Search hadith by
Hadith Book
Search Query
Search Language
English Arabic Urdu
Search Type Basic    Case Sensitive
 

Sahih Bukhari

Oaths and Vows

كتاب الأيمان والنذور

حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ الْهَيْثَمِ، أَوْ مُحَمَّدٌ عَنْهُ عَنِ ابْنِ جُرَيْجٍ، قَالَ سَمِعْتُ ابْنَ شِهَابٍ، يَقُولُ حَدَّثَنِي عِيسَى بْنُ طَلْحَةَ، أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَمْرِو بْنِ الْعَاصِ، حَدَّثَهُ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم بَيْنَمَا هُوَ يَخْطُبُ يَوْمَ النَّحْرِ إِذْ قَامَ إِلَيْهِ رَجُلٌ فَقَالَ كُنْتُ أَحْسِبُ يَا رَسُولَ اللَّهِ كَذَا وَكَذَا قَبْلَ كَذَا وَكَذَا‏.‏ ثُمَّ قَامَ آخَرُ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ كُنْتُ أَحْسِبُ كَذَا وَكَذَا لِهَؤُلاَءِ الثَّلاَثِ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ افْعَلْ وَلاَ حَرَجَ ‏"‏ لَهُنَّ كُلِّهِنَّ يَوْمَئِذٍ، فَمَا سُئِلَ يَوْمَئِذٍ عَنْ شَىْءٍ إِلاَّ قَالَ ‏"‏ افْعَلْ وَلاَ حَرَجَ ‏"‏‏.‏

Narrated `Abdullah bin `Amr bin Al-As: While the Prophet (PBUH) was delivering a sermon on the Day of Nahr (i.e., 10th Dhul-Hijja-Day of slaughtering the sacrifice), a man got up saying, "I thought, O Allah's Messenger (PBUH), such-and-such a thing was to be done before such-and-such a thing." Another man got up, saying, "O Allah's Messenger (PBUH)! As regards these three (acts of Hajj), thought so-and-so." The Prophet (PBUH) said, "Do, and there is no harm," concerning all those matters on that day. And so, on that day, whatever question he was asked, he said, "Do it, do it, and there is no harm therein." ھم سے عثمان بن الھیثم نے بیان کیا یا ھم سے محمد بن یحییٰ ذھلی نے عثمان بن الھیثم سے بیان کیا ، ان سے ابن جریج نے کھا کھ میں نے ابن شھاب سے سنا ، کھا کھ مجھ سے عیسیٰ بن طلحھ نے بیان کیا ، ان سے عبداللھ بن عمرو بن العاص نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم ( حجۃ الوداع میں ) قربانی کے دن خطبھ دے رھے تھے کھ ایک صحابی کھڑے ھوئے اور عرض کیا ، یا رسول اللھ ! میں فلاں فلاں ارکان کو فلاںفلاں ارکان سے پھلے خیال کرتا تھا ( اس غلطی سے ان کو آگے پیچھے ادا کیا ) اس کے بعد دوسرے صاحب کھڑے ھوئے اور عرض کیا یا رسول اللھ ! میں فلاں فلاں ارکان حج کے متعلق یونھی خیال کرتا تھا ان کا اشارھ ( حلق ، رمی اور نحر ) کی طرف تھا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا یونھی کر لو ( تقدیم و تاخیر کرنے میں ) آج ان میں سے کسی کام میں کوئی حرج نھیں ھے ۔ چنانچھ اس دن آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم سے جس مسئلھ میں بھی پوچھا گیا تو آپ نے یھی فرمایا کھ کر لو کوئی حرج نھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6665
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 658


حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ يُونُسَ، حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرٍ، عَنْ عَبْدِ الْعَزِيزِ بْنِ رُفَيْعٍ، عَنْ عَطَاءٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ قَالَ رَجُلٌ لِلنَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم زُرْتُ قَبْلَ أَنْ أَرْمِيَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ لاَ حَرَجَ ‏"‏‏.‏ قَالَ آخَرُ حَلَقْتُ قَبْلَ أَنْ أَذْبَحَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ لاَ حَرَجَ ‏"‏‏.‏ قَالَ آخَرُ ذَبَحْتُ قَبْلَ أَنْ أَرْمِيَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ لاَ حَرَجَ ‏"‏‏.‏

