِمْلاَصِ الْمَرْأَةِ ـ هِيَ الَّتِي يُضْرَبُ بَطْنُهَا فَتُلْقِي جَنِينًا ـ فَقَالَ أَيُّكُمْ سَمِعَ مِنَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فِيهِ شَيْئًا فَقُلْتُ أَنَا‏.‏ فَقَالَ مَا هُوَ قُلْتُ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ فِيهِ غُرَّةٌ عَبْدٌ أَوْ أَمَةٌ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ لاَ تَبْرَحْ حَتَّى تَجِيئَنِي بِالْمَخْرَجِ فِيمَا قُلْتَ‏.فَخَرَجْتُ فَوَجَدْتُ مُحَمَّدَ بْنَ مَسْلَمَةَ فَجِئْتُ بِهِ، فَشَهِدَ مَعِي أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ فِيهِ غُرَّةٌ عَبْدٌ أَوْ أَمَةٌ ‏"‏‏.‏ تَابَعَهُ ابْنُ أَبِي الزِّنَادِ عَنْ أَبِيهِ عَنْ عُرْوَةَ عَنِ الْمُغِيرَةِ‏.‏

Narrated Al-Mughira bin Shu`ba: `Umar bin Al-Khattab asked (the people) about the Imlas of a woman, i.e., a woman who has an abortion because of having been beaten on her `Abdomen, saying, "Who among you has heard anything about it from the Prophet?" I said, "I did.'' He said, "What is that?" I said, "I heard the Prophet saying, "Its Diya (blood money) is either a male or a female slave.' " `Umar said, "Do not leave till you present witness in support of your statement." So I went out, and found Muhammad bin Maslama. I brought him, and he bore witness with me that he had heard the Prophet (PBUH) saying, "Its Diya (blood money) is either a male slave or a female slave." ھم سے محمد بن سلام نے بیان کیا ‘ کھا ھم کو ابومعاویھ نے خبر دی ‘ کھا ھم سے ھشام نے ‘ ان سے ان کے والد نے اور ان سے مغیرھ بن شعبھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ عمر بن خطاب رضی اللھ عنھ نے عورت کے املاص کے متعلق ( صحابھ سے ) پوچھا ۔ یھ اس عورت کو کھتے ھیں جس کے پیٹ پر ( جبکھ وھ حاملھ ھو ) مار دیا گیا ھو اور اس کا ناتمام ( ادھورا ) بچھ گر گیا ھو ۔ عمر رضی اللھ عنھ نے پوچھا آپ لوگوں میں سے کسی نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے اس کے بارے میں کوئی حدیث سنی ھے ؟ میں نے کھا کھ میں نے سنی ھے ۔ پوچھا کیا حدیث ھے ؟ میں نے بیان کیا کھ میں نے نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم سے سنا ھے کھ ایسی صورت میں ایک غلام یا باندی تاوان کے طور پر ھے ۔ عمر رضی اللھ عنھ نے کھا کھ تم اب چھوٹ نھیں سکتے یھاں تک کھ تم نے جو حدیث بیان کی ھے اس سلسلے میں نجات کا کوئی ذریعھ ( یعنی کوئی شھادت کھ واقعی آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے یھ حدیث فرمائی تھی ) لاؤ ۔ پھر میں نکلا تو محمد بن مسلمھ رضی اللھ عنھ مل گئے اور میں نے انھیں لایا اور انھوں نے میرے ساتھ گواھیت دی کھ انھوں نے رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم کو فرماتے سنا ھے کھ اس میں ایک غلام یا باندی کی تاوان ھے ۔ ھشام بن عروھ کے ساتھ اس حدیث کو ابن ابی الزناد نے بھی اپنے باپ سے ‘ انھوں نے عروھ سے ‘ انھوں نے مغیرھ سے روایت کیا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 96 Hadith no 7317, 7318
Web reference: Sahih Bukhari Volume 9 Book 92 Hadith no 420



Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.