Narrated Ibn `Abbas: A man said to the Prophet (while he was delivering a sermon on the Day of Nahr), "I have performed the Tawaf round the Ka`ba before the Rami (throwing pebbles) at the Jamra." The Prophet (PBUH) said, "There is no harm (therein)." Another man said, "I had my head shaved before slaughtering (the sacrifice)." The Prophet (PBUH) said, "There is no harm." A third said, "I have slaughtered (the sacrifice) before the Rami (throwing pebbles) at the Jamra." The Prophet (PBUH) said, "There is no harm." ھم سے احمد یونس نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے ابوبکر بن عیاش نے بیان کیا ، ان سے عبدالعزیز بن رفیع نے بیان کیا ، ان سے عطاء بن ابی رباح نے بیان کیا اور ان سے حضرت عبداللھ بن عباس رضی اللھ عنھما نے بیان کیا کھ ایک صحابی نے نبی کریم صلیاللھ علیھ وسلم سے کھا ، میں نے رمی کرنے سے پھلے طواف زیارت کر لیا ھے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ کوئی حرج نھیں ۔ تیسرے نے کھا کھ میں نے رمی کرنے سے پھلے ھی ذبح کر لیا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کوئی حرج نھیں ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6666
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 659


حَدَّثَنِي إِسْحَاقُ بْنُ مَنْصُورٍ، حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ، حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي سَعِيدٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَجُلاً، دَخَلَ الْمَسْجِدَ يُصَلِّي وَرَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فِي نَاحِيَةِ الْمَسْجِدِ، فَجَاءَ فَسَلَّمَ عَلَيْهِ فَقَالَ لَهُ ‏"‏ ارْجِعْ فَصَلِّ، فَإِنَّكَ لَمْ تُصَلِّ ‏"‏‏.‏ فَرَجَعَ فَصَلَّى، ثُمَّ سَلَّمَ فَقَالَ ‏"‏ وَعَلَيْكَ، ارْجِعْ فَصَلِّ، فَإِنَّكَ لَمْ تُصَلِّ ‏"‏‏.‏ قَالَ فِي الثَّالِثَةِ فَأَعْلِمْنِي‏.‏ قَالَ ‏"‏ إِذَا قُمْتَ إِلَى الصَّلاَةِ فَأَسْبِغِ الْوُضُوءَ، ثُمَّ اسْتَقْبِلِ الْقِبْلَةَ فَكَبِّرْ، وَاقْرَأْ بِمَا تَيَسَّرَ مَعَكَ مِنَ الْقُرْآنِ، ثُمَّ ارْكَعْ حَتَّى تَطْمَئِنَّ رَاكِعًا، ثُمَّ ارْفَعْ رَأْسَكَ حَتَّى تَعْتَدِلَ قَائِمًا، ثُمَّ اسْجُدْ حَتَّى تَطْمَئِنَّ، سَاجِدًا ثُمَّ ارْفَعْ حَتَّى تَسْتَوِيَ وَتَطْمَئِنَّ جَالِسًا، ثُمَّ اسْجُدْ حَتَّى تَطْمَئِنَّ سَاجِدًا، ثُمَّ ارْفَعْ حَتَّى تَسْتَوِيَ قَائِمًا، ثُمَّ افْعَلْ ذَلِكَ فِي صَلاَتِكَ كُلِّهَا ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: A man entered the mosque and started praying while Allah's Messenger (PBUH) was sitting somewhere in the mosque. Then (after finishing the prayer) the man came to the Prophet (PBUH) and greeted him. The Prophet (PBUH) said to him, "Go back and pray, for you have not prayed. The man went back, and having prayed, he came and greeted the Prophet. The Prophet (PBUH) after returning his greetings said, "Go back and pray, for you did not pray." On the third time the man said, "(O Allah's Messenger (PBUH)!) teach me (how to pray)." The Prophet said, "When you get up for the prayer, perform the ablution properly and then face the Qibla and say Takbir (Allahu Akbar), and then recite of what you know of the Qur'an, and then bow, and remain in this state till you feel at rest in bowing, and then raise your head and stand straight; and then prostrate till you feel at rest in prostration, and then sit up till you feel at rest while sitting; and then prostrate again till you feel at rest in prostration; and then get up and stand straight, and do all this in all your prayers." مجھ سے اسحاق بن منصور نے بیان کیا ، کھا ھم سے ابواسامھ نے بیان کیا ، کھا ھم سے عبیداللھ بن عمر نے بیان کیا ، ان سے سعید بن ابی سعید نے اور ان سے حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے کھ ایک صحابی مسجدنبوی میں نماز پڑھنے کے لئے آئے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم مسجد کے ایک کنارے تشریف رکھتے تھے ۔ پھر وھ صحابی آئے اور سلام کیا تو آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ جا پھر نماز پڑھ ، اس لئے کھ تو نے نماز نھیں پڑھی ۔ وھ واپس گئے اور پھر نماز پڑھ کر آئے اور سلام کیا ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے اس مرتبھ بھی ان سے یھی فرمایا کھ واپس جا اور نماز پڑھ کیونکھ تو نے نماز نھیں پڑھی ۔ آخر تیسری مرتبھ میں وھ صحابی بولے کھ پھر مجھے نماز کا طریقھ سکھا دیجئیے ۔ آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا کھ جب تم نماز کے لئے کھڑے ھوا کرو تو پھلے پوری طرح وضو کر لیا کرو ، پھر قبلھ رو ھو کر تکبیر کھو اور جو کچھ قرآن مجید میں تمھیں یاد ھے اور تم آسانی کے ساتھ پڑھ سکتے ھو اسے پڑھا کرو ، پھر رکوع کرو اور سکون کے ساتھ رکوع کرچکو تو اپنا سر اٹھاؤ اور جب سیدھے کھڑے ھو جاؤ تو سجدھ کرو ، جب سجدے کی حالت میں اچھی طرح ھو جاؤ تو سجدھ سے سراٹھاؤ ، یھاں تک کھ سیدھے ھو جاؤ اور اطمینان سے بیٹھ جاؤ ، پھر سجدھ کرو اور جب اطمینان سے سجدھ کر لو تو سر اٹھاؤ یھاں تک کھ سیدھے کھڑے ھو جاؤ ، یھ عمل تم اپنی پوری نماز میں کرو ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6667
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 660


حَدَّثَنَا فَرْوَةُ بْنُ أَبِي الْمَغْرَاءِ، حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ مُسْهِرٍ، عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ هُزِمَ الْمُشْرِكُونَ يَوْمَ أُحُدٍ هَزِيمَةً تُعْرَفُ فِيهِمْ، فَصَرَخَ إِبْلِيسُ أَىْ عِبَادَ اللَّهِ أُخْرَاكُمْ، فَرَجَعَتْ أُولاَهُمْ فَاجْتَلَدَتْ هِيَ وَأُخْرَاهُمْ، فَنَظَرَ حُذَيْفَةُ بْنُ الْيَمَانِ فَإِذَا هُوَ بِأَبِيهِ فَقَالَ أَبِي أَبِي‏.‏ قَالَتْ فَوَاللَّهِ مَا انْحَجَزُوا حَتَّى قَتَلُوهُ، فَقَالَ حُذَيْفَةُ غَفَرَ اللَّهُ لَكُمْ‏.‏ قَالَ عُرْوَةُ فَوَاللَّهِ مَا زَالَتْ فِي حُذَيْفَةَ مِنْهَا بَقِيَّةٌ حَتَّى لَقِيَ اللَّهَ‏.‏

Narrated `Aisha: When the pagans were defeated during the (first stage) of the battle of Uhud, Satan shouted, "O Allah's slaves! Beware of what is behind you!" So the front files of the Muslims attacked their own back files. Hudhaifa bin Al-Yaman looked and on seeing his father he shouted: "My father! My father!" By Allah! The people did not stop till they killed his father. Hudhaifa then said, "May Allah forgive you." `Urwa (the sub-narrator) added, "Hudhaifa continued asking Allah forgiveness for the killers of his father till he met Allah (till he died). ھم سے فروھ بن ابی المغراء نے بیان کیا ، کھا ھم سے علی بن مسھر نے ، ان سے ھشام بن عروھ نے ، ان سے ان کے والد نے اور ان سے عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ جب احد کی لڑائی میں مشرک شکست کھا گئے اور اپنی شکست ان میں مشھور ھو گئی تو ابلیس نے چیخ کر کھا ( مسلمانوں سے ) کھ اے للھ کے بندو ! پیچھے دشمن ھے چنانچھ آگے کے لوگ پیچھے کی طرف پل پڑے اور پیچھے والے ( مسلمانوں ھی سے ) لڑ پڑے ۔ اس حالت میں حذیفھ بن الیمان رضی اللھ عنھ نے دیکھا کھ لوگ ان کے مسلمان والد کو بےخبری میں مار رھے ھیں تو انھوں نے مسلمانوں سے کھا کھ یھ تو میرے والد ھیں جو مسلمان ھیں ، میرے والد ! عائشھ رضی اللھ عنھا نے بیان کیا کھ اللھ کی قسم لوگ پھر بھی باز نھیں آئے اور آخر انھیں قتل کر ھی ڈالا ۔ حذیفھ نے کھا ، اللھ تمھاری مغفرت کرے ۔ عروھ نے بیان کیا کھ حذیفھ رضی اللھ عنھ کو اپنے والد کی اس طرح شھادت کا آخر وقت تک رنج اور افسوس ھی رھا یھاں تک کھ وھ اللھ سے جا ملے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6668
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 661


حَدَّثَنِي يُوسُفُ بْنُ مُوسَى، حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ، قَالَ حَدَّثَنِي عَوْفٌ، عَنْ خِلاَسٍ، وَمُحَمَّدٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ مَنْ أَكَلَ نَاسِيًا وَهْوَ صَائِمٌ فَلْيُتِمَّ صَوْمَهُ، فَإِنَّمَا أَطْعَمَهُ اللَّهُ وَسَقَاهُ ‏"‏‏.‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet (PBUH) said, "If somebody eats something forgetfully while he is fasting, then he should complete his fast, for Allah has made him eat and drink." مجھ سے یوسف بن موسیٰ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے ابواسامھ نے بیان کیا ، انھوں نے کھا کھ مجھ سے عوف اعرابی نے بیان کیا ، ان سے خلاص بن عمرو اور محمد بن سیرین نے کھا کھ حضرت ابوھریرھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ نبی کریم صلی اللھ علیھ وسلم نے فرمایا جس نے روزھ رکھا ھو اور بھول کر کھا لیا ھو تو اسے اپنا روزھ پورا کر لینا چاھئے کیونکھ اسے اللھ نے کھلایا پلایا ھے ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6669
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 662


حَدَّثَنَا آدَمُ بْنُ أَبِي إِيَاسٍ، حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي ذِئْبٍ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ابْنِ بُحَيْنَةَ، قَالَ صَلَّى بِنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فَقَامَ فِي الرَّكْعَتَيْنِ الأُولَيَيْنِ قَبْلَ أَنْ يَجْلِسَ، فَمَضَى فِي صَلاَتِهِ، فَلَمَّا قَضَى صَلاَتَهُ انْتَظَرَ النَّاسُ تَسْلِيمَهُ، وَسَجَدَ قَبْلَ أَنْ يُسَلِّمَ، ثُمَّ رَفَعَ رَأْسَهُ، ثُمَّ كَبَّرَ وَسَجَدَ، ثُمَّ رَفَعَ رَأْسَهُ وَسَلَّمَ‏.‏

Narrated `Abdullah bin Buhaina: Once Allah's Messenger (PBUH) led us in prayer, and after finishing the first two rak`at, got up (instead of sitting for at-Tahiyyat) and then carried on with the prayer. When he had finished his prayer, the people were waiting for him to say Taslim, but before saying Tasiim, he said Takbir and prostrated; then he raised his head, and saying Takbir, he prostrated (SAHU) and then raised his head and finished his prayer with Taslim. ھم سے آدم بن ابی ایاس نے بیان کیا ، انھوں نے کھا ھم سے محمد بن عبدالرحمٰن بن ابی ذئب نے بیان کیا ، ان سے زھری نے بیان کیا ، ان سے اعرج نے اور ان سے حضرت عبداللھ بن بجینھ رضی اللھ عنھ نے بیان کیا کھ رسول اللھ صلی اللھ علیھ وسلم نے ھمیں نماز پڑھائی اور پھلی دو رکعات کے بعد بیٹھنے سے پھلے ھی اٹھ گئے اور نماز پوری کر لی ۔ جب نماز پڑھ چکے تو لوگوں نے آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم کے سلام کا انتظار کیا ۔ پھر آنحضرت صلی اللھ علیھ وسلم نے تکبیر کھی اورسلام پھیرنے سے پھلے سجدھ کیا ، پھر سجدھ سے سر اٹھایا اور دوبارھ تکبیر کھھ کر سجدھ کیا ۔ پھر سجدھ سے سر اٹھایا اورسلام پھیرا ۔

Share »

Book reference: Sahih Bukhari Book 83 Hadith no 6670
Web reference: Sahih Bukhari Volume 8 Book 78 Hadith no 663



@2019 Copyrights: if you have any objection regarding any shared content on pdf9.com please click here